تعلیم کا فروغ والد کا مشن تھا جو جاری رہے گا، مولانا نعمان نعیم

  تعلیم کا فروغ والد کا مشن تھا جو جاری رہے گا، مولانا نعمان نعیم

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)جامعہ بنوریہ عالمیہ سائٹ میں انڈونشین قونصل جنرل(totok prianamto) ٹوٹوک پریانمتو کی وفد کے ہمراہ مہتمم مولانا نعمان نعیم سے ملاقات اور مفتی محمد نعیم کے انتقال پرصاحبزادگان مولانا نعمان نعیم اور مولانا فرحان نعیم سے تعزیت، اس موقع پر گفتگوکرتے ہوئے مہتمم جامعہ بنوریہ عالمیہ مولانا نعمان نعیم نے ان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہاکہ والد نے جامعہ بنوریہ عالمیہ کو بین الاقوامی درسگاہ بنایا، دنیا میں امن وآشنی اورتعلیم کا فروغ والد کا مشن تھا انشا اللہ ان کا یہ مشن جاری رہے گا،پوری دنیا کے مسلمانوں کیلئے فکر مند تھے،انڈونیشیا میں پیغام پاکستان طرز کی دستاویز کی تیاری کیلئے بھی علما سے خود ملاقاتیں کی اورعالمی کانفرنس میں شرکت کی تھی،انہوں نے کہاکہ طلبہ کی علمی ترقی اور دونوں ممالک کے تعلقات کی بہتری کے لیے والد کے نقش قدم پر چلتے ہوئے کوششیں جاری رہیں گی،غیر ملکی طلبہ کو جامعہ اپنا اثاثہ اور ملک کا سفیر سمجھتے ہیں ان کی تعلیم وتربیت کا جو سلسلہ والد نے شروع کیا وہ جاری رہے گا۔ اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے قونصل جنرل ٹوٹوک پریانمتو نے مفتی محمد نعیم کی ملی وعلمی خدمات کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہاکہ مفتی محمد نعیم عظیم اسکالر اور انسانیت کا درد رکھنے والی شخصیت تھے،دنیا بھر سے حصول علم کے خواہشمند طلبہ کے لیے ان کی جدوجہد ہمیشہ یاد رکھی جائے گی، مفتی نعیم کا انڈونیشیا اور پاکستان کے تعلقات کی بہتری میں بھی اہم رول رہاہے،انڈونیشیا میں ہم آہنگی کے فروغ میں بھی ان کا کردار ناقابل فراموش ہے اسی سلسلے میں انڈونیشیا میں دنیا بھر کے علما کی عالمی کانفرنس میں بھی وہ شریک ہوئے

مزید :

صفحہ آخر -