صوبے کے دیگر اضلاع میں لوڈ شیڈنگ اور کم وولٹیج کیخلا ف عوام سراپا احتجاج

صوبے کے دیگر اضلاع میں لوڈ شیڈنگ اور کم وولٹیج کیخلا ف عوام سراپا احتجاج

مٹہ ،بٹ خیلہ ،بلامبٹ ،صوابی ( نمائندگا پاکستان )مٹہ میں بجلی بحران ۔اسسٹنٹ کمشنر مٹہ کے دفتر میں ذمہ داروں کا ایک اہم اجلاس منعقد ہوا ۔بجلی بحران کو سب ملکر کم کرنے پر اتفاق ۔اس وقت لوڈشڈنگ اٹھ گھنٹے ہورہا ہے ۔باقی بجلی اور لوڈنگ کی نذر ہوجاتی ہے ۔مٹہ کی تمام چاروں فیڈر اور لوڈ ہے ۔پانچویں کی فیڈر کی اشد ضرورت ہے ۔ایس ڈی او اپڈا کا اجلاس میں بات چیت ۔عوام کی صبر کا پیمانہ لبریز ہوچکا ہے ۔بحران کو کم کرنے کیلئے ہنگامی بنیادوں پر کچھ کریں ۔تحصیل ناظم مٹہ ۔تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز اسسٹنٹ کمشنر مٹہ ریاض علی خان کے دفتر میں ایک اہم اجلاس مٹہ میں بجلی بحران کی حوالے سے منعقد ہوا ۔جس میں تحصیل ناظم مٹہ عبداللہ خان ۔ایس ڈی او مٹہ رحمت الہی۔نائب ناظم محمد حکیم ۔مٹہ بازار کے صدر حاجی عبدالقیوم ۔عثمان غنی ۔ناظم محمد شیرخان اور دیگر اہم افراد نے شرکت کی ۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اے سی مٹہ نے کہا ۔کہ اس وقت بجلی کی بحران سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا ہے ۔اور اہم سب کو ملکر اس بحران کو کم کرنے کیلئے کام کرنا چایئے ۔تحصیل ناظم مٹہ نے کہا کہ عوام کی صبر کا پیمانہ لبریز ہوچکا ہے ۔اور ہم مزید عوام کو دلاسہ نہیں دے سکتے ۔اسلئے ہنگامی بنیادوں پر اقدامات اٹھانا چایئے ۔اس موقع پر ایس ڈی او واپڈا رحمت الہی نے کہا کہ اس وقت مٹہ کی تمام فیڈر اورلوڈ ہوچکے ہے ۔جو مزید بوجھ برداشت کرنے کی قابل نہیں ۔اور چار فیڈر اورلوڈ ہوکر اب پانچویں فیڈر کی منظوری کیلئے کوشیش جاری ہے ۔انہوں نے کہا کہ اس وقت لوڈشڈنگ صرف اٹھ گھنٹے ہورہے ہے ۔باقی بجلی کی بندش اور لوڈ فیڈروں اور اور لائنوں کی وجہ سے بند ہوتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ انکو عوام کی دکھ درد کا بخوبی اندازہ ہے ۔اور دن رات کوشش کرکے عوام کو ریلیف دینے کیلئے کام کرتے ہے ۔انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ جب بجلی چلی جاتے ہے۔تو لوگ اپنے تمام اشیاء بجلی کو بند کریں ۔تاکہ دوبارہ بجلی انے اور فیڈر کام اسانی سے شروع کر سکیں ۔تحصیل بٹ خیلہ میں بیس گھنٹے لوڈشیڈنگ دس دیہاتوں کے سینکڑوں عوام صراپااحتجاج پشاوراورمنگورہ روڈ بند مسافروں کوسخت مشکلات کاسامنامحکمہ واپڈاکے خلاف شدیدنعرہ بازی مالاکنڈ انتظامیہ تین ضلعی کونسلروں مالاکنڈ لیویز کے سابق صوبیدارسمیت 45افراد کے خلاف مقدمہ درج کردی۔تفصیلات کے مطابق تین بجلی گھروں کے سرزمین مالاکنڈمیں بیس گھنٹے ظالمانہ لوڈشیڈنگ کی وجہ سے تحصیل بٹ خیلہ کے گاؤں خار،کرکنڑی ،ڈھیری ،جولگرام ،مٹکنی ،طوطہ کان ،پیرخیل اورمیخ بندکے عوام کے صبرکاپیمانہ لبریز ہوکرسڑکو ں پرنکل آئیں خارشگئی اورپیران چوک میں پشاورمنگورہ روڈ کوہرقسم ٹریفک کیلئے بندکرکے محکمہ واپڈاکے خلاف شدیدنعرہ بازی کرکے مطالبہ کیاہے کہ رمضان المبار ک میں بجلی کے ظالمانہ لوڈشیڈنگ کاخاتمہ کیاجائے کیونکہ رمضان المبارک میں بیس گھنٹے بجلی بندکرنایہاں کے عوام کے ساتھ سراسرظلم اورناانصافی ہے جوہم کسی بھی صورت میں برداشت نہیں کریں گے مالاکنڈانتظامیہ نے یونین کونسل خارکے ناظم مہابت خان ڈھیری جولگرام کے ناظم اصغرایوب یونین کونسل طوطہ کان کے ناظم مولاناراشدنورانی مالاکنڈلیویز کے ریٹائرڈ صوبیدارگوہرعلی ویلج کونسل کے ناظم امیراکبرمقبول شاہ ،شاہ جی ،جاوید،واجد،عمرباچاوغیرہ کے خلاف مقدمہ درج کردی۔عوامی نیشنل پارٹی تحصیل خال نے خال میں بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ اور کم وولٹیج کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے خال مین بازار میں دھرنادیا جبکہ خال کے تاجر برادری نے عوامی نیشنل پارٹی کے احتجاج میں بھرپور حصہ لیتے ہوئے خال بازار کے تمام کاروباری مراکز کو بند کر دیے اس سلسلے میں عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی کونسل ممبر اور ضلع کونسل کے رکن ملک محمد زیب کے قیادت میں سنیکڑوں افراد اور تاجر برادری نے خال بالا بازار سے جلوس نکال کر خال مین بازار احجاجی مظاہرہ کیا اور دھرنا دیا خال بازار کے تاجر برادری نے عوامی نیشنل پارٹی کے احتجاج میں بھرپور ساتھ دیتے ہوئے اپنے تمام کاروباری مراکز کوبند کر دیئےٍ اس موقع پر مظاہرین نے مرکز وصوبائی حکومت علاقے کے ممبران اسمبلی اور واپڈا حکام کے خلاف شدید نعرہ بازی کرتے ہوئے ان سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کیا مظاہرین سے خطاب ملک محمد زیب،ملک قدر جان،ملک فضل الرحمن،ملک سید زمان، ملک زیرخالق،ناصرشاہ ودیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خال اور طورمنگ درہ بجلی نام کی کوئی چیز نہیں اور تحصیل خال میں چوبیس گھنٹوں میں ایک گھنٹہ بھی بجلی نہیں اتی ہے جسکی کی وجہ سے علاقے کے عوام کے مشکلات میں اضافہ ہوگیا ہے اور واپڈا والوں نے عوام پر رمضان کا مقدس مہینہ عذاب بنادیا ہے انہوں نے کہا اگر واپڈا والوں نے جلدی تحصیل میں بجلی کے طویل لوڈشیڈنگ اور کم وولٹیج کا سلسلہ ختم نہیں کیا تو اپنے اپنے علاقوں سے بجلی کمبھے اکھاڑہ کر گرا دینگے انہوں نے کہا کہ تحصیل حکومت خال تاجروں سے زبردستی بھتہ وصول کررہے ہیں نیب ودیگر ادارے اس کا نوٹس لے انہوں نے کہا کہ کسٹم ایکٹ کے خلاف عید کے بعد فیصلہ کن تحریک چلائیں گے بعدازیں واپڈا حکام پولیس اور انتظامیہ سے کامیاب مذاکرات کے بعد مظاہرین پر امن طور منتشر ہوگئے اور اپنا دھرنا ختم کر دیا دو ر افتادہ پہاڑی علاقہ گدون امازئی کے مواضعات خیشہ ، اُتلہ ، گباسنی اور گنی چھترہ وغیرہ نے سینکڑوں لوگوں نے علاقے میں بجلی کی کم وولٹیج ، لوڈ شیڈنگ اور بھاری بھر بلز کے خلاف گدون صنعتی بستی میں احتجاجی مظاہرہ کر کے ٹوپی گدون روڈ کو ٹریفک کے لئے بند رکھا مظاہرین کا کہنا تھا کہ گدون آمازئی جیسے دشوار گزار پہاڑی علاقہ میں اکثر مضافات میں بجلی ہی نہیں اگر جہاں ہے تو وہاں نہ صرف اس کی وولٹیج انتہائی کم ہے بلکہ طویل ترین لوڈ شیڈنگ کی جارہی ہے اسی طرح بجلی نہ ہونے کے باوجود صارفین کے ذمے بھاری بلز بجھوائے جاتے ہیں جو کہ سراسر ظلم و نا انصافی ہے بعد ازاں واپڈا اور پولیس حکام کی یقین دہانی پر مظاہرین نے روڈ بلاک ختم کر کے پُر امن طور پر منتشر ہو گئے#

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر