خیبر پختونخواہ ہیلتھ کئیر کمیشن کا انوکھا فیصلہ

خیبر پختونخواہ ہیلتھ کئیر کمیشن کا انوکھا فیصلہ
خیبر پختونخواہ ہیلتھ کئیر کمیشن کا انوکھا فیصلہ

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور,پشاور (مشرف زیدی سے) پنجاب کے بعد خیبر پختونخواہ ہیلتھ کئیر کمیشن نے بھی مطب اور ہومیو کلینک کی لائسنس فیس کی غیر قانونی طور پر 5000روپے کی وصولی شروع کردی ہے۔ فیصلے کے خلاف وفاق اطباء پاکستان سمیت تمام طبی تنظیموں نے مشترکہ لائحہ عمل تیار کرنے کا اعلان کردیا ۔قومی طبی کونسل کے چیئرمین لیگل افئیرز حکیم عبدالواحد شمسی نے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ خیبر پختونخواہ ہیلتھ کئیر کمیشن نے پنجاب کے نقش قدم پر چلتے ہوئے مطب رجسٹریشن کی فیس 5000 روپے جبکہ تجدید کی فیس 3000 روپے کردی ہے۔ جبکہ تحریک انصاف کی حکومت میں پہلی بار حکیموں پر محکمہ ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن کی طرف سے 10000روپے کا ٹیکس بھی عائد کردیا ہے۔ خیبر پختونخواہ کی حکومت صوبے کے معزز اطباء کرام سے اتنا زیادہ ٹیکس وصول کرنے کے باوجود انہیں کسی قسم کی کوئی سہولت نہیں دے رہی ۔ ہیلتھ انسپکٹر بلاجواز مطب سیل کردیتے ہیں اور پوچھنے والا کوئی نہیں ہوتا ۔جبکہ دوسری طرف خیبر پختونخواہ ہیلتھ کیئر کمیشن کے افسران اطباء کے نمائندوں کی مشاورت کے بغیر فیسوں کی وصولی جاری رکھے ہوئے ہیں جس کی واحد وجہ ان کی بھاری تنخواہیں ہیں۔ہیلتھ کئیر کمیشن نے اپنا ہی قانون بنا رکھا ہے ۔ہیلتھ انسپکٹر بنا کسی معقول وجہ کے مطب کو سیل کردیتے ہیں اور معزز اطباء کرام کو اپنے دفتر میں بلا کر بلاجواز جرمانے عائد کئے جاتے ہیں ۔ جرمانے کی ادائیگی کے بعد انہیں زبانی کہہ دیا جاتا ہے کہ جا کر اپنا مطب کھول لیں۔حالانکہ معزز اطباء کرام کے خلاف کیسز قومی طبی کونسل کو بھجوائے جانے چاہئیے۔

مستقبل میں اطباء کے نمائندہ وفد اور HCC کے درمیان طویل غور و فکر ‘ بحث مباحثہ اور مشاورت کے بعد جن امور پر فیصلہ ہوا ان میں یہ نقطہ بھی شامل تھا کہ حکیم کے مطب کی فیس کسی صورت 2000 روپے سے زائد نہ ہوگی ۔ لیکن بصد افسوس کہنا پڑ رہا ہے کہ دیگر کئی مفاہمتی نقاط کی طرح اس اہم فیصلہ کو بھی سبوتاژ کرنے کی کوشش کی گئی۔ اور خلاف وعدہ ‘ غیر اخلاقی اور غیر قانونی طور پر مطب کی فیس 5000 روپے وصول کرنا شروع کردی گئی۔حکیم عبدالواحد شمسی نے مزید کہا کہ اگر فیصلہ واپس نہ لیا گیا توتمام طبی تنظیمیں مشترکہ طور پر عدالت عالیہ سے رجوع کریں گی۔

مزید : پشاور