صوبے کی تاریخ میں بڑا بجٹ پیش کیا کوئی نیا ٹیکس نہیں لگا یا گیا : سلطان محمد خان

صوبے کی تاریخ میں بڑا بجٹ پیش کیا کوئی نیا ٹیکس نہیں لگا یا گیا : سلطان محمد ...

  

پشاور( سٹاف رپورٹر)خیبر پختونخوا کے وزیر قانون و پارلیمانی امور سلطان محمد خان نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت نے صوبے کی تاریخ میں بڑا بجٹ پیش کیا ہے جس میں کوئی بھی نیا ٹیکس نہیں لگایا گیا ہے اور موجودہ ٹیکسوں میں کمی کی گئی ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاورکے مقامی ہوٹل میں صوبائی اراکین اسمبلی کے لئے انڈر سٹینڈنگ دی بجٹ پراسس اینڈ اینالسز(Understanding the budget process and asalysis) کے متعلق منوقدہ سمینار کے موقع سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔سیمینار کا اھتمام یو این ڈی پی کے تعاون سے کیا گیا تھا۔وزیر قانون نے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کی صوبائی حکومت کا مالی سال-20 2019 میں 900 بلین کا بجٹ پیش کرنا اور نئے ٹیکس نہ لگانا بڑا کارنامہ ہے انہوں نے کہا ہے کہ موجودہ ٹیکسوں میں بھی کمی کردی گئی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ صوبائی حکومت نے بندوبستی اضلاع کے ساتھ نئے ضم شدہ اضلاع کی ترقی کے لئے بھی 162 ارب روپے مختص کیے ہیں ۔جس سے ضم شدہ اضلاع میں ترقی میں ہو گی۔سلطان محمد خان نے سمینار انعقاد پر لئے صوبائی اسمبلی سیکرٹریٹ کے متعلقہ حکام اور یو این ڈی پی کے چیف ٹیکنیکل ایڈوائزرز ز ڈیرن نالسی کے تعاون اور کاوشوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے سیمینار سے صوبائی اسمبلی اراکین کے بجٹ کے کچھ ٹیکنیکل ٹرمزکو اچھی طرح سمجھ کر مثبت تجاویز دینے کی صورت میں صوبے کی ترقی میں مددگار ثابت ہو سکتے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ ہم سب پر عوام کا حق ہے کہ اس طرح کے سیمینار سے استفادہ کرتے ہوئے عوام کی ترقی کے لئے کام کریں۔سیمینار میں ڈاکٹر ساجد آمین جاوید( ریسرچ فیلو سسٹینبل ڈیولپمنٹ پالیسی) نے بجٹ کو سمجھنے کے حوالے سے تفصیلی پریزنٹیشن پیش کی جس کے دوران صوبائی اراکین نے مختلف سوالات پوچھے اور سمجھنے کی کوشش بھی کی۔ سیمینار میں اراکین صوبائی اسمبلیکی بڑی تعداد نے شرکت کی اور اس موقع پر تمام اراکین نے یو این ڈی پی کے تعاون کا شکریہ ادا کیا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -