میٹکو فوڈز اور Oxfamکے درمیان شراکتی معاہدہ طے پاگیا

میٹکو فوڈز اور Oxfamکے درمیان شراکتی معاہدہ طے پاگیا

کراچی(پ ر) پاکستان سے باسمتی چاول ایکسپورٹ کرنے والی سب سے بڑی کمپنی میٹکو فوڈز نے چاول کے کاشتکاروں کی معاشی و سماجی بہتری کے لیے Oxfamاور Doabaفاؤنڈیشن کے ساتھ مفاہمت کی یادداشت طے کرلی ہے۔ معاہدے کی تقریب سادھوکے میں واقع میٹکو فوڈز فیکٹری میں منعقد ہوئی جس میں تینوں اداروں کی انتظامیہ کے سینئر نمائندوں نے شرکت کی۔ میٹکو اور Oxfamکے اس مشترکہ پراجیکٹ کو ’’پاکستان کی پائیدار رائس ویلیو چین اور صنفی تبدیلی کی جانب قدم‘‘ کا نام دیا گیا ہے جس کے تحت دونوں ادارے پائلٹ پراجیکٹ کے طور پر پنجاب کے 10 دیہات میں چاول کے کاشتکاروں کے ساتھ مل کر کام کریں گے۔ اس پراجیکٹ کا مقصد پنجاب کے مرد اور خواتین کاشتکاروں کو بااختیار بناتے ہوئے چاول کی بہتر قیمت کے حصول میں مدد دے کر آمدن میں اضافہ اور کام کے ماحول کو بہتر بنانا ہے۔ اس بارے میں اپنے تاثرات کا اظہار کرتے ہوئے میٹکو فوڈز کے ڈائریکٹر فیضان غوری نے کہا کہ’’ایک سماجی ذمہ دار ادارے کی حیثیت سے پاکستان میں باسمتی رائس کے کاشتکاروں کا طرز زندگی بہتر بنانے میں معاون کردار کی ادائیگی کے لیے Oxfamکے ساتھ شراکت میٹکو کے لیے خوشی کا باعث ہے۔ ہمیں یقین ہے کہ اس اقدام سے کاشتکاروں کو سماجی اور معاشی دونوں لحاظ سے فائدہ پہنچے گا۔ چاول کی بھرپور اور مستحکم پیداوار سے کاشتکاروں کی مدد ہونے کے ساتھ میٹکو کو سپلائی چین بھی مضبوط ہوگی۔‘‘معاہدے کی تقریب میں Oxfamکی پروگرام ڈائریکٹر جویریہ افضل اور سینئر پروگرام منیجر قیصر عرفات نے بھی شرکت کی اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے جویریہ افضال نے کہا کہ پاکستان میں چاول کے کاشتکاروں کے لیے جدید فارمنگ کے طریقوں سے آگہی حاصل کرنے کے مواقع محدود ہیں جن میں باہم مربوط پیسٹ منجمنٹ، کیمیاوئی کھادوں کے متبادل اور پانی کے باکفایت استعمال کے جدید طریقے شامل ہیں۔ مارکیٹ کے متغیرات سے محدود واقفیت کی وجہ سے بھی کاشتکار اپنی پیداوار کی بہتر قیمت حاصل کرنے سے محروم ہیں۔ چاول کے کاشتکاروں میں زیادہ تر خواتین اور بچے کم اجرت پر کام کررہے ہیں جو چاول کی صنعت میں سب سے زیادہ پسماندہ اور وسائل سے محروم ہیں۔‘‘میٹکو کی Oxfamکے ساتھ شراکت داری کا مقصد ملک میں غربت کے خاتمے اور فوڈ سیکیوریٹی کی صورتحال میں بہتری لانا ہے۔ اس پراجیکٹ کے تحت میٹکو پاکستان میں چاول کی کاشت کے علاقوں مریدکے، شیخوپورہ ڈسٹرکٹ میں پائیدار بنیادوں پر چاول کی پیداوار میں بہتری کے لیے جدید زرعی طریقوں اور آگہی پھیلانے کے لیے تکنیکی سپورٹ فراہم کرے گی۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر