بھارت کی این ایس جی میں شمولیت پاکستان نہیں چین کی وجہ سے رکے گی: شیریں مزاری

بھارت کی این ایس جی میں شمولیت پاکستان نہیں چین کی وجہ سے رکے گی: شیریں مزاری
بھارت کی این ایس جی میں شمولیت پاکستان نہیں چین کی وجہ سے رکے گی: شیریں مزاری

  


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کی رکن قومی اسمبلی شیریں مزاری نے کہا ہے کہ بھارت کی این ایس جی میں شمولیت چین کی وجہ سے رکے گی اور اس میں پاکستان کا کوئی کمال نہیں ہوگا ہماری خارجہ پالیسی کی کوئی سمت نہیں ہے۔

قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے شیریں مزاری کا کہنا تھا کہ این ایس جی کےلئے بھارت کی درخواست پر ایک سال سے کام ہو رہا ہے اور ہم اس کے لیے ابھی درخواست دے رہے ہیں۔ مودی این ایس جی کی حمایت کیلئے دورے کررہا ہے اور آپ اے سی کمروں میں بیٹھ کرفون کرتے ہیں۔ بھارت کی رکنیت چین کی وجہ سے رکے گی اور اس میں پاکستان کا کوئی کمال نہیں ہوگا ۔سشما سوراج نے نواز مودی تعلقات سے متعلق حیران کن بیان دیا اور کہا کہ دونوں میں بہت اچھے تعلقات ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں وزیر خارجہ نہیں اور خارجہ پالیسی کی کوئی سمت نہیں ہے۔ وزیر دفاع کو تو کوئی سمجھ ہی نہیں کہ دفاع سے متعلق کیا پالیسی سامنے آئے گی۔ افغانستان پر آپ کی پالیسی کیا ہے ؟ اگر آپ کے پاس پالیسی نہیں ہے تو قائمہ کمیٹی کی سفارشات کو ہی دیکھ لیا جاتا۔

شیریں مزاری اک ڈرون حملوں کے حوالے سے کہنا تھا کہ فاٹا کے لوگوں کو ماریں تو ٹھیک ہے لیکن بلوچستان یا کسی سیٹلڈ ایریا میں ڈرون حملہ ہو تو ریڈ لائن عبور ہو گئی ۔ پہلے یہ بتایا جائے کہ ڈرون حملوں کے لیے کیا ریڈ لائنز تھیں۔ امریکی دباو¿ سے کوئی فیصلہ نہیں کر سکتے اگر جمہوریت میں خلا ہوگا تو کوئی اور اسے پورا کرلے گاپھرہم روتے رہیں گے۔

مزید : قومی /اہم خبریں