وزیراعظم کوچاہیے تھافون کرکے سرفرزا ز کو ہدایات دیتے:نجم سیٹھی

وزیراعظم کوچاہیے تھافون کرکے سرفرزا ز کو ہدایات دیتے:نجم سیٹھی

  

لندن(آن لائن) سابق چیئرمین پی سی بی نجم سیٹھی نے کہا ہے کہ وزیر اعظم عمران کو پاک بھارت میچ کے حوالے سے اگر سرفراز احمد کو ہدایات دینی تھیں تو سر عام دینے کی بجائے فون کرکے دے دیتے۔یاد رہے کہ 16 جون کو ورلڈ کپ کے سب سے اہم پاک بھارت میچ سے قبل وزیر اعظم عمران خان نے سوشل میڈیا پر کپتان سرفراز احمد کو جیت کیلئے مشورے دیئے تھے۔ انہوں نے اپنے ٹوئٹ میں کہا تھا کہ’وہ آج سپیشلسٹ بلے بازوں اور باؤ لرز کو کھلا ئیں، اس میچ کے لیے پاکستان کو ریلو کٹوں پر انحصار نہیں کرنا چاہئے‘۔سابق چیئرمین پی سی بی نجم سیٹھی نے ایک انٹر ویو میں کہا کہ عمران خان کے ٹویٹ سے سرفراز احمد پر بلاوجہ کا پریشر آگیا اور پھر بات نہ ماننے کی وجہ سے تنقید بھی ہوئی۔ نجم سیٹھی نے مزید کہا کہ پاکستان ٹیم کی کارکردگی پر ہرکوئی دکھی ہے لیکن حوصلہ نہیں ہارنا چاہئے، پاکستان کرکٹ بورڈ کی انتظامیہ ٹیم کو خاص سپورٹ نہیں کررہی۔ انہوں نے کہا کہ بورڈ کی وجہ سے ٹیم کے کپتان، کوچ اور پلیئرز سب عدم تحفظ کا شکار ہیں، ہر کسی کو یہ ڈر ہے کہ وہ ورلڈ کپ کے بعد رہے گا یا نہیں،ٹیم مینجمنٹ کی ذمہ داری ہے کہ وہ ٹیم کو متحد رکھے۔نجم سیٹھی نے دعوی کیا کہ کھلاڑیوں نے بڑے بڑے لوگوں سے تعلقات بنائے رکھنے کے لیے پبلک ریلیشنز ایجنٹ رکھ لیے ہیں۔دریں اثنائنجم سیٹھی نے قومی ٹیم کے ڈریسنگ روم کے ماحول کے حوالے سے آنے والی خبروں کی تحقیقات کرانے کا مشورہ دیتے ہوئے کہا ہے کہ پتہ چلنا چاہئے کہ ڈریسنگ روم کے حالات کیا ہیں۔سابق چیئرمین پی سی بی نجم سیٹھی نیڈریسنگ روم کے ماحول کی تحقیقات کرانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ قومی ٹیم کلک نہیں ہوئی،ٹیم کی باڈی لینگویج سے پتا چلتا ہے کہ کچھ گڑبڑ ہے۔نجم سیٹھی کا مزید کہنا تھا کہ ورلڈکپ ابھی جاری ہے اس لیے مزید تنقید اور مشکلات بڑھا دے گی،اس وقت کھلاڑیوں کو حوصلہ دینے کی ضرورت ہے۔سابق چیئرمین نجم سیٹھی نے پی سی بی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ پی سی بی کی مینجمنٹ کی جانب سے بھی کچھ غلطیاں ہوئیں ہیں جو نہیں ہونی چاہئے تھیں۔

انہوں نے کہا کہ کرکٹ کمیٹی بنائی گئی جس میں وسیم اکرم کو شامل کرکیانکے جانی دشمن محسن خان کو اس کمیٹی کا سربراہ بنا دیا گیا۔واضح رہے کہ بھارت سے پاکستان کرکٹ ٹیم کی شکست کے بعد کپتان سرفراز احمد کی طرف سے وہاب ریاض، امام الحق اور عماد وسیم پر گروپنگ کا الزام لگانے کی خبر آئی تھی۔

مزید :

کھیل اور کھلاڑی -