نیشنل میڈیسن پالیسی بنارہے ہیں، ذمہ دار کمپنیوں کو فائدہ ہوگا، ظفر مرزا

نیشنل میڈیسن پالیسی بنارہے ہیں، ذمہ دار کمپنیوں کو فائدہ ہوگا، ظفر مرزا

  

اسلام  آباد ( آن لائن)  و زیر اعظم کے معاون خصوصی برائے قومی صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا ہے کہ جتنی ادویات کی قیمتوں میں کمی کی گئی ہے ان کے نام اور قیمت اخبارات میں اشتہارات کے ذریعہ عوام کوآگاہ کیا جائے گا ،عوام کے سہولت کے لیے ایک ہیلپ لائن بھی قائم کی گئی ہے، اگر کسی دوائی کی قیمت زیادہ ہے تو اس پر شکایت کی جا سکے گی۔ نیشنل میڈیسن کمپنی بنانے جارہے ہیں، ذمہ دار کمپنیوں کو فائدہ ہوگا جبکہ جعلی ادویات بنانے والی کمپنیوں کو بند کر دیا جائے گا۔بڑھتی ہوئی آبادی کو کنٹرول کرنے کیلیے صوبوں کے ساتھ مل کر پاکستان پاپولیشن فورم کے قیام کو بھی فیصلہ کیا گیا ہے۔گزشتہ روز پنجاب کی صوبائی مشیر برائے صحت یاسمین راشد کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے قومی صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا کہ پاپولیشن پر پہلے سے فورم موجود تھا،اس کا نام تبدیل کر کے پاکستان پاپولیشن فورم رکھا گیا ہے جس میں صوبائی وزرا شرکت کیا کریں گے۔  فورم کا اجلاس ہر تین ماہ بعد ہوا کرے گا اگلا اجلاس کوئٹہ میں رکھا جا رہا ہے۔ وزیر اعظم بہت جلد  بلوچستان کیلیے ہیلتھ پیکج کا بھی اعلان کریں گے۔ اٹھارویں ترمیم کے بعد کافی مسائل کا سامنا ہوا جس کے باعث وزارت صحت کا قیام عمل میں لایا گیا۔ صوبوں کے ساتھ مل کر ہم بہتر انداز میں ہیلتھ کے شعبہ میں کام کرنا چاہتے ہیں، اسی طرح لیڈی ہیلتھ ورکر پروگرام پر صوبوں کو مسائل کا سامنا ہے،  وفاق نے ان کی مدد کرنے کی حامی بھری ہے۔  صوبائی وزرا نے وزیر اعظم سے ملاقات کی ہے جس پر انہوں نے لیڈی ہیلتھ ورکر پروگرام پر صوبوں کی مدد کی یقین دہانی کروائی ہے۔ اسی طرح نیوٹریشن کے حوالہ سے مرکز اپنا کردار ادا کرے گا۔ صوبائی مشیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے کہا کہ ہم وفاقی حکومت کے رابطے میں ہیں ہم مل کر صحت کے شعبہ میں بہتری لانا چاہتے ہیں وزیر اعظم سے میں پنجاب کے لیڈی ہیلتھ ورکر ز کیلیے مدد مانگی ہے جس پر انہوں نے حامی بھری ہے گلگت بلتستان کیلیے 250 بیڈز کے ہسپتال کیلیے بھی وزیر اعظم نے حامی بھر لی ہے۔ ہم نرسنگ کے شعبہ میں بھی بہت کام کر رہے ہیں۔ نرسنگ سکولز کو نرسنگ کالجز کا درجہ دے دیا گیا ہے۔ تا کہ ہماری نرسز  بھی پی ایچ ڈی کر سکیں۔ ڈاکٹر ظفر مرزا نے کہا کہ گورنمنٹ کی جانب سے  دوائیوں  کی قیمتیں کم گئی ہیں، ہم نیشنل میڈیسن پالیسی بنانے جا رہے ہیں. ذمہ دار کمپنیوں کو فائدہ ہو گا جبکہ جعلی ادویات بنانے والی کمپنی کو بند کیا جائے گا۔

ظفر مرزا

مزید :

صفحہ آخر -