اب الزام تراشی ختم ہونی چاہئے، پاکستان افغانستان میں قیام امن کے کسی بھی میکنزم کیلئے تیار ہے: اعزاز چودھری

اب الزام تراشی ختم ہونی چاہئے، پاکستان افغانستان میں قیام امن کے کسی بھی ...

واشنگٹن (این این آئی)امریکہ میں پاکستان کے سفیر اعزاز چوہدری نے کہاہے کہ پاکستان افغانستان میں امن کے قیام کیلئے کسی بھی میکنزم کیلئے تیارہے، افغانستان کی جانب سے الزام تراشی کا سلسلہ ختم ہو نا چاہیے ٗ دونوں ممالک کو دہشت گردی کی صورت میں مشترکہ دشمن کو شکست دینے کیلئے باہمی تعاون کو فروغ دینے کی ضرورت ہے ۔ تھنک ٹینک انڈس کے زیراہتمام مذاکرے سے خطاب میں انہوں نے کہاکہ پاکستان افغانستان اورپورے خطے میں امن کے قیام کا خواہاں ہے اورہم امن کویقینی بنانے کے کسی بھی میکنزم کیلئے تیارہے۔ اعزاز چوہدری نے افغانستان میں امن اوراستحکام اورافغانستان کے خلاف اپنی سرزمین استعمال نہ کرنے کے پاکستان کے عزم کا اعادہ کرتے ہوئے کہاکہ پاکستان کا امن افغانستان کے امن سے جڑاہواہے، افغانستان میں امن و استحکام کا سب سے زیادہ فائدہ پاکستان کو پہنچے گا۔اس مذاکرے میں دونوں سفارت کاروں نے اپنے ممالک کے مشترکہ مفادات پر تفصیلی گفتگو کی اورایک دوسرے کے ساتھ خیالات کا تبادلہ کیا۔دونوں سفارتکاروں نے باہمی تعلقات میں مشترکہ مفادات اورچیلنجوں پر گفتگو کی۔دونوں سفارتکاروں کا اس بات پر اتفاق تھا کہ پاکستان اورافغانستان کے درمیان تعلقات کا فروغ دونوں ممالک اور اورعلاقائی امن ، استحکام اور ترقی کیلئے اہمیت کا حامل ہے، یہ امریکا کیلئے بھی سٹریٹجک اہمیت کے حامل ہے۔ افغانستان کی جانب سے ہرمعاملے میں پاکستان کو مورد الزام ٹہرانے کا رحجان ختم ہونا چاہئیے، دونوں ممالک کو دہشت گردی کی صورت میں مشترکہ دشمن کو شکست دینے کیلئے باہمی تعاون کو فروغ دینا چاہئے کیونکہ صرف اسی صورت میں خطے میں امن، ترقی اور استحکام کو یقینی بنایا جاسکتاہے۔ افغانستان کے سفیر ڈاکٹرحمیداللہ محب نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ دہشت گردی پاکستان اور افغانستان کے درمیان کوئی دوطرفہ معاملہ نہیں بلکہ ایک عالمی مسئلہ ہے اور اس لعنت کے خاتمے کیلئے تمام ممالک کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔ انہوں نے اس بات کو تسلیم کیا کہ افغانستان میں جاری بحران پاکستان اور افغانستان سے ماوراء ہے جس میں کئی بین الاقوامی کھلاڑی اورقوتیں شامل ہیں، ملک میں دیرپا قیام امن کیلئے جامع سیاسی حل کی ضرورت ہوگی۔

مزید : علاقائی