بجٹ منظور سے قبل منافع خوروں نے لوٹ مار مچادی،ہر چیز مہنگی

  بجٹ منظور سے قبل منافع خوروں نے لوٹ مار مچادی،ہر چیز مہنگی

  

    لاہور(رپورٹ: دیبا مرزا سے) بجٹ 2019ء2020ء کی منظوری سے قبل ہی چینی سمیت دیگر اشیائے خورد و نوش کی قیمتوں اضافہ کا سلسلہ شروع ہوگیا چینی کی قیمت  عام مارکیٹوں اور بازاروں میں 71 روپے  فی کلوگرام ہوگئی جبکہ گھی تیل سگریٹ خشک دودھ پنیر،کریم اور اوردیگر اشیائے خورد و نوش کی قیمتوں اضافہ کرکے منافع خور وں نے عوام کو دونوں ہاتھوں سے لوٹنا شروع کر دیا۔تفصیلات کے مطابق چینی کے ذخائر میں اضافے کے باوجود قیمتوں میں مسلسل ایک ماہ سے اضافہ کا سلسلہ جاری تھا گذشتہ ماہ چینی کی 60 روپے فی کلوگرام تھی جس میں اب تک 11روپے فی کلوگرام اضافہ ہوچکا ہے جس کے بعد اب چینی کی قیمت  عام مارکیٹوں اور بازاروں میں 71روپے فی کلوگرام ہوگئی اور کئی علاقوں میں چینی غائب کرکے بحران پیدا کیا جارہا ہے۔، چینی کا شمار ان اشیا میں ہوتا ہے جو اشیائے خورد و نوش میں عام استعمال ہوتی ہے اور ہر خاص وعام کو چینی کی ضرورت پڑتی ہے لیکن شوگر ملز مافیا عام استعمال کی اس شہ کو بھی عوام کی پہنچ سے باہر کرنے کے منصوبے پر عمل پیرا ہے۔ قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے عام آدمی کے کچن کا بجٹ بری طرح متاثر ہوتا ہے۔عوام نے شوگر ملز مافیا کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے ان کے خلاف فوری ایکشن لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -