زلفی بخاری کے معاملے پر نگران وزیر داخلہ کے جواب سے میری تسلی نہیں ہوئی :رحمان ملک

زلفی بخاری کے معاملے پر نگران وزیر داخلہ کے جواب سے میری تسلی نہیں ہوئی ...
زلفی بخاری کے معاملے پر نگران وزیر داخلہ کے جواب سے میری تسلی نہیں ہوئی :رحمان ملک

  

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن)سابق وزیر داخلہ سینٹر رحمان ملک نے کہا ہے کہ زلفی بخاری کا نام بلیک لسٹ سے نکالے جانے کے حوالے سے وزیر داخلہ کے جواب پر میری تسلی نہیں ہوئی ۔ زلفی بخاری کو نہیں بتایا گیا تھا کہ ا ن کانام بلیک لسٹ میں ہے ۔

دنیا نیوز کے پروگرام ”نقطہ نظر “ میں گفتگو کرتے ہوئے رحمان ملک نے کہا ہے کہ جب زلفی بخاری کامعاملہ میڈیا میں آیا تو میں نے سیکرٹری داخلہ سے رابطہ کیا کہ اس حوالے سے کیا معلومات ہیں؟انہوں نے کہا کہ کسی بھی شخص کا نام صرف کابینہ ہی بلیک لسٹ میں ڈال سکتی ہے اور ایمرجنسی کے لئے کابینہ کی سب کمیٹی فیصلہ کرتی ہے ۔ میں نے کمیٹی میں نگران وزیر داخلہ سے اس پورے معاملے میں پوچھا تو انہوں نے بتایا کہ ان کا نام بلیک لسٹ میں تھا ای سی ایل پر نہیں تھا ۔ اگر یہ بلیک لسٹ بھی تھا تو ضروری تھا کہ زلفی بخاری کو بتایا جاتا کہ ان کا نام بلیک لسٹ میں ہے اور کیوں ہے ؟انہوں نے کہاکہ میری زلفی بخاری کا نام بلیک لسٹ سے نکالے جانے کے حوالے سے نگران وزیر داخلہ کے جواب پر میری تسلی نہیں ہوئی ہے اس لئے میں نے حقائق معلوم کرنے کیلئے ایک معاون مقرر کردیا ہے ۔اس حوالے سے میں نے بلیک لسٹ کو بھی چیلنج کردیا ہے ۔

مزید : قومی