بجلی مہنگی کرنے سے برآمدات گر جائیں گی،میاں زاہد حسین

  بجلی مہنگی کرنے سے برآمدات گر جائیں گی،میاں زاہد حسین

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)پاکستان بزنس مین اینڈ انٹلیکچولز فور م وآل کراچی انڈسٹریل الائنس کے صدر، ایف پی سی سی آئی میں بزنس مین پینل کے سینئر وائس چیئرمین اور سابق صوبائی وزیر میاں زاہد حسین نے وزیر اعظم عمران خان سے اپیل کی ہے کہ کراچی کے لئے بجلی مہنگی کرنے کی بجائے چوری اور لا ئن لا سز روکے جائیں۔بجلی کی قیمت میں 2روپے 89 پیسے فی یونٹ کا مجوزہ اضافہ بہت زیادہ ہے جس سے کراچی کے علاوہ سارا ملک متاثر ہو گا۔ میاں زاہد حسین نے بزنس کمیونٹی سے گفتگو میں کہا کہ کراچی ملک میں صنعتی و تجارتی سرگرمیوں کا سب سے بڑا مرکز ہے جہاں بجلی کی قیمت میں چند پیسے اضافے کے اثرات ملک بھر پر پڑتے ہیں اور پیداوار و برآمدات بھی متاثر ہوتی ہیں اس لئے صنعتی مراکز میں بجلی مہنگی کرنے سے پہلے انکے اثرات کا بھرپور جائزہ لینا چاہئے۔انھوں نے کہا کہ پاکستان میں عوام اور کاروباری برادری کو خطے میں سب سے مہنگی بجلی فراہم کی جاتی ہے اور اسکی قیمت بھی مسلسل بڑھتی رہتی ہے۔نا اہلی، کرپشن،بدانتظامی،اقرباء پروری اور سیاسی مداخلت نے بجلی کے شعبہ کو ملکی معیشت کے لئے سب سے بڑا خطرہ بنا دیا ہے جس میں ریگولیٹر کا کردار بھی کسی سے ڈھکا چھپا نہیں۔بجلی کے شعبہ کا ریگولیٹر دیگر ریگولیٹرز کی طرح اپنی ذمہ داریاں ادا کرنے میں بری طرح ناکام رہا ہے اور اس نے بجلی کی کمپنیوں کو فری ہینڈ دیا ہوا ہے اس لئے اس پر سالانہ کروڑوں روپے ضائع کرنے کا کوئی فائدہ نہیں۔

مزید :

صفحہ آخر -