خط10 سے 15 روپے مہنگا کرنے کا فیصلہ

خط10 سے 15 روپے مہنگا کرنے کا فیصلہ
خط10 سے 15 روپے مہنگا کرنے کا فیصلہ

  

اسلام آباد (ویب ڈیسک) پاکستان پوسٹ آفس نے 7ارب روپے سالانہ خسارے کو کم کرنے کیلئے خط کی قیمت میں 10سے 15روپے اضافے کی سمری منظوری کیلئے وفاقی کابینہ کو بھجوانے کا فیصلہ کیا ہے ۔

روزنامہ دنیا کی رپورٹ میں پاکستان پوسٹ کی تجویز کے مطابق نجی کوریئر کمپنیوں کے مقابلے میں خط کی قیمت انتہائی کم ہے جس کو بڑھا کر 20 روپے تک کیا جائے۔ وفاقی حکومت نے پاکستان پوسٹ کو آئندہ مالی سال 2017-18ءمیں دو ارب روپے خسارہ کم کرنے کا ہدف دیا ہے تاہم پاکستان پوسٹ کے سالانہ خسارے میں ایک ارب روپے کا اضافہ ہورہا ہے۔ پاکستان پوسٹ کا آئندہ مالی سال 2017-18ءکیلئے بجٹ 17ارب 55کروڑ 28 لاکھ 90 ہزار روپے مختص کرنے کی منظوری دی گئی ہے اور پوسٹ آفس کی آمدنی کا تخمینہ 13 ارب روپے لگایا گیا ہے۔ پاکستان پوسٹ کیلئے رواں مالی سال 2016-17ءکا بجٹ 16 ارب 40 کروڑ 78 لاکھ 41 ہزار روپے مختص کیا گیا جبکہ آمدنی کا تخمینہ 11ارب 50 کروڑ روپے لگایا گیا۔ قانون کے تحت خط کی قیمت میں اضافہ صرف وفاقی کابینہ کرسکتی ہے۔

چیف آف آرمی سٹاف کا دورہ ترکی ، جنرل قمر باجوہ کو ''لیجن آف میرٹ'' ایوارڈ دیا گیا

پاکستان پوسٹ نے قبل ازیں 2012ءمیں خط کی قیمت 8روپے سے بڑھا کر 15 روپے کرنے کی سمری وفاقی کابینہ کو بھجوائی تھی جس پر تاحال کوئی فیصلہ نہیں ہوسکا۔ پاکستان پوسٹ کی تجویز کے مطابق نجی کمپنیاں کم از کم 150 روپے وصول کررہی ہیں جبکہ پاکستان پوسٹ کے خط کی قیمت 8 روپے ہے جس سے سفری اور دیگر سروس اخراجات پورے نہیں ہورہے۔

مزید : اسلام آباد