وزیراعظم مقدس ہستیوں پر بات کرتے ہوئے احتیاط کریں،عبدالرحمن سلفی

وزیراعظم مقدس ہستیوں پر بات کرتے ہوئے احتیاط کریں،عبدالرحمن سلفی

  

کراچی(پ ر) جماعت غرباء اہلحدیث پاکستان کے امیر رئیس جامعہ ستاریہ اسلامیہ مولانا عبدالرحمن سلفی، مولانا پروفیسر حافظ محمد سلفی، علامہ ڈاکٹر عامر عبداللہ محمدی، مولانا مفتی انس مدنی، شیخ الحدیث مولانا محمود احمد حسن، مولانا عبدالعزیز نورستانی، مولانا مفتی عبدالوکیل ناصر، مولانا زاہد ھاشمی الاظہری، مولانا مفتی جاسم سلفی، مولانا مفتی صہیب شاہد، مولانا فضل ربی، مولاناجمالدین سلفی، مولانا سید عبدالرحیم شاہ و دیگر اہلحدیث علماء مفتیان نے اپنے مشترکہ بیان میں وزیراعظم عمران خان کی تقریر میں صحابہ کرامؓ سے متعلق بعض نازیبا ریماکس پر افسوس کا اظہارکرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم کو صحابہ کرامؓ جیسی مقدس ہستیوں پر بات کرتے ہوئے احتیاط اور ان کے تقدس کا لحاظ رکھنا چاہے تھا ان کے غیرحقیقی ریماکس سے قوم کی دل آزاری ہوئی انہیں چاہیے کہ وہ تاریخی واقعات کا قرآن و حدیث کے حوالے سے مطالعہ کریں اور نازیبا ریماکس پر اللہ تعالی سے معافی مانگیں۔ علماء کرام و مفتیان نے کہا جنگ بدر کے واقعہ سے متعلق صحابہ کرامؓ کی نیت پر اظہار خیال نہیں کیا جاسکتا وہ انکی اجتہادی غلطی تھی جبکہ لوٹ مار کرنے کا لفظ بھی صحابہ کرامؓ پر چسپاں کرنا بے ادبی و گستاخی کے مترادف ہے۔ علما و مفتیان کرام نے کہا جنگ بدر کے حوالے سے صرف 313 صحابہ کرامؓ کی شرکت کے حوالے سے بھی انکا تجزیہ صحیح نہیں کیونکہ حضرت کعبؓ کہتے ہیں کہ یہ ایک ہنگامی صورتحال تھی اس لیے عام صحابہؓ کو اطلاع نہ ہوسکی لہٰذا عام صحابہؓ کو اس حوالے سے تنقید کا نشانہ بنانا تاریخ سے اور صحابہ کی شخصیت وسیرت سے ناواقفیت کی دلیل ہے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -