کھوکھرا پار پولیس نے نایاب نسل کے چار قیمتی ہرن سمگلنگ کرنے کی کوشش ناکام بنادی

کھوکھرا پار پولیس نے نایاب نسل کے چار قیمتی ہرن سمگلنگ کرنے کی کوشش ناکام ...
کھوکھرا پار پولیس نے نایاب نسل کے چار قیمتی ہرن سمگلنگ کرنے کی کوشش ناکام بنادی

  

عمرکوٹ(سید ریحان شبیر)کھوکھراپار پولیس نے نایاب نسل کے چار قیمتی  ہرن سملنگ کرنے کی کوشش ناکام بنادی ، کھوکھراپار پولیس نے  چیک پوسٹ پر چیکنگ کے دوران ایک  گاڑی  سے چار نایاب نسل کے ہرن برآمد کرلیے ، پولیس نے ایک شخص الھبچایو راہموں کو اوربرآمدکیےگئے چار ہرن  کو وائلڈ لائف حکام عمرکوٹ کی  تحویل میں دےدیا   ۔

تفصیلات کےمطابق کھوکھراپار پولیس نے   چیکنگ  کےدوران گاڑی نمبر- BF -1491گاڑی کوچیکنگ کےلیےروکاتوگاڑی میں سے نایاب نسل کے  چار قیمتی ہرن برآمد کرکے الھبچایو راہموں کےخلاف وائلڈ لائف قوانین کےتحت مقدمہ درج کرکے  برآمدکیےگئے ہرن کو وائلڈ لائف حکام کے  حوالے کردیا۔ بتایا جارہا ہے کہ یہ نایاب نسل کےہرن صحرائے تھرسے  حیدرآباد سملنگ کیے جارہے تھے ۔

یہ امر قابل ذکرہےکہ صحرائے تھرسے  ہرن کے شکار اور سملنگ کے باعث ہرن کی نسل کوشدید خطرات لاحق ہےاورہرن کی  نسل آہستہ آہستہ ختم ہورہی ہے کچھ عناصر اپنے کاروبار اور مفادات کی  خاطر ہرن کی اسمگلنگ کاگھناؤنا کھیل کھیل رہے ہیں مارکیٹ میں ایک  نایاب نسل  ہرن کی  قیمتی جوڑی اسی ہزارسے   ایک لاکھ روپے   تک کی فروخت کی جاتی ہے اورکچھ شکاری حضرات ہرن کا شکارکرکے ہرن کا گوشت پندرہ سو  سے   دوہزار روپے تک فروخت کیاجاتاہے ۔

پولیس ذرائع کاکہناہےکہ مذکورہ افراد  جنگل میں ہرن زخمی کرنے کے بعد پکڑ کر حیدرآباد سملنگ کر رہے تھے کھوکھراپار پولیس نے ملزمان کےخلاف وائلڈ لائف ایکٹ کےتحت مقدمہ درج کرکے برآمد کیےگئے ہرن وائلڈ لائف عمرکوٹ کے حکام کےحوالے کردیے گئے ملزم کوصبح عدالت میں پیش کیاجائے  گا۔

یہ امر قابل ذکر ہےکہ کچھ عرصہ قبل بھی عمرکوٹ پولیس نے نایاب نسل کے اٹھارہ قیمتی ہرنوں کو حیدرآباد اسمگل کرنے کی کوشش ناکام بنادی تھی بعد میں عدالت کےحکم پر ان اٹھارہ ہرنوں کو تھر کے جنگلات میں آزاد کردیا گیا تھا ۔

مزید :

علاقائی -سندھ -عمرکوٹ -