قاضی فائز عیسیٰ ریفرنس پر اپوزیشن کا بروقت ردعمل خوش آئند، میاں افتخار

قاضی فائز عیسیٰ ریفرنس پر اپوزیشن کا بروقت ردعمل خوش آئند، میاں افتخار

  

پشاور(سٹی رپورٹر) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل میاں افتخارحسین نے کہا ہے کہ قاضی فائز عیسیٰ کے خلاف ریفرنس کو کالعدم قرار دینا ایک تاریخی فیصلہ ہے، اپوزیشن کا اس معاملے پر مشترکہ اور بروقت ردعمل بھی خوش آئند ہے۔ باچاخان مرکز پشاور سے جاری بیان میں اے این پی کے مرکزی سیکرٹری جنرل میاں افتخارحسین نے کہا کہ معزز جج کے خلاف بدنیتی پر مبنی بے بنیاد ریفرنس بنا کر اعلیٰ عدلیہ کو بدنام کرنے کی کوشش کی گئی، ریفرنس کالعدم قرار دینا سچائی، ایمانداری، قانون و انصاف کی حکمرانی اور اتحاد کی جیت ہے جس سے نااہل اور نالائق حکومت کی ناکامیوں کی فہرست میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔ میاں افتخارحسین نے کہاکہ اسیٹ ریکوری یونٹ (اے آر یو) کی حقیقت سب کے سامنے آچکی ہے۔ ایک خود ساختہ ادارے کو ناپسند افراد کے خلاف استعمال کیا جارہا ہے اسے فوری طور پر بند کرنا چاہیئے۔ قاضی فائزعیسیٰ کیس قومی اور عدلیہ کی آزادی کا معاملہ تھا، تمام جمہوریت پسند قوتیں عدلیہ سمیت دیگر اداروں کی آزادی کے ساتھ کھڑی ہے لیکن ریفرنس کالعدم قرار دینے کے باوجود اب بھی حکومتی بغض اور اوچھے ہتھکنڈوں کا خدشہ موجود ہے۔ ہارنے کے باوجود حکومتی حلقے اس فیصلے سے مطمئن نظر آرہے ہیں۔ آرٹیکل 209کے تحت دوبارہ ازخودنوٹس کی کارروائی کا عندیہ بھی تشویشناک ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایف بی آر ایک حکومتی ادارہ ہے، تمام تفصیلات دینے کے بعد نوٹسز حیران کن ضرور ہے لیکن عدالتوں سے انصاف کی توقع بھی ہے۔ عوامی نیشنل پارٹی سمیت تمام جمہوری قوتیں حق، سچائی اور انصاف کی حکمرانی کے ساتھ کھڑی ہیں۔ انہوں نے وکلا برادری کو مبارک باد پیش کرتے ہوئے کہا کہ ان کے اتحاد اور عزم نے فاشزم کی سوچ کو شکست دی، پاکستان بار کونسل اور صوبائی بار کونسلز کو شاندار کردار پر خراج تحسین پیش کرتے ہیں، وکلا برادری نے ایک بارپھر ایک نازک موڑ پر تاریخی کردار ادا کیا ہے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -