شہر قائد؛سورج سو ا نیزے پر آگیا ،درجہ حرارت 44 سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا

شہر قائد؛سورج سو ا نیزے پر آگیا ،درجہ حرارت 44 سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا

کراچی (اسپیشل رپورٹ)ملک بھر میں گرمی نے اگلی پچھلی کسر نکال کر رکھ دی ہے گرمی کی شدت کا احساس یوں تو ہرسال ماہ اپریل کے ساتھ ہی شروع ہونے لگتا ہے اور اب آثار یہی نظر آرہے ہیں کہ جون اور جولائی جوکہ گرمیوں کے سردار مہینے تصور کئے جاتے ہیں انہی مہینوں میں گرمی ناقابل برداشت ہوکر رہ گئی ہے ۔مئی اور جون کے اوائل میں پڑنے والی گرمی نے جولائی کی ناقابل برداشت گرمی کی یاد کو پہلے ہی تازہ کردیا ہے۔ محکمہ موسمیات نے 20جون کو پڑنے والی گرمی کو سال کا سب سے گر م دن قرار دیتے ہوئے کہا کہ یہ گرمی کی یہ لہر مزید آئندہ دو روز تک جاری رہے گی ہفتہ کو کراچی میں 44ڈگری سینٹی گریڈ ،حیدرآباد و نواب شاہ میں 43،لاڑکانہ میں 47،اور سب سے زیادہ جیکب آباد میں 49ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ کیا گیا ۔ ماہ صیام میں پڑنے والی سخت گرمی کے باعث لوگ گھروں میں محصور ہوکر رہ گئے ہیں ۔روزے کی حالت میں گرمی سے بدحال لوگوں نے روزنامہ پاکستان سے گفتگو میں کہا کہ لگتا ہے کہ سورج سوا نیزے پر آگیا ہے اور رمضان کے مہینے میں اتنی زیادہ گرمی خدا کا امتحان ہے اس سے قبل رمضان میں کبھی اس سے زیادہ گرمی کبھی دیکھنے میں نہیں آئی سورج کی تپش کے باعث گھروں سے باہر نکلنے کو دل نہیں چاہتا ہے ۔جس پر محکمہ موسمیات نے بدھ کے روز سے گرمی کی شدت میں کمی کا عندیہ جاری کرتے ہوئے بتایا ہے کہ بدھ سے کراچی میں کم سے کم درجہ حرارت 35سینٹی گریڈ تک آجائے گا ۔

مزید : علاقائی