دبئی میں پکڑی جانے والی درجنوں بھکارن خواتین نے کس جگہ رہائش اختیار کر رکھی تھی؟ایسی جگہ جہاں بھاری آمدنی والے بھی پرَ نہیں مار سکتے

دبئی میں پکڑی جانے والی درجنوں بھکارن خواتین نے کس جگہ رہائش اختیار کر رکھی ...
دبئی میں پکڑی جانے والی درجنوں بھکارن خواتین نے کس جگہ رہائش اختیار کر رکھی تھی؟ایسی جگہ جہاں بھاری آمدنی والے بھی پرَ نہیں مار سکتے

  

دبئی(مانیٹرنگ ڈیسک) اس حقیقت سے انکار ممکن نہیں کہ گداگری ضرورت مندی سے بڑھ کر ایک پیشے کی شکل اختیار کر چکی ہے۔ پاکستان میں بھی پیشہ ور گداگروں کے بارے میں انکشافات کیے جا چکے ہیں کہ وہ اچھے خاصے صاحبِ ثروت اور عالیشان گھروں کے مالک ہوتے ہیں۔ ایسی ایک خبر دبئی سے آئی ہے جہاں پولیس نے ایک ایسی خاتون گداگر کو گرفتار کیا ہے جو اپنے بچوں کے ہمراہ دبئی کے مہنگے ترین فائیو سٹار ہوٹل میں مقیم تھی اور گداگری کو بطور پیشہ اپنا رکھا تھا۔

مزیدپڑھیں:دبئی میں انتہائی مقدس مقام پر شرمناک حرکتیں کرنے والا بھارتی پکڑا گیا،سبق مل گیا

دبئی پولیس کے سی آئی ڈی ڈیپارٹمنٹ کے ڈائریکٹر لیفٹیننٹ کرنل علی صالم کا کہنا ہے کہ جب پولیس افسران نے اس عربی خاتون کو گرفتار کیا تو وہ گڑگڑانے لگی کہ اسے گرفتار نہ کیا جائے کیونکہ وہ 4بچوں کی ماں ہے اور اس کے علاوہ ان کی کفالت کرنے والا کوئی نہیں۔پولیس نے خاتون کی نشاندہی پر ہوٹل سے بچوں کو برآمد کر لیا جن کی عمریں 3سے 9سال کے درمیان تھیں۔ خاتون بزنس ویزے پر دبئی آئی تھی اور روزانہ کی بنیاد پر ہوٹل کا بل ادا کر رہی تھی۔ پولیس نے اس سے 13ہزار درہم بھی برآمد کیے ہیں۔ خاتون کا کہنا تھا کہ اس کا شوہر مالی مشکلات کا شکار تھا اس لیے وہ دبئی میں بھیک مانگ کر کمانے آئی ہے۔علی صالم کا کہنا تھا کہ خاتون کو پبلک پراسیکیوشن کے حوالے کر دیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ دبئی نے 7جون سے انسداد گداگری کی مہم شروع کر رکھی ہے جس میں اب تک 70ایسے غیرملکی گداگروں کو گرفتار کیا جا چکا ہے جو فائیو سٹار ہوٹلوں میں رہتے ہیں۔ یہ گداگر دبئی میں بزنس ویزے پر آئے تھے لیکن یہاں آ کر انہوں نے گداگری شروع کر رکھی تھی۔ یہ بھکاری مساجدکے باہر، شاپنگ مالز اور گلیوں بازاروں میں خستہ حال کپڑے پہنے لوگوں سے بھیک مانگتے تھے۔بھیک مانگنے کے بعد اپنا قیمتی لباس پہنتے اور اپنے ہوٹل پہنچ جاتے تھے۔

 

مزید : ڈیلی بائیٹس