پاکستان میں کاروباری سرگرمیوں کا فروغ اور مینو فیکچرنگ سیکٹر کی ترویج اولین ترجیح ہیں: عمران خان 

پاکستان میں کاروباری سرگرمیوں کا فروغ اور مینو فیکچرنگ سیکٹر کی ترویج اولین ...

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک،نیوز ایجنسیاں) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ملک میں کاروباری سرگرمیوں کا فروغ اورمینوفیکچرنگ سیکٹر کی ترویج حکومت کی اولین ترجیح ہے،معاشی مشکلات پر قابو پانے اور معیشت کے استحکام کیلئے حکومت اور بزنس کمیونٹی کے مابین موثر اشتراک کی ضرورت ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بزنس کمیونٹی کے نمائندگان عقیل کریم ڈھیڈی، محسن سنگانی، احمد چنائے، دارو خان، زبیر طفیل، زبیر موتی والا، جاوید بلوانی، علی حبیب اور ایس ایم منیر سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ وزیر توانائی عمر ایوب، مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ، وزیر مملکت حماد اظہر، ڈاکٹر عشرت حسین، مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد، چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی بھی ملاقات میں موجود تھے۔بزنس کمیونٹی کے نمائندگان نے حکومت کی جانب سے جاری معاشی اصلاحات پر تجاویز پیش کیں۔بزنس کمیونٹی کے نمائندگان نے کہا کہ معاشی اصلاحات کے عمل میں کاروباری برادری حکومت کے ساتھ کھڑی ہے اور معاشی اصلاحات کے عمل کو آگے بڑھانے میں مکمل تعاون کرے گی۔بعدازاں وزیراعظم عمران خان سے چین کی بارہویں این پی سی خارجہ امور کمیٹی کی نائب چیئرمین زاؤ بائی جی،چائینز اکیڈمی آف سوشل سائنسزکے بیلٹ اینڈ روڈ انیشیٹوانٹرنیشنل تھنک ٹینک کی ایڈوائزری کمیٹی کے چیئرمین اور سی اے ایس ایس -آر ڈی آی کی ایڈوائزری کمیٹی کے چیئرمین نے ملاقات کی۔اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان مختلف شعبوں میں چین کے تجربے اور مہارت سے سیکھنا چاہتا ہے، پاکستان سی پیک منصوبوں کو بہت اہمیت دیتا ہے  اور تمام سطحوں پر تعاون کو بہتر بنانے کیلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں خاص طور پر جب سی پیک منصوبہ اپنے دوسرے مرحلے میں داخل ہوگیا ہے جس میں زراعت، سماجی اقتصادی ترقی شامل ہیں، عوامی اور نجی شعبے کے کاروباری اداروں کے درمیان ہموار تعاون کو یقینی بنانے کیلئے وزیر اعظم ہاؤس میں خصوصی سیل قائم کیا جارہا ہے۔ڈاکٹرزاؤ بائی جی کے ساتھ مسٹر فانگ کال وائس چیئرمین اور ممبر پارٹی لیڈر شپ گروپ آف چائینز اکیڈمی آف سوشل سائینز،چیئرمین چائینہ اورسیز پورٹس ہولڈنگ کمپنی لمیٹڈ مسٹر باؤ جانگ جانگ،چیئرمین ہوانگ شان دووئی بائیولوجی کارپوریشن لمیٹیڈ مسٹرگوانگ ہوئی چن،چیئرمین ووہان لینڈنگ میڈیکل ہائی ٹیک کارپوریشن لمیٹیڈ مسٹر شیاؤ رونگ سن،صدر چن جیان چھنگ ٹی وی سکائی مسٹر جیان چھنگ چن،چیئرمین پاکستان چائینز انٹر پرائزاز سروسز کارپوریشن لمیٹیڈ ژی ہائی وانگ اور ڈائریکٹر آر ڈی آی  سیکرٹریٹ مسٹر ون چھنگ شو بھی ملاقات میں موجود تھے۔وزیراعظم نے کہا کہ یہ بات بہت اطمینان بخش ہے کہ سدا بہار اور ہر آزمائش پر پورا اترنے والی پاک چین دوستی ایک مضبوط معاشی شراکت داری میں تبدیل ہو رہی ہے۔علاوہ ازیں وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت آزاد جموں و کشمیر کے مختلف ترقیاتی منصوبوں، سیاحت کے فروغ  اور دیگر اہم معاملات پر اعلیٰ سطحی اجلاس ہوا۔ اجلاس میں وزیر برائے امور کشمیر و گلگت بلتستان علی امین گنڈا پور، وزیر منصوبہ بندی مخدوم خسرو بختیار، وزیرِ آبی وسائل فیصل واؤڈا، مشیر برائے ماحولیاتی تبدیلی ملک امین اسلم، وزیر اعظم آزاد جموں و کشمیر راجا فاروق حیدر، معاون خصوصی برائے سماجی تحفظ و تخفیفِ غربت ڈاکٹر ثانیہ نشتر، متعلقہ وفاقی سیکرٹریز، چیف سیکرٹری آزاد جموں و کشمیر و دیگر سینئر افسران شریک ہوئے۔اجلاس میں وزیر اعظم کو نیلم جہلم اور کوہالہ پراجیکٹ کے معاملات کا جائزہ لینے کیلئے قائم کردہ کمیٹی کی کاروائی اوراب تک کی پیش رفت پر تفصیلی بریفنگ دی گئی جبکہ منگلا ڈیم ریزنگ (توسیع) پراجیکٹ سے متعلق معاملات کے حل کے لئے کمیٹی تشکیل دینے کی منظوری دی گئی۔اجلاس میں لائن آف کنٹرول کے متاثرین کی بحالی اور فلاح و بہبود کے حوالے سے وفاقی حکومت کے منصوبوں، ایل او سی متاثرین کو صحت انصاف کارڈ کی فراہمی، مانسہرہ مظفرآباد منگلا میرپور  (فور ایم) پراجیکٹ، نیلم جہلم اور کوہالہ پراجیکٹ، منگلا ڈیم توسیع منصوبے سے متعلقہ معاملات کے علاوہ آزاد جموں کشمیر میں سیاحت کے فروغ کے حوالے سے گفتگوہوئی۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ آزاد کشمیر میں سیاحت کا بے انتہا پوٹینشل ہے جس کو برؤے کار لانے اور فروغ دینے کی اشد ضرورت ہے۔انہوں نے کہا کہ بیرون ملک مقیم پاکستانی آزاد جموں و کشمیر کا سب سے بڑا اثاثہ ہیں ان کے مسائل کے حل پر خصوصی توجہ دی جائے،نیشنل ٹورازم کوارڈینیشن بورڈ کی مشاورت سے آزاد جموں و کشمیر میں سیاحت کے فروغ اور خصوصا سیاحت کے شعبے میں نجی شعبے کی حوصلہ افزائی و سرمایہ کاری کیلئے مفصل لائحہ عمل تشکیل دیا جائے جبکہ وزیر اعظم آزاد جموں و کشمیر راجا فاروق حیدر نے کہا کہ حکومت پاکستان کی جانب سے نئی ویزہ پالیسی آزاد کشمیر میں سیاحت کے فروغ میں معاون ثابت ہو رہی ہے۔وزیر اعظم آزاد جموں و کشمیر راجا فاروق حیدر نے کشمیر کا مسئلہ پرزور طریقے سے عالمی سطح پر اٹھانے اور آزاد جموں وکشمیر اور گلگت بلتستان کے عوام کو درپیش مسائل کے حل میں وزیر اعظم عمران خان کی ذاتی دلچسپی اور کاوشوں پر ان کا شکریہ ادا کیااور کہا کہ بین الاقوامی سطح پر کشمیر کا مسئلہ اجاگر کرنے، بھارتی جارحیت کا مقابلہ کرنے، آزاد کشمیر کو ترقیاتی کونسل سمیت مختلف فورمز میں شامل کرنے، تعمیر و ترقی کیلئے مالی معاونت فراہم کرنے اور مسائل کے حل کے سلسلے میں وفاقی حکومت کے تعاون کے مشکور ہیں۔اس موقع پر وزیر اعظم آزاد جموں و کشمیر نے وزیر اعظم عمران خان کوآزاد کشمیر کا دورہ کرنے اورآزاد جموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی سے خطاب کی بھی دعوت دی۔ دریں اثناء وزیراعظم عمران خان سے وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے ملاقات کی، ریلوے میں جاری ترقیاتی منصوبوں اور بجٹ کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا، شیخ رشید نے نئی ٹرین سر سید ایکسپریس کے افتتاح کیلئے وزیر اعظم کو 30 جون کیلئے دعوت دی۔وزیراعظم عمران خان سے ڈپٹی سپیکر قومی اسمبلی قاسم خان سوری سمیت ارکان قومی اسمبلی میں میر خان محمد جمالی، منورہ بی بی، غلام بی بی بھروانہ اور سردار نصر اللہ دریشک نے ملاقات کی۔وزیر اعظم عمران خان سے ان کے معاون خصوصی برائے صحت ڈاکٹر ظفراللہ مرزا، صوبائی وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد اور وزیر صحت آزاد جموں و کشمیر ڈاکٹر محمد نجیب نقی نے بھی ملاقات کی۔ ملاقات میں صحت سے متعلقہ امور خصوصا سرکاری ہسپتالوں میں صحت کی سہولیات کی فراہمی میں بہتری لانے کے حوالے سے کی جانے والی اصلاحات سے متعلقہ امور پر تبادلہ خیال ہوا۔

 وزیراعظم عمران خان 

مزید :

صفحہ اول -