غربت،مہنگائی،بے روزگاری اور بد امنی سے شہری مایوسی کا شکار ہے،سراج الحق

غربت،مہنگائی،بے روزگاری اور بد امنی سے شہری مایوسی کا شکار ہے،سراج الحق

لاہور(نمائندہ خصوصی)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ ملک کو ترقی و خوشحالی کی راہ پر گامزن کرنے کیلئے بے لاگ احتساب کی ضرورت ہے ٗ جب تک کرپشن کو کنٹرول نہیں کیا جاتا ادارے تباہی و بربادی سے دوچار رہیں گے ٗملکی حالات نے عوام کو ڈپریشن اور فرسٹریشن میں مبتلا کررکھا ہے ٗغربت ،مہنگائی ،بے روز گاری اور بدامنی کی وجہ سے ہرشہری مایوسی کا شکار ہے ، لاکھوں اور کروڑوں میں کھیلنے والوں کا بھی الفاظ ساتھ نہیں دے رہے ،ملک میں ایک افراتفری اور ان دیکھی جنگ ہے جس نے ہر پاکستانی کو پریشان کر رکھاہے ۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے مقامی شادی ہال میں خطاب کرتے ہوئے کیا ۔اس موقع پر سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ ،امیر جماعت اسلامی لاہور میاں مقصود احمد ،سیکرٹری اطلاعات امیر العظیم ،ذکر اللہ مجاہد اور عبدالعزیز عابد بھی موجود تھے ۔ انہوں نے کہاکہ جن عظیم مقاصد کیلئے پاکستان حاصل کیا گیا تھا انہیں جان بوجھ کر پس پشت ڈالا گیا،انگریز کے پروردہ جاگیر داراور سرمایہ دار پاکستان پر مسلط ہوگئے جنہوں نے عوام کو شودروں سے زیادہ اہمیت نہیں دی۔پاکستان کو ترقی و خوشحالی کی راہ پر گامزن کرنے کیلئے بے لاگ احتساب کی ضرورت ہے ۔ پاکستان محض زمین کا ایک ٹکڑا نہیں بلکہ ایک نظریے اور شہداء کی بے مثال قربانیوں کا نام ہے ۔جماعت اسلامی ملک میں نظام مصطفےٰ کے نفاذ کی جدوجہد کررہی ہے اور ہمارا ایمان ہے کہ ملک وقوم کے تمام مسائل کا حل شریعت کے نظام میں ہے ۔روزے کا اصل مقصد ہی اللہ کی زمین پر اللہ کے نظام کے غلبہ کی جدوجہد کیلئے تیاری کرنا ہے ۔سینٹر سراج الحق نے کہا کہ جب تک کرپشن کو کنٹرول نہیں کیا جاتا ادارے تباہی و بربادی سے دوچار رہیں گے ،کرپشن نے پورے سسٹم کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے ۔کوئی جائزکام بھی رشوت کے بغیر نہیں ہوتا،سرکاری دفاتر میں عوام سارا سارا دن دھکے کھانے کے بعد ناکام و نامراد گھروں کو لوٹ جاتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ معاشرتی خرابیوں کی اصل جڑ خدا سے بغاوت اور شیطانی نظام کی پیروی ہے جس نے لوگوں کے دلوں سے ایک دوسرے کی محبت اور احترام کو ختم کردیا ہے اور ہر فرد دوسرے کو دھوکہ دینے اور فراڈ کرنے پر تلا ہوا ہے ،انہوں نے کہا کہ عوام کے ساتھ حکمرانوں کا رویہ شودروں جیسا ہے ،عوام کی فلاح و بہبود اور عام آدمی کو ریلیف دینے کا کوئی پروگرام حکمرانوں کے ایجنڈے میں نہیں ،حکمران غریب کے جسم سے خون کا آخری قطرہ تک نچوڑ لینا چاہتے ہیں ،ٹیکسوں اور مہنگائی کے مارے عوام کی فریاد سننے والا کوئی نہیں ۔انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی عوام کو انہی لٹیروں جاگیر داروں اور ساہوکاروں کے چنگل سے نکالنے کی جدوجہد کررہی ہے ۔سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ ملک میں طرح طرح کے تعلیمی نظاموں اور نصابوں نے قوم کو تقسیم کردیا ہے ،جماعت اسلامی ملک میں یکساں نظام تعلیم اور نصاب تعلیم کیلئے کوشاں ہے ،ہم چاہتے ہیں کہ جس سکول میں صدر اور وزیر اعظم کا بیٹا پڑھتا ہواسی میں ایک مزدور اور ریڑھی والے کے بیٹے کو بھی پڑھنے کا موقع ملنا چاہئے ،جب امیر اور غریب کا بچہ ایک ہی سکول میں پڑھے گا اور دونوں کو ایک جیسی سہولتیں ملیں گی تو پھر پتہ چلے گا کہ ہیروکون ہے اور زیرو کون۔انہوں نے کہا کہ حکمرانوں نے اپنی زبان کو چھوڑ کر انگریزی کو سر پر سوار کررکھا ہے ،انہوں نے کہا کہ ہم انگریزی سمیت کسی بھی زبان کو سیکھنے کے مخالف نہیں لیکن جو غلامانہ روش ہمارے حکمرانوں نے اپنا رکھی ہے وہ قابل مذمت ہے۔

مزید : صفحہ آخر