پاکستان ریلویز اور امریکی کمپنی کے مابین 55لوکو موٹیوز کی خریداری کا معاہدہ

پاکستان ریلویز اور امریکی کمپنی کے مابین 55لوکو موٹیوز کی خریداری کا معاہدہ

 لاہور(خبر نگا رخصوصی)پاکستان ریلویز اور امریکن کمپنی جنرل الیکٹرک کے مابین 55لوکو موٹیوز کی خریداری کا معاہدہ طے پا گیا۔جس کے مطابق پاکستان ریلویز امریکن کمپنی سے 4ہزار سے45سو اور2ہزار سے25سو ہارس پاور کے حامل لوکوموٹیوز خریدے گا ،گریڈایک سے16تک کے ملازمین کا سروس سٹرکچر بنانے کا بھی فیصلہ کر لیا گیا ہے ۔گزشتہ روز پاکستان ریلویز اور امریکن جنرل الیکٹرک کے درمیان دستخطوں کی تقریب کے موقع پر وفاقی وزیرریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ پاکستان ریلویز کو محکمے کی بہتری کیلئے ایک ہزار لوکو موٹیوز اور10سے12ارب ڈالرز کی سرمایہ کاری درکار ہے ،مستقبل میں لوکوموٹیوز کی ضرورت خود پوری کرنے کیلئے رسالپور فیکٹری کو ٹرانسفر آف ٹیکنالوجی پر منتقل کرنے کا منصوبہ زیر غور ہے۔امریکن کمپنی 16ماہ بعد مرحلہ وار لوکوموٹیوز کی فراہمی شروع کرے گی جن کو کوئلے کی ٹرانسپورٹیشن اور فریٹ کیلئے استعمال کیا جائے گا۔پہلے مرحلے میں 4ہزار سے45سو ہارس پاور جبکہ دوسرے مرحلے میں 2ہزار سے25سو ہارس پاور کے لوکوموٹیوز خریدے جائیں گے۔وزیر ریلو ے نے کہا کہ گرین لائن ٹرین کامیابی کے ساتھ چل رہی ہے آئندہ مالی سال میں 2سے3ٹرینوں کی ویلیو ایڈیشن کی جائے گی اور نہیں گرین لائن ٹرین کی طرز پر لائیں گے اور کسی بھی ٹرین کی ویلیو ایڈیشن کے بغیر کرایہ نہیں بڑھایا جائے گا اور ابھی تک ریلوے کے کرایوں میں اضافے کا ارادہ نہیں ہے۔خواجہ سعد رفیق نے مزید کہا کہ ریلوے میں گریڈایک سے16تک کے ملازمین کے سروس سٹرکچر کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے لئے آئندہ پیر کوتین رکنی اعلیٰ سطحی کمیٹی کا نوٹیفکیشن جاری کیاجائے گااور سروس سٹرکچر کا نظام وضع کرنے کے بعد کسی کو ہڑتال اور مطالبات پیش کرنے کی ضرورت نہیں رہے گی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان ریلویز کو 10سے12ارب ڈالرز درکار ہیں جبکہ محکمے میں3.6ارب ڈالر کی سرمایہ کاری پاک چائنہ کاریڈور کے ذریعے آرہی ہے۔مزید کہا کہ لودھراں کوٹری کے درمیان مسنگ سگنلز کیلئے جلد ٹینڈر دیا جائے گااور کنٹرکٹ پرفارمنس کی بنیاد پر دیئے جائیں گے اور جا کام کرے گا اسے ہی ادائیگی کی جائے گی۔ایک سوال کے جواب میں کہا کہ لوکو موٹیوز آسانی سے نہیں بنتاہمارے پاس اس کی استعداد اور صلاحیت موجود نہیں تاہم اب ہم ٹرانسفرآف ٹیکنالوجی کی طرف چل پڑے ہیں ۔ایک اور سوال کے جواب میں وزیر ریلوے نے کہا کہ پی ایس ڈی پی میں ریلوے کو 41ارب ملے ہیں جن میں 80فیصد پرانے پراجیکٹوں اور20فیصد سے نئے پرجیکٹ شروع کیے جائیں گے،ہماری ترجیج ایم ایل ون،ٹو اور تھری ہے جس کے بعد برانچ لائنوں کی طرف آئیں گے ۔امریکی کمپنی کے ریجنل سیلز ڈائریکٹر اشفاق نینار اور پاکستان ریلوے کے ڈائریکٹر پروکیورمنٹ ضیأ الدین نے دستاویزات پر دستخط کئے ۔اس موقع پر چئیرپرسن ریلوے پروین آغا،چیف ایگزیکٹو آفیسر جاوید انور بوبک اور مشیر ریلوے انجم پرویز ، ممبر فنانس غلام مصطفی اور جنرل منیجر ایم اینڈ ایس اسد احسان سمیت دیگر نے شرکت کی۔

مزید : صفحہ اول