تجارتی پالیسی کیلئے اعتماد میں لیا جائے،کارپٹ ایسوسی ایشن

  تجارتی پالیسی کیلئے اعتماد میں لیا جائے،کارپٹ ایسوسی ایشن

  

کراچی(آن لائن) پاکستان کارپٹ مینو فیکچررز اینڈ ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن نے نئی تجارتی پالیسی کا مسودہ حتمی منظوری سے قبل اسٹیک ہولڈرز کے سامنے لانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ پالیسی کی تیاری میں غیر معمولی تاخیر تشویش کا باعث ہے، کوروناوائرس کی وباء تھمنے کے بعد زیادہ سے زیادہ سنگل کنٹری نمائشوں کا انعقاد نا گزیر ہے اور پاکستانی وفود کی بیرون ممالک نمائشوں میں بھی شرکت کو یقینی بنانے کیلئے ہر ممکن معاونت دی جائے۔ان خیالات کا اظہار ایسوسی ایشن کے چیئرمین محمد اسلم طاہر نے ہاتھ سے بنے قالینوں کی انڈسٹری سے وابستہ وفد سے ملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر،چیئر پرسن کارپٹ ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ پرویز حنیف، وائس چیئرمین شیخ عامر خالد، سینئر مرکزی رہنما عبد اللطیف ملک، سینئر ممبر ریاض احمد، سعید خان، اعجاز الرحمان، محمد اکبر ملک، میجر (ر)اخترنذیر سمیت دیگر بھی موجود تھے۔

وفد نے ایسوسی ایشن کے عہدیداروں کو انڈسٹری کو درپیش مشکلات سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ اس سلسلہ میں متعلقہ وزراء سے ملاقات کا اہتمام کیا جائے۔ محمد اسلم طاہر نے کہا کہ حکومت کسی بھی شعبے کیلئے پالیسی مرتب کرنے سے قبل مشاورت کے عمل کو فروغ دے،ہمارے ہمسایہ ممالک میں اسٹیک ہولڈرز کو مشاورت میں شامل رکھا جاتا ہے اور ان کی تجاویز کو اہمیت بھی دی جاتی ہے جس سے پالیسیوں کے سو فیصد مثبت نتائج برآمد ہوتے ہیں۔ہمارے ہاں پالیسی نافذ کرنے کے بعد مشاورت کا عمل شروع کیا جاتا ہے جس سے پالیسی کے مثبت اثرات زائل ہو جاتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کی وباء کی وجہ سے برآمدات بری طرح متاثر ہوئی ہیں اس لئے حکومت اس طرف خصوصی توجہ دے۔سنگل کنٹرول نمائشوں کا انعقاد کیا جائے اور اس کے ساتھ بیرون ممالک منعقد ہونے والی نمائشوں میں بھی زیادہ سے زیادہ شرکت کو یقینی بنانے کیلئے ہرممکن مالی معاونت فراہم کی جائے۔

مزید :

صفحہ اول -