حکومت، پاکستان کو جمہوری نہی بلکہ "پھینٹا کریسی" بناناچاہتی ہے۔۔۔۔احسن اقبال نے مطیع اللہ جان کے لاپتا ہونے پرپریشان کن بات کہہ دی

حکومت، پاکستان کو جمہوری نہی بلکہ "پھینٹا کریسی" بناناچاہتی ہے۔۔۔۔احسن ...
حکومت، پاکستان کو جمہوری نہی بلکہ

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان مسلم لیگ ن کے سیکرٹری جنرل اور سابق وزیر داخلہ احسن اقبال نے کہاہے کہ آج مطیع اللہ جان کو جس طرح گرفتار کیا گیا یہ اس بات کا ثبوت ہے کہ حکومت، پاکستان کو جمہوری نہی بلکہ "پھینٹا کریسی" بناناچاہتی ہے،نیب کے ذریعے ان لوگوں کو ڈرانے اور خوفزدہ کرنے اور ان کی آواز کو دبانے کی کوشش کی جارہی ہے، حکومت کو اب گھر بھیجنا ملک کے آئینی تشخص کیلئے ضروری ہوگیا ہے۔

نجی ٹی وی کے مطابق سابق وزیر داخلہ احسن اقبال نے کہا کہ  نیب کے ذریعے ان لوگوں کو ڈرانے اور خوفزدہ کرنے اور ان کی آواز کو دبانے کی کوشش کی جارہی ہے جو اپنے نظریے پر ڈٹے ہوئے ہیں، نیب کے ذریعے سیاسی انجینئرنگ کی کوشش کی جارہی ہے،پاکستان کی تاریخ نے یہ دیکھا ہے پرویز مشرف کے دور میں لوگ جھک گئے، نیب کے آگے سجدہ ریز ہوگئے لیکن مسلم لیگ(ن)اور نواز شریف کے یہ سپاہی جنہیں اس دھرتی سے، امنِ پاکستان سے اور جمہوریت سے پیار ہے وہ نہیں جھکے ۔انہوں نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعدخواجہ سعد رفیق اور خواجہ سلمان رفیق کے 16 مہینے کون لوٹائے گا کہ جن 16مہینوں میں زبردستی اور غیر آئینی طریقے سے ان کے بچوں کو والد سے جدا کیا گیا اور جو کردار کشی کی گئی اس کا نقصان کون پورا کرے گا؟یہ وہ سوال ہے جو آج پاکستانی ریاست کے سامنے کھڑا ہے کہ ہم نے ایک آئینی، جمہوری ریاست بننا ہے یا "پھینٹا کریسی" بننا ہے؟آج مطیع اللہ جان کو جس طرح گرفتار کیا گیا یہ اس بات کا ثبوت ہے کہ یہ حکومت، پاکستان کو جمہوری نہی بلکہ پھینٹا کریسی بناناچاہتی ہے کہ جو حکومت کے خلاف بولے گا اس کو پھینٹا لگے گا، گرفتار کیا جائے گا۔

احسن اقبال کا کہنا تھا کہ اس حکومت کو اب گھر بھیجنا ملک کے آئینی تشخص کیلئے ضروری ہوگیا ہے،یہ ناہل،نالائق اور کرپٹ حکومت ہے، لوگوں کو آٹا اورچینی نہیں مل رہی،کراچی میں بجلی اور پانی نہیں مل رہا،بلوچستان اور فاٹا کےلوگ پریشان ہیں، پنجاب کو پسماندگی میں دھکیلتے ہوئے ہماری 10 سال کی محنت پر پانی پھیردیا ہے۔

مزید :

قومی -