پاکستان کو منشیات فری ملک کا درجہ دلانا چاہتے ہیں، اکمل اویسی

پاکستان کو منشیات فری ملک کا درجہ دلانا چاہتے ہیں، اکمل اویسی

لاہور(پ ر)سول سوسائٹی نیٹ ورک برائے انسداد منشیات پاکستان جو کہ منشیات کے خلاف کام کرنے والی مختلف اداروں کا ایک بڑا نیٹ ورک ہے جو کہ پاکستان کے چاروں صوبوں ٗآزاد کشمیرٗ اسلام آباد اور بلتستان میں بھرپور کام کر رہا ہے۔ اس نیٹ ورک کی بنیاد 23 مارچ 2013 کو لاہور میں رکھی گئی۔اس نیٹ ورک کے پاکستان کے ہر ضلع ہر ڈویژن میں نمائندے موجود ہیں جہاں وہ منشیات کے خلاف سرکاری اداروں کے ساتھ مل کر کام کر رہے ہیں۔ ان کو ایکسائز ٗ ٹیکسیشن اینڈ نارکوٹکس کنٹرول ڈیپارٹمنٹ کی باقاعدہ سرپرستی حاصل ہے۔

اور وہ ان کے ساتھ گاہے بگاہے مختلف پروگرامز میں مل کر کام کر رہے ہیں۔

سول سوسائٹی نیٹ ورک کے ممبران ہر ڈسٹرکٹ کی نارکوٹکس کنٹرول کمیٹی کے ممبر بھی ہیں۔

اس کے ساتھ ساتھ اینٹی نارکوٹکس فورس ٗ پولیس ڈیپارٹمنٹ ٗ یوتھ افیئر ٗ سوشل ویلفیئر ڈیپارٹمنٹ بھی سول سوسائٹی نیٹ ورک برائے انسداد منشیات پاکستان کی سرپرستی کرتی ہے۔

سول سوسائٹی چیئرمین اکمل اویسی پیر زادہ، مرکزی صدر ڈاکٹر ظفر اقبال میاں، سیکرٹری جنرل ڈاکٹر محمد ریاض، چیف ایڈوائزر لطیف انجم، پنجاب کے صدر ڈاکٹر نور الزمان رفیق ، پنجاب کے جنرل سیکرٹری ڈاکٹر زاہد اقبال عادل ، بورڈ آف ڈائریکٹرز کی ممبر تسلیم اختر،نائلہ طاہر، مافیہ حسین نے مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ سول سوسائٹی نیٹ ورک کے عہدیداروں نے یکم جنوری 2016 ء سے پاکستان بھر کے بڑے شہروں کا دورہ کیا اور منشیات کے عادی مریضوں کا ڈیٹا اکٹھا کیا جو گورنمنٹ کے اعلیٰ حکام تک پہنچا دیا گیا۔ سول سوسائٹی چاہتی ہے کہ پاکستان سے منشیات کامکمل خاتمہ ہو اور پاکستان کو ڈرگ فری ملک کا درجہ دلایا جائے۔ منشیات کی تباہ کاریوں سے تمام عوام کو آگاہ کرنے کے لیے سول سوسائٹی اپنا بھر پور کردار ادا کرنے کیلئے تیار ہے۔ منشیات کے عادی افراد کو علاج معالجہ اور معاشرہ کا فعال شہری بنانے کیلئے کام کیا جائے۔ طالب علموں کو منشیات سے دور رکھنے کیلئے ہائی سکولز ٗ کالجز میں منشیات کے اثرات بد کے بارے میں لیکچرز کا اہتمام ہونا چاہئے تاکہ طالب علم یکسوئی سے تعلیم حاصل کر کے ملکی ترقی میں اپنا کردار ادا کر سکیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 4