پولیس اصلاحات میں میڈیا کاکردار کلیدی ہے: ڈاکٹر رحیم اعوان

    پولیس اصلاحات میں میڈیا کاکردار کلیدی ہے: ڈاکٹر رحیم اعوان

  

کراچی(اسٹاف رپورٹر)عوامی شکایات کے فوری ازالے کیلئے قابل عمل نظام کی تشکیل،پولیس کے تفتیشی نظام میں جدید طریقہ کا رکا اختیاراور کرمنل جسٹس سسٹم کی موثر عملداری وہ اہم نکات ہیں جو پولیس میں اصلاحات کیلئے ضروری ہیں۔پولیس اصلاحات کی حقیقی معنوں میں نفاذ کے حوالے سے میڈیاکا کردار کلیدی ہے۔ان خیالات کا اظہار سیکرٹری لاء اینڈ جسٹس کمیشن آف پاکستان ڈاکٹر محمد رحیم اعوان جو پولیس ریفارمز کمیٹی کے سربراہ بھی ہیں، نے بذریعہ وڈیو لنک'پولیس عوام ساتھ ساتھ'کے عنوان سے منعقدہ ویبینار(آن لائن سیمینار) میں کیا جس میں کراچی سے تعلق رکھنے والے سول سوسائٹی، تعلیمی اداروں، مقامی اخبار، ٹیلی ویڑن اور ڈیجیٹل میڈیاکے نمائندوں نے شرکت کی۔ واضح رہے کہ ملک گیر جامع پروگرام 'پولیس عوام ساتھ ساتھ'کے ذیلی پروگرام'پولیس میڈیا ساتھ ساتھ'کے تحت یہ بارہواں اور آخری ویبینار منعقد کیا گیا جس کا اہتمام کمیونیکیشنز کمپنی کمیونیکینشز ریسرچ سٹریٹجیز نے کیا، میزبانی کے فرائض معروف کمیونیکیشنسٹ ظفر اللہ نے انجام دیے۔اس پروگرام کا بنیادی مقصد پولیس، میڈیا اور سول سوسائٹی کے مابین ایک نیٹ ورک قائم کیا جائے اور ساتھ ہی مختلف شعبوں کے ماہرین کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا کر کے بہتر پولیسنگ کے حوالے سے جامع سفارشات مرتب کی جائیں۔سندھ پولیس کے ڈی آئی جی عمران شوکت نے لندن سے بذریعہ وڈیو لنک اپنا موقف دیتے ہوئے کہا کہ پولیس قوانین کا از سر نو قانونی جائزہ ہی وہ واحد قدرتی طریقہ کار ہے جس کے تحت پولیس کو درپیش متعدد مسائل و چیلنجز کا حل نکالا جا سکتا ہے۔ درپیش چیلنجز کا حل تلاش کر کے ہی اپنی پولیس کو جدید دور کے تقاضوں سے ہم آہنگ کیا جا سکتا ہے۔ انھوں نے ایسے پراجیکٹس کی اہمیت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ پولیس میں اصلاحات ایک جاری امر ہے اور اس کیلئے سول سوسائٹی کو اپنا موثر کردار ادا کرتے رہنا چاہیے۔ سابق ایڈیشنل آئی جی کیپٹن (ر)طاہر نوید کا صحافیوں کے پولیس کے بارے میں روایتی شکوک و شبہات اور تنقید کا جواب دیتے ہوئے کہنا تھا کہ حکومت پر اورپولیس اصلاحات میں خامیوں پر تنقید کرنا میڈیا کا فرض ہے لیکن اس کے ساتھ ساتھ پولیس اور اس کے متعلقہ اداروں کی لازوال قربانیوں اور لاتعدادکامیابیوں کو بھی درست انداز میں اجاگر کیا جانا چاہیے۔اپنے مشاہدات کی روشنی میں صحافی حضرات کا کہنا تھا کہ پولیس میں اصلاحات نہ ہونے کی ایک اہم وجہ سیاسی اثر و رسوخ بھی ہے جو گزشتہ کئی دہائیوں سے چلتا آرہا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -