طوفان بادوباراں ،موسلا دھار بارش سے جنوبی پنجاب جل تھل ،کچے مکان ،درخت زمین بوس،بجلی کا ترسیلی نطام درہم برہم

طوفان بادوباراں ،موسلا دھار بارش سے جنوبی پنجاب جل تھل ،کچے مکان ،درخت زمین ...

ملتان ‘ کوٹ ادو ‘ دائرہ دین پناہ ‘ لڈن ‘ راجن پور ‘ شاہ جمال ( نیوز رپورٹر ‘ کرائم رپورٹر ‘ سٹاف رپورٹر ‘ نمائندہ خصوصی ( نمائندگان ) ملتان سمیت جنوبی پنجاب بھر میں گزشتہ روز طوفان بادوباراں اور موسلادھار بارش کے نتیجہ میں ہر طرف جل تھل ہوگئی ‘ سڑکیں ‘ گلیاں دریا بن گئیں اور بجلی کا ترسیلی نظام گھنٹوں معطل رہا ‘ درخت ‘ سائن بورڈ اور ہورڈنگ بورڈز زمین بوس ہوگئے ‘ حادثات میں درجنوں افراد زخمی ہوگئے ‘ تاہم اس تمام صورتحال میں گرمی کا زور ٹوٹ گیا اور موسم خوشگوار ہو نے پر روزہ داروں نے سکھ کا سانس لیا ۔ تفصیل کے مطابق ملتان اور گرد نواح میں منگل کی سہ پہر کو طوفان بادو باراں کے باعث معمولات زندگی ‘ ٹریفک کا نظام درہم برہم ‘ گرمی کا زور ٹوٹ گیا ‘ موسلادھار بارش کے باعث شاہرائیں ‘ گلیاں ‘ رمضان بازار زیر آب گئے جبکہ 97 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چلنے والی طوفانی آندھی کے باعث درخت جڑوں سے اکھڑ گئے ‘ سائن بورڈ ‘ ہورڈنگ بورڈ زمین بوس جبکہ آم کے باغات کو بھی شدید نقصان پہنچا ‘ تاہم مجموعی طور پر باران رحمت اور ٹھنڈی ہواؤں کے باعث موسم خوشگوار ہوگیا ‘ مقامی محکمہ موسمیات نے حالیہ بارشوں کا سلسلہ مزید 2 روز جاری رہنے کی پیشن گوئی کی ہے جبکہ منگل کے روز رات 9 بجے تک 33 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی ‘ منگل کے روز علی الصبح سے ہی گھنگھور گھٹاؤں نے مطلع کو اپنی لپیٹ میں لے رکھا تھا ‘ سہ پہر ساڑھے 5 بجے 97 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چلنے والی آندھی کیساتھ موسلادھار بارش کا سلسلہ شروع ہوگیا جو کہ وقفے وقفے سے جاری رہا ‘ شدید بارش اور طوفانی آندھی کیوجہ سے معمولات زندگی شدید متاثر ہوئے ‘ سڑکوں ‘ گلیوں ‘ محلوں میں بارش کا پانی جمع ہوگیا ‘ نشیبی علاقے زیر آب آگئے جس سے شہریوں کو آمدورفت میں بھی مشکلات کا سامنا رہا ۔ مقامی محکمہ موسمیات کے مطابق آج بدھ اورکل جمعرات تک حالیہ بارشوں کا سلسلہ جاری رہنے کا امککان ہے اورآج دوپہر سے شام تک تیز بارش ہو سکتی ہے ۔دریں اثناء کچے مکانوں کی چھتیں اور دیوار گرنے کے مختلف حادثات میں 10افراد زخمی ہوگئے۔اس حوالے سے ریسکیو ذرائع کایہ کہنا ہے کہ قاسم بیلہ کے قریب مکان کی چھت گرنے سے گلزار،شاہدہ اور ماہ نور،ملبے تلے دب گئے اسی طرح بگٹی چوک 20فٹی سمجیہ آباد کا رہائشی منظور حسین چھت گرنے سے ملبے تلے دب گیا دریں اثناء 20فٹی سمیجہ آباد میں مکان کی دیوار گرنے سے ریاض اور حسن زخمی ہوگئے،جبکہ جہانگیر آباد میں مکان کی چھت گرنے سے اریب،آمنہ،ماہیناور رابعہ ملبے تلے دب گئے،جنھیں ریسکیو عملہ نے موقع پر پہنچ کر نشتر ہسپتال منتقل کردیا ۔ ملتان شہر، نواحی علاقوں اور جنوبی پنجاب میں طوفانی بارش سے بجلی کا نظام درہم برہم ہو کر رہ گیاہے۔ آندھی اور بارش کے باعث بیسیوں فیڈرز ٹرپ کرگئے۔ ملتان شہر کا بڑا حصہ بجلی سے محروم ہوگیا۔ میپکو ریجن میں 426 فیڈرز ٹرپ ہونے سے نظام زندگی معطل ہو گیا۔ خطے کے کئی اضلاع میں مکینوں اور رہائشیوں نے اندھیرے میں افطاری کی۔ میپکو کے چیف ایگزیکٹو آفیسر نے طوفانی بارش کے بعد ایمرجنسی نافذ کردی اور تمام آپریشنل افسروں ، لائن سٹاف کو ڈیوٹی پر طلب کرلیا اور ہنگامی طور بجلی کی مجالی کیلئے اقدامات کا آغاز کردیا۔ ملتان شہر اور نواحی علاقوں کو بجلی فراہم کرنے والے 160 سے زائد فیڈرز بند ہوگئے۔ ان علاقوں میں افطار کے وقت تک بحال نہیں کی جاسکی تھی۔ میپکو حکام کے مطابق فوری طور پر اقدامات کئے گئے اور بیشتر علاقوں میں بجلی بحال کر دی ۔ دوسری جانب ملتان اور گردونواح خصوصاً دیہی علاقوں میں رات گئے تک بھی بجلی بحال نہیں کی جا سکی تھی ۔ ان علاقوں کے صارفین نے جب میپکو دفاتر سے رابطہ کیا تو جواب ملا کہ صبح ہونے پر پٹرولنگ کے بعد فالٹ تلاش کرکے بجلی بحال کی جائے گی ۔ ملتان شہر میں گزشتہ روز ہونیوالی بارش کیوجہ سے شہر بھر کے گٹر ابل پڑے ہیں‘ جس کیوجہ سے سڑکوں ‘ گلیوں اور محلوں میں بارش کا پانی جمع ہو گیا ہے ‘ گلگشت ‘ سورج میانی ‘ احمد آباد ‘ رائیٹرز کالونی ‘ شاہین آباد ‘ شریف پورہ ‘ مومن آباد ‘ سمن آباد ‘ مغل آباد ‘ شاہین مارکیٹ ‘ خونی برج ‘ چونگی نمبر9 ‘ خانیوال روڈ چوک کمہارانوالا روڈ پر کئی کئی فٹ پانی جمع ہے ۔ چوک کمہارانوالا اور پرانا خانیوال روڈ پانی کے جوہڑ میں تبدیل ہو چکے ہیں ‘ چونگی نمبر 9 میٹرو ٹریک کے نیچے پانی ہی پانی جمع ہے ‘ چونگی نمبر 9 پر رات گئے کئی گاڑیاں بارشی پانی میں پھنس گئیں ‘ اعوان پورہ ‘ اسلام پورہ ‘ گلبرگ ‘ ممتاز آباد ‘ پیپلز کالونی ‘ پیر کالونی ‘ پائلٹ سکول کے سامنے بھی پانی جمع رہا ‘ایل ایم کیو روڈ پر بارشی پانی جمع ہونے کیوجہ سے شہری گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے ۔ واسا کے ڈسپوزل اسٹیشن فعال ہونے کے باوجود شاہین مارکیٹ کی صورتحال انتہائی ابتر رہی ‘ جبکہ چوک شہباز اورلوہا مارکیٹ میں بھی پاین رات گئے تک جمع رہا ‘ نکاسی آب کا سسٹم نہ ہونے کیوجہ سے شہر بھر کے مکین گھروں میں محصور رہے ۔ کوٹ ادو سے تحصیل رپورٹر اوردائرہ دین پناہ سے نامہ نگار کے مطابق کوٹ ادووگردونواح میں گرد آلود آندھی کے ساتھ تیز بارش ،تیز آندھی سے درخت جڑوں سے اکھڑ گئے ،مسلسل موسلادھار بارش سے کوٹ ادو شہر جل تھل ہوگیا اور شہر کی گلیاں ، سڑکیں اور نشیبی علاقے بارشی پانی سے بھرگئے ،بارش کی وجہ سے گرمی کازورٹوٹ گیا اورموسم نہایت خوشگوار ہوگیا ، شہر میں نکاسی آب سسٹم جواب دے گیا اور کئی گھنٹے تک ڈسپوزل چالو نہیں کیے گئے جس سے بارشی پانی ساراد ن سڑکوں اورگلیوں میں جمع رہا اور شہریوں کو آمدورفت میں شدید مشکلات کاسامنا کرناپڑا جبکہ اکثر شہریوں اور راہگیروں کو متبادل راستے اختیارکرناپڑے ۔ لڈن سے نامہ نگار کے مطابق لڈن اور گردونواح میں طوفان نما تیز آندھی آئی جسکے بعد موسلادھار بارش شروع ہوگئی ،تیز آندھی سے کئی جگہوں پر بجلی کے پول گرگئے ،تاریں ٹوٹ گئیں اور درخت جڑوں سے اکھڑ گئے اور بجلی کی سپلائی بھی معطل ہوگئی جبکہ موسلا دھار بارش کا پانی تھانہ لڈن ،ایجوکیشن کمپلیکس ،یونین کونسل لڈن ،مین بازار ،قبرستان سمیت دیگر کئی سرکاری اور پرائیویٹ عمارتوں میں داخل ہوکر جھیل کا منظر پیش کرنے لگا۔ راجن پور سے ڈسٹرکٹ رپورٹر ‘ نامہ نگار ‘ نمائندہ پاکستان کے مطابق راجن پور میں گذشتہ روز سخت گرمی رہی، شام کے وقت اچانک تیز آندھی آگئی اور آسمان پر گہرے بادل چھا نے سے موسم خوشگوار ہو گیا تیز آندھی کی شدت اتنی تھی کہ کئی درخت اور سائن بورڈ زاُکھڑ گئے اور کئی علاقوں میں بجلی کی تاریں ٹوٹنے سے بجلی کی فراہمی بھی کئی گھنٹے معطل رہی ۔ شاہ جمال سے نمائندہ پاکستان کے مطابق شاہجمال اور گردو نواح میں آج دوسرے روز بھی شدید بارش اور طوفانی آندھی سے علاقہ میں زبر دست تباہی پھیل گئی درخت باالخصوص آموں کے باغات کو شدید نقصان پہنچا آموں کے سینکڑوں درخت اکھڑ گئے کپاس کی فصل کو شدید نقصان پہنچا کسان بورڈ مظفر گڑھ کے عہدیداران مہر خالد محمود جانگلہ ،ملک اختر،دیگر نے باغبانوں اور کپاس کے کاشتکاروں کو آفت زدہ قرار دیکر ٹیکس آبیانہ معاف کیا جائے ۔

آندھی‘ طوفان

مزید : کراچی صفحہ اول