”خبردار!!! یہ سورج گرہن مت دیکھنا کیونکہ۔۔۔“ ماہر امراض چشم نے تشویشناک بات بتا دی

”خبردار!!! یہ سورج گرہن مت دیکھنا کیونکہ۔۔۔“ ماہر امراض چشم نے تشویشناک بات ...
”خبردار!!! یہ سورج گرہن مت دیکھنا کیونکہ۔۔۔“ ماہر امراض چشم نے تشویشناک بات بتا دی

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) ماہرین فلکیات نے بھی 21 جون کو ہونے والے سورج گرہن کو طاقت ور ترین قرار دیا ہے تو ماہرین امراض چشم نے 21 جون کو ہونے والے سورج گرہن کو انسانی آنکھوں کیلئے خطرناک قرار دیدیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق جب سورج کی سطح کا 99 فیصد چھپ جاتا ہے ، تو 1 فیصد رہ جانے والا حصہ رٹینا کے آنکھ کے خلیوں کو نقصان پہنچانے کیلئے کافی ہوتا ہے اور جیسے ہی یہ روشنی اور تابکاری آنکھ پر پڑتی ہے تو ریٹنا کے ٹشوز جھلس جاتے ہیں۔ ماہرین کے مطابق سورج گرہن کا نظارہ براہ راست دیکھنے والوں کی آنکھیں خراب ہوجانے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں اور اس کی وجہ سے بینائی بھی متاثر ہوسکتی ہے۔

سائنس کے مطابق اس سارے عمل کو سولر رٹینا پیتھی کہتے ہیں اور اس دوران روشنی کو محسوس کرنے والے خلئے میں سے ایسے کیمیکل نکلتے ہیں جو رٹینا کو نقصان پہنچاتے ہیں، چونکہ یہ عمل تکلیف دہ نہیں اس لئے نظر خراب ہونے کا احساس نہیں ہوتا۔ ماہرین کے مطابق سورج گرہن کا سب سے زیادہ خطرہ آنکھوں کو ہی ہوتا ہے کیونکہ گرہن لگنے کے دوران سورج سے انفراریڈ، الٹراوائیلٹ نامی سرخ شعاعیں نکلتی ہیں جو انسانی آنکھ کو بہت زیادہ متاثر کرتی اور اس سے قرنیہ ہمیشہ کیلئے متاثر ہوتا ہے۔

ماہرین کا مزید کہنا ہے کہ سورج گرہن کے دوران شعاعیں آپ کے قرنیہ اور ریٹنا کو جلا سکتی یا بھاپ پیدا کرسکتی ہیں جس سے آنکھ کو ناقابل تلافی نقصان پہنچ سکتا ہے۔ ماہرین کے مطابق جب تقریبا مکمل سورج گرہن ہو یا اندھیرا ہوجائے تو آپ تھوڑی دیر کے لئے سورج کو دیکھ سکتے ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -