کورونا وائرس کے باعث فٹ بال کی دنیا کے سب سے بڑے اور معتبر فٹ بال ایوارڈ نہ دینے کا اعلان

کورونا وائرس کے باعث فٹ بال کی دنیا کے سب سے بڑے اور معتبر فٹ بال ایوارڈ نہ ...
کورونا وائرس کے باعث فٹ بال کی دنیا کے سب سے بڑے اور معتبر فٹ بال ایوارڈ نہ دینے کا اعلان

  

  • پیرس (ڈیلی پاکستان آن لائن) کورونا وائرس کی وباءکے باعث فٹ بال کی سرگرمیاں متاثر ہونے کی وجہ سے سال کے سب سے بڑے اور معتبر فٹ بال کے ایوارڈ بیلن ڈی اورکو رواں سال نہ دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

    تفصیلات کے مطابق فرانس فٹ بال میگزین کی جانب سے دئیے جانے والے ایوارڈ بیلن ڈی اور کو 1956ءمیں سٹینلے میوتھیوز کو پہلی مرتبہ دیا گیا تھا اور اس کے بعد سے ہر سال اسے بہترین فٹ بالرز کو دیا جاتا ہے۔ ارجنٹائن کے لیونل میسی اب تک ریکارڈ چھ مرتبہ یہ ایوارڈ جیت چکے ہیں جبکہ ان کے روایتی حریف کرسٹیانو رونالڈو نے پانچ مرتبہ یہ ایوارڈ اپنے نام کیا ہے تاہم رواں سال یہ ایوارڈ نہ دینے کا اعلان کیا گیا ہے۔

    میگزین نے 2018ءمیں خواتین فٹ بالرز کو بھی ایوارڈ دینے کا سلسلہ شروع کیا تھا لیکن اب اس سلسلے کو بھی روک دیا گیا ہے۔فرانس فٹ بال کے ایڈیٹر پاسکل فیر نے انٹرویو میں کہا کہ ایک عجیب سال رہا ہے جسے ہم ایک عام سال کی طرح نہیں دیکھ سکتے اور ہم نے دو ماہ قبل ہی فیصلے لینا شروع کر دئیے ہیں۔ ہم نے اس فیصلے کو آسان تصور کر کے نہیں لیا لیکن ہمیں یہ تسلیم کرنا پڑے گا کہ اس سال بیلن ڈی اور کا کوئی فاتح نہیں ہو گا کیونکہ یہ ایوارڈ شفاف طریقے سے نہیں دیا جا سکے گا، وباءکی وجہ سے کھیل کے قوانین بدل چکے ہیں لہٰذا ایوارڈ بھی متاثر ہوا ہے۔

    انہوں نے کہا کہ سیزن کا آغاز مختلف قوانین سے ہوا اور اس کا اختتام مختلف قوانین کے ساتھ ہو گا، جنوری اور فروری میں فٹ بال تماشائیوں سے بھرے ہوئے سٹیڈمز میں کھیلی گئی ، اس کے بعد ہمارے پاس تین کی جگہ پانچ متبادل کھلاڑیوں کا قانون آ گیا، اس کے بعد مقابلے میں مزید تبدیلیاں بھی رونما ہوئیں جس میں سب سے اہم چیمپینز لیگ کا آٹھ ٹیموں پر مشتمل ناک آؤٹ فارمیٹ ہے۔

    اس سال یورو کپ اور کوپا امریکہ کپ ملتوی کئے جا چکے ہیں لہٰذا ایوارڈز کا انحصار زیادہ تر چیمپینز لیگ میں کارکردگی پر ہوتا تاہم اب ایونٹ کو بھی مختصر کردیا گیا ہے۔ ایسی صورت میں بیلن دوڑ کا فیصلہ محض تین میچوں یعنی کوارٹر فائنل، سیمی فائنل اور فائنل میں کارکردگی پر کرنا پڑتا۔ پاسکل فیر نے کہا کہ فٹ بال کے قوانین میں بیش بہا تبدیلیاں آ چکی ہیں جو بالکل درست ہیں اور موجودہ بحران کے سبب ہم ان کو چیلنج نہیں کر سکتے۔

    ان تمام تبدیلیوں کے ساتھ ساتھ 21سال سے کم عمر کھلاڑی کی کوپا ٹرافی اور بہترین گول کیپر کے لیو یاشین ایوارڈ بھی اس سال منسوخ کردیا گیا ہے۔ بیلن ڈی اور منسوخ ہونے کے بعد ہر کیٹیگری میں بہترین کھیل پیش کرنے والوں کے فیفا کے ایوارڈ اس سال دئیے جائیں گے تاہم یہ اعلان نہیں کیا گیا کہ یہ ایوارڈ کب اور کہاں دئیے جائیں گے۔

مزید :

کھیل -