وزیراعلیٰ کا بجٹ سیشن کے بعد ہر ضلع کا دورہ کرنے اور موقع پر جا کر ترقیاتی منصوبوں کا جائزہ لینے کا اعلان

وزیراعلیٰ کا بجٹ سیشن کے بعد ہر ضلع کا دورہ کرنے اور موقع پر جا کر ترقیاتی ...
وزیراعلیٰ کا بجٹ سیشن کے بعد ہر ضلع کا دورہ کرنے اور موقع پر جا کر ترقیاتی منصوبوں کا جائزہ لینے کا اعلان

  

لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن )  وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار سے آج گوجرانوالہ ڈویژن کے اراکین صوبائی اسمبلی نے ملاقات کی۔ وزیراعلیٰ آفس میں ہونے والی ملاقات میں صوبے کے عوام کو بنیادی ضروریات اور بہترین سروس ڈلیوری فراہم کرنے اور عوامی مسائل کے حل کیلئے تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔ اراکین اسمبلی نے فرداً فرداً اپنے حلقوں، علاقوں اور دیگر عوامی مسائل سے آگاہ کیا۔ وزیراعلیٰ نے اراکین اسمبلی کے مسائل خود نوٹ کئے اور ان کے حل کیلئے موقع پر ہی احکامات جاری کئے۔ وزیراعلیٰ نے بجٹ سیشن کے بعد پنجاب کے ہر ضلع کا دورہ کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ میں صوبے کے چپے چپے کا وزٹ کروں گا اور موقع پر جا کر ترقیاتی منصوبوں کا جائزہ لوں گا۔انہوں نے کہا کہ اراکین اسمبلی میرے ساتھی ہیں اور ان کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کئے جائیں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ اراکین اسمبلی کی عزت میری عزت ہے اور ہم سب نے ٹیم ورک کے طورپر صوبے کے عوام کی خدمت کرنی ہے،وزارت اعلیٰ صرف عہدہ نہیں بلکہ بہت بڑی ذمہ داری ہے اور عوام کی خدمت مشن اور اوڑھنا بچھونا ہے۔

انہوں نے کہا کہ سابق حکمرانوں نے صوبے کے عوام کی اصل ترجیحات کو نظر انداز کیا اور ذاتی نمائش کیلئے منصوبوں پر قومی وسائل ضائع کئے، لیکن اب شوبازی کا دور گزر چکا ہے، تحریک انصاف کی حکومت نے عوام کی حقیقی خوشحالی کیلئے سماجی شعبوں کی ترقی پر فوکس کیا ہے۔ وزیراعلیٰ نے کھیلوں کو فروغ دینے کیلئے صوبے کی ہر تحصیل میں سٹیڈیم کے قیام کا اعلان کیا اور کہا کہ جس تحصیل میں سٹیڈیم موجود نہیں، وہاں پر ترجیحی بنیادوں پر سٹیڈیم بنایا جائے گا تاکہ نوجوانوں کو کھیلوں کی سرگرمیوں کی جانب راغب کیا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ اراکین اسمبلی کی مشاورت سے تعلیم، صحت اور پینے کے صاف پانی کی فراہمی کے منصوبوں کیلئے فنڈز دیں گے اور گوجرانوالہ ڈویڑن کی سڑکوں کی تعمیر و مرمت کیلئے بھی وسائل مہیا کئے جائیں گے۔ وزیراعلیٰ نے صوبے میں ہر طرح کے مافیا کے خلاف بلاامتیاز کارروائی کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ عوام کو لوٹنے والے مافیاز کو کسی صورت برداشت نہیں کیا جائے گا۔ہماری حکومت نے طاقتور قبضہ مافیا کے خلاف بلاامتیاز کارروائی کی ہے اور مافیا کو نکیل ڈالی ہے۔ وزیراعلیٰ نے عوامی شکایات کے ازالے کیلئے صوبے میں 115 نئے اراضی سینٹرز کے قیام کا اعلان کیا اور کہا کہ یہ سینٹرز دسمبر تک فعال ہو جائیں گے جس سے لوگوں کو بہت سہولت میسر آئے گی جبکہ اس کے ساتھ موبائل اراضی سینٹرز کا قیام بھی عمل میں لایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ عوام سے قریبی رابطہ ہے اور ان کے مسائل اپنے سمجھ کر حل کرتا ہوں،میں اور میری ٹیم صوبے کے عوام کو جوابدہ ہیں۔ سیالکوٹ، میانوالی اور رحیم یار خان میں سیف سٹی کی طرز پر سی سی ٹی وی کیمرے لگائے جائیں گے۔ عوام کے جان ومال کے تحفظ کیلئے ہر ممکن اقدام اٹھائیں گے۔ منتخب نمائندوں کی مشاورت سے عوام کی ترقی و خوشحالی کے پروگرام پر عملدرآمد کیا جائے گا۔

وزیراعلیٰ نے کہاکہ صوبے کے عوام کو بنیادی سہولتیں فراہم کرنے کیلئے آخری حد تک جاوں گا۔پنجاب میں ہر کام میرٹ پر ہوگا۔ماضی میں اقرباء پروری، کرپشن اور سفارشی کلچر نے اداروں کو تباہ کیا۔ انہوں نے کہاکہ سابق حکمرانوں نے صرف ذاتی مفادات کو مقدم سمجھا اورگزشتہ دور میں قومی مفادات کو نظر انداز کیا گیا۔ کرپشن کر کے ذاتی بنک بیلنس میں اضافہ کیا گیا اور ملک غریب سے غریب تر ہوتا گیا۔ انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم عمران خان کی کرپشن کے خلاف جنگ ہر پاکستانی کی آواز ہے اور وزیر اعظم عمران خان نے کرپشن کے بڑے بڑے بتبے نقاب کئے ہیں۔پاکستان کے22  کروڑ عوام بدعنوان عناصر کا کڑا احتساب چاہتے ہیں اور ملک کی بقا کرپشن اور کرپٹ عناصر کی بیخ کنی میں ہے۔ انہوں نے کہا کہ سابق دور میں کرپشن نے ہر ادارے میں پنجے گاڑے اور ماضی کے حکمرانوں کے دور میں کرپشن کے ریکارڈ قائم کئے گئے۔ نیا پاکستان شفاف اورکرپشن سے پاک ہو گا۔

ان کا کہنا تھا منزل کا تعین ہو چکا ہے، کسی رکاوٹ کو بدلتے پاکستان کی راہ میں حائل نہیں ہونے دیں گے۔اراکین اسمبلی نے وزیراعلیٰ کی صوبے کے عوام کیلئے خدمات کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ آپ بہت محنت سے صوبے کے عوام کی خدمت کر رہے ہیں۔ آپ کے دروازے منتخب نمائندوں کیلئے کھلے ہیں اور آپ سب کی بات سنتے ہیں اور ہم آپ کے سامنے اپنے دل کی بات کرتے ہیں اور آپ ہمارے کام بھی کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آپ کی قیادت میں پنجاب ترقی کرے گا اور عوام خوشحال ہوں گے۔ صوبائی وزرا محمد اخلاق، سید سعیدالحسن شاہ، باو¿ محمد رضوان، مشیر عون چوہدری، چیف وہپ پنجاب اسمبلی سید عباس علی شاہ، چیف سیکرٹری، ایڈیشنل چیف سیکرٹری، انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب، سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو، پرنسپل سیکرٹری وزیراعلیٰ، متعلقہ محکموں کے سیکرٹریز، کمشنر گوجرانوالہ ڈویڑن، آر پی او گوجرانوالہ، گوجرانوالہ، منڈی بہاو¿الدین، گجرات، حافظ آباد، نارووال اور سیالکوٹ اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز اور ڈی پی اوز بھی موقع پر موجود تھے ۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -