اجتماعی زیادتی کا شکار ہونے والی نوجوان لڑکی نے اپنی جان لے لی، مرنے سے پہلے آخری خط میں ایسی بات لکھ دی کہ جان کر آپ کی آنکھوں میں بھی آنسو آجائیں گے

اجتماعی زیادتی کا شکار ہونے والی نوجوان لڑکی نے اپنی جان لے لی، مرنے سے پہلے ...
اجتماعی زیادتی کا شکار ہونے والی نوجوان لڑکی نے اپنی جان لے لی، مرنے سے پہلے آخری خط میں ایسی بات لکھ دی کہ جان کر آپ کی آنکھوں میں بھی آنسو آجائیں گے

  

نئی دلی (نیوز ڈیسک) بھارت میں خواتین صرف جنسی درندگی کا نشانہ نہیں بن رہیں بلکہ اس ظلم کے بعد ان کے لئے موت بھی گویا یقینی ہو جاتی ہے، کیونکہ یا تو عصمت دری کرنے والے درندے ہی انہیں قتل کر دیتے ہیں یا وہ معاشرے کی سنگدلی پر خود اپنی جان لے لیتی ہیں۔ بھارتی دارالحکومت کے شمال مشرقی علاقے ہرش ویہار سے تعلق رکھنے والے 22 سالہ لڑکی بھی انہیں بدقسمت خواتین میں شامل ہوگئی ہے کہ جنہیں عصمت دری کے بعد موت کو بھی گلے لگانا پڑگیا۔

انسٹاگرام پر ’فحش‘ تصویر:توانائی کمپنی کی خاتون ملازمت سے فارغ ،عدالت نے بحال کردیا

اخبار ٹائمز آف انڈیا کی رپورٹ کے مطابق اس لڑکی کو شادی کا جھانسہ دینے والے ایک 24 سالہ نوجوان نے اپنے دوست کے ساتھ ملکر اجتماعی زیادتی کا نشانہ بنایا تھا۔ لڑکی کے والدین کی جانب سے جب قانونی کارروائی کا آغاز کیاگیا تو ملزمان نے ان پر ہر طرح کا دباﺅ ڈالنے اور دھمکیاں دینے کا سلسلہ شروع کردیا۔ بدنصیب لڑکی کی عزت لٹ جانے کے بعد اسے انصاف ملنا بھی ناممکن ہو گیا تو اس نے گلے میں پھندا ڈالا اور اس دنیا کو ہمیشہ کے لئے چھوڑ گئی۔

پولیس کے مطابق لڑکی نے خو دکشی سے پہلے ایک خط تحریر کیا، جس میں لکھا کہ ”میںاپنی عزت لٹنے کے صدمے سے باہر نہیں آ سکی، اور اس بات پر شدید دکھی ہوں کہ ظلم بھی مجھ پر ہوا اور مجھے اور میرے والدین کو ہی بے عزت بھی کیا جا رہا ہے۔ ملزمان کی جانب سے میرے گھر والوں پر عدالت سے باہر معاملات طے کرنے کا شدید دباﺅ ہے، جس کے لئے میں تیار نہیں۔میں نے ان دکھوں سے نجات پانے کے لئے خودکشی کافیصلہ کر لیا ہے۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس