خبردار،سعودی عرب نے اپنے شہریوں کو وارننگ دےدی

خبردار،سعودی عرب نے اپنے شہریوں کو وارننگ دےدی
خبردار،سعودی عرب نے اپنے شہریوں کو وارننگ دےدی

  

ریاض(مانیٹرنگ ڈیسک) وکی لیکس کی طرف سے سعودی عرب کی حساس دستاویزات افشاءکرنے کے اعلان کے بعد سعودی حکام نے اپنے شہریوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ سوشل میڈیا یا دیگر کسی بھی ذریعے سے ”جعلی“ دستاویزات کسی دوسرے شخص تک نہ پہنچائیں۔ یہ ہدایات سعودی وزارت خارجہ نے اپنے ٹوئٹر اکاﺅنٹ پر جاری کیں۔وکی لیکس کے اعلان کے بعد سعودی حکام کی جانب سے اس معاملے پر یہ پہلا بیان ہے۔ تاہم سعودی حکام نے تاحال وکی لیکس کی جانب سے افشاءکی جانے والی دستاویزات کی تردید نہیں کی۔

مزیدپڑھیں:اتحاد ائیرلائن کاجہاز میدان جنگ بن گیا،مسافر گتھم گتھا ،وجہ ایسی کہ جان کر ہنسی نہ رکے

وکی لیکس نے 60ہزار حساس سعودی دستاویزات منظر عام پر لانے کا اعلان کیا تھا جس میں سے 5ہزار دستاویزات وکی لیکس کی ویب سائٹ پر اپ لوڈ کی جا چکی ہیں۔ وکی لیکس کے مطابق یہ دستاویزات سعودی عرب کے سفارتخانوں کے مابین گفت و شنید، سفیروں اور دیگر حکام کی ای میلز اور رپورٹس پر مبنی ہیں۔ تاہم وکی لیکس نے یہ نہیں بتایا کہ انہوں نے کن ذرائع سے یہ دستاویزات حاصل کی ہیں اور تاحال کسی بھی ذرائع سے ان دستاویزات کے اصلی ہونے کی تصدیق بھی نہیں ہو سکی۔

اس سال مئی میں سعودی حکومت کی طرف سے ایک پریس ریلیز میں کہا گیا تھا کہ سرکاری دفاتر کے کمپیوٹروں پر ہیکروں کی طرف سے حملے کیے جا رہے ہیں۔ بعد میں ایک یمنی سائبر آرمی کی طرف سے اس کی ذمہ داری بھی قبول کی گئی تھی۔ خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے کہ یہ سعودی دستاویزات انہیں ہیکرز نے حاصل کی تھیں۔

 

مزید : بین الاقوامی