پانی ذخیرہ کرنے کی صلاحیت  صرف 30دن کے برابر رہ گئی

  پانی ذخیرہ کرنے کی صلاحیت  صرف 30دن کے برابر رہ گئی

  

کراچی(این این آئی)زرعی مقاصد اور سستی بجلی کی پیداوار کیلئے پانی ذخیرہ کرنے کی ملکی صلاحیت کم ہوتے ہوتے صرف 30 دن کے برابر رہ گئی ہے، اس تشویشناک صورتحال کے پیش نظر وفاقی حکومت نے پانی ذخیرہ کرنے کی صلاحیت میں اضافہ کرنے کا ہدف مقرر کیا ہے جس سے پانی ذخیرہ کرنے کی ملکی صلاحیت 13.68 ملین ایکڑ فٹ سے بڑھ کر 14.68 ملین ایکڑ فٹ تک پہنچ جائے گی، پانی کے ذخیرے میں اضافہ ہونے سے پانی کی تقسیم پر چاروں صوبوں میں محاذ آرائی میں بھی کمی ہو جائے گی۔ وزارت منصوبہ بندی و ترقی کی بجٹ دستاویز 2021-22 کے مطابق پاکستان نے واٹر پالیسی 2018 کے تحت ملک میں پانی ذخیرہ کرنے کی صلاحیت میں 10 ملین ایکڑ فٹ اضافہ کرنے کا ہدف رکھا ہے جس کیلئے دیامر بھاشا ڈیم اور مہمند ڈیم کے علاوہ 518 چھوٹے اور درمیانے ڈیم تعمیر کئے جائیں گے، اس وقت 85 چھوٹے اور درمیانے ڈیم زیر تعمیر ہیں جنہیں 30 جون 2021 تک مکمل کرلیا جائے گا جبکہ 20 جون 2022 تک مزید 28 چھوٹے اور درمیانے ڈیم مکمل کرنے کا ہدف مقرر کردیا گیا ہے۔ پبلک سیکٹر ڈ ویلپمنٹ پروگرام میں وفاقی حکومت نے ڈیموں کی تعمیر کیلئے 110 ارب روپے مختص کئے ہیں جبکہ چاروں صوبے چھوٹے اور درمیانے ڈیموں کی تعمیر کیلئے الگ سے بھی رقوم مختص کریں گے۔ ڈیموں کی تعمیر پر 200 ارب روپے خرچ کرنے کا ہدف مقرر ہے جس کیلئے عالمی بینک، ایشیائی ترقیاتی بینک، ایشیائی انفراسٹرکچر اینڈ انویسٹمنٹ بینک اور اسلامی ترقیاتی بینک کے علاوہ دوست ممالک بھی فنڈز فراہم کریں گے۔

پانی ذخیرہ

مزید :

صفحہ اول -