انڈینٹنگ کمیشن پر14 فیصد جی ایس ٹی نافذ کرنے کی شدید مذمت کرتے ہیں،کراچی چیمبر

انڈینٹنگ کمیشن پر14 فیصد جی ایس ٹی نافذ کرنے کی شدید مذمت کرتے ہیں،کراچی چیمبر

کراچی(اکنامک رپورٹر)کراچی چیمبرآف کامرس اینڈانڈسٹری(کے سی سی آئی) نے سندھ حکومت کی جانب سے بجٹ 16۔2015 میں انڈینٹنگ کمیشن پر14 فیصد جی ایس ٹی نافذ کرنے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہاہے کہ یہ اقدام غیر منصفانہ ہے۔انڈینٹنگ کمیشن ایجنٹس پر یہ ٹیکس وصول نہیں کیاجاسکتا کیونکہ وہ خدمات کے شعبے میں نہیں آتے۔کراچی چیمبر کے مطابق انڈینٹنگ کمیشن ایجنٹس پہلے ہی درآمدی سطح پر 5 فیصد ودہولڈنگ ٹیکس ادا کرتے ہیں جو وفاقی حکومت کی شرائط کے مطابق ہے لہٰذا سندھ حکومت کے بجٹ 16۔2015 میں 14فیصد جی ایس ٹی کا نفاذ دہرے ٹیکس عائد کرنے مترادف ہے جو آئین پاکستان کی خلاف ورزی ہے۔کراچی چیمبر نے کہا ہے کہ درجنوں انڈینٹنگ کمیشن ایجنٹس نے مدد طلب کرتے ہوئے کراچی چیمبر سے رابطہ کیا ہے اور سندھ حکومت کو مذکورہ غیر منصفانہ ٹیکس واپس لینے کے حوالے سے کردار ادا کرنے کی درخواست کی ہے۔

انڈینٹنگ کمیشن ایجنٹس کا کہناہے کہ وہ پہلے ہی معمولی کمیشن پر کام کررہے ہیں لہٰذا ان کے لیے 14فیصد جی ایس ٹی کی ادائیگی کسی صورت ممکن نہیں۔کراچی چیمبر نے سندھ حکومت کے اعلیٰ حکام پر زور دیتے ہوئے کہاکہ تجویز کردہ ٹیکس سے انڈینٹرز کو خارج کیا جائے کیونکہ انڈینٹرز نہ تو خدمات کے شعبے میں آتے ہیں اور نہ ہی سیلزٹیکس کے دائرے میں آتے ہیں۔

مزید : کامرس