نیب نے کارروائی سے گریز کیا ،اس لئے جے آئی ٹی بنائی جس کے سربراہ کا کام تفتیش کر کے مواد اکٹھا کرنا تھا:خواجہ حارث

نیب نے کارروائی سے گریز کیا ،اس لئے جے آئی ٹی بنائی جس کے سربراہ کا کام تفتیش ...
نیب نے کارروائی سے گریز کیا ،اس لئے جے آئی ٹی بنائی جس کے سربراہ کا کام تفتیش کر کے مواد اکٹھا کرنا تھا:خواجہ حارث

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )احتساب عدالت میں ایون فیلڈ ریفرنس کی سماعت میں سابق وزیراعظم نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث کا کہنا ہے کہ نیب نے کارروائی سے گریز کیا ،اس لئے عدالت نے جے آئی ٹی بنائی ، جے آئی ٹی ایک تفتیشی ایجنسی تھی اور اس کے سربراہ کا کام تفتیش کر کے مواد اکٹھا کرنا تھا۔

تفصیلات کے مطابق ایون فیلڈ ریفرنس میں سابق وزیراعظم نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث نے آج بھی دلائل دینے کا سلسلہ جاری رکھا ان کا کہنا تھا کہ معمول کا کیس ہوتا تومعاملہ تفتیش کیلئے نیب کے سپرد کیا جانا تھا، نیب تفتیش کرتا اورپھر ریفرنس دائر ہوتا۔ نیب نے کارروائی سے گریز کیا ،اس لئے عدالت نے جے آئی ٹی بنائی ، جے آئی ٹی ایک تفتیشی ایجنسی تھی اور تفتیش کیلئے قانون وضع ہوتا ہے کیا قابل قبول شہادت ہے کیا نہیں ہے اورجے آئی ٹی کے سربراہ کا کام تفتیش کر کے مواد اکٹھا کرنا تھا۔

واضح رہے کہ گزشتہ روزاحتساب عدالت میں سماعت کے دوران خواجہ حارث نے حتمی دلائل دیتے ہوئے مؤقف اختیار کیا تھا کہ لندن فلیٹس کبھی نوازشریف کی ملکیت میں نہیں رہے۔

مزید : قومی /سیاست /علاقائی /اسلام آباد