نیب کراچی کا 5 کیسز کے  ریفرنس دائر کرنے کا فیصلہ

نیب کراچی کا 5 کیسز کے  ریفرنس دائر کرنے کا فیصلہ

  

کراچی(این این آئی)قومی احتساب بیورو (نیب)کراچی کے(بقیہ نمبر35صفحہ6پر)

 ریجنل بورڈ اجلاس میں 5 کیسز کے ریفرنس دائر کرنے جبکہ ایک سابقہ انکوائری کو تفتیش میں تبدیل کرنے سمیت اہم فیصلے کیے گئے۔ترجمان کے مطابق نیب کراچی کا بورڈ کا اجلاس ہوا،جس میں انکوائری،تحقیقات اور دیگر آپریشنل امور پر تبادلہ خیال اور فیصلے کیے گئے،ریجنل بورڈ نے5 کیسز کے ریفرنس دائرکرنے اور ایک سابق انکوائری کو تفتیش میں تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا۔تجویز کردہ کیسزمیں رقوم کا حجم 1400 ملین کے لگ بھگ روپے ہے،بورڈ نے بڑے پیمانے پر دھوکہ دہی اور عوامی شکایات پر گلشنِ دوزان ہاوسنگ پروجیکٹ سے متعلق میسرز کریم ہاؤسنگ نجی کمپنی کراچی اور دیگر کیخلاف ریفرنس دائرکرنیکا فیصلہ کیا،اس کیس میں شامل کل رقم 308 ملین روپے بنتی ہے جبکہ متاثرہ افراد کی تعداد251 کے لگ بھگ ہے۔ترجمان نیب کراچی کے مطابق بورڈ نے گلشن الٰہی منصوبے میں کریم ہاؤسنگ پرائیویٹ لمیٹڈ کراچی اور دیگر کیخلاف ریفرنس کا فیصلہ کیا ہے،کیس کے ملزم حاجی آدم جوکھیو اور لال محمد اسکیم33 میں واقع گلشنِ الٰہی کے پلاٹ حوالے نہ کرکے بڑے پیمانے پر دھوکہ دہی میں ملوث ہیں۔مالی لحاظ سے کل واجبات کا حساب کتاب روپے ہے جبکہ رقم 920.720 ملین جس میں 590 سے زیادہ متاثرین شامل ہیں، لیز یوٹیلائزیشن ڈپارٹ حکومت سندھ دیہہ گونڈ پاس میں 400 ایکڑ سرکاری اراضی کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا گیا۔بورڈ نے مجاز اتھارٹی کی منظوری کیلئے ریفرنس دائر کرنے کا فیصلہ کیا ہے، سرکاری ملازمین نے سندھ لینڈ کمیٹی کے ذریعہ دیہہ گوند پاس میں 400 ایکڑ رقبے پر مشتمل سرکاری اراضی کو غیر قانونی طور پر باقاعدہ بنایا تھا جوان کے دائرہ کار میں نہیں آتا تھا، سرکاری ملازمین نے اس عمل کے ذریعے حکومت کو لاکھوں روپے نقصان پہنچایاگیا۔

نیب کیسز

مزید :

ملتان صفحہ آخر -