مدرسے میں طالبعلم سے زیادتی کرنیوالا مفتی عزیز الرحمان 4 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے 

مدرسے میں طالبعلم سے زیادتی کرنیوالا مفتی عزیز الرحمان 4 روزہ جسمانی ریمانڈ ...
مدرسے میں طالبعلم سے زیادتی کرنیوالا مفتی عزیز الرحمان 4 روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے 

  

لاہور( ڈیلی پاکستان آن لائن ) لاہور کے علاقہ صدر کے مدرسے میں طالبعلم سے زیادتی کرنے والے مفتی عزیز الرحمان کو چار روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیا  گیا۔

تفصیلات کے مطابق پولیس نےمفتی عزیز الرحمان اور اس کے بیٹوں کو  کینٹ کچہری میں جوڈیشل مجسٹریٹ رانا ارشد علی کی عدالت میں پیش کیا اور عدالت سے ملزموں کو 14روزہ جسمانی ریمانڈ پر دینے کی استدعا کی ، جوڈیشل مجسٹریٹ نے پولیس کے ریمانڈ کی درخواست پر فیصلہ محفوظ کرلیا جس کے بعد پولیس ملزمان کو کینٹ کچہری سے لے کر روانہ ہو گی ۔ملزمان کو چہرے ڈھانپ کر کچہری پیش کیا گیا تھا ۔

بعد ازاں عدالت نے ملزم کا چار روزہ جسمانی ریمانڈ  دے دیا ، عدالت نے ملزم کا ڈی این اے ٹیسٹ کرانے کا بھی حکم دیا۔

ادھر نجی ٹی وی جیو نیوز نے پولیس ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ ملزم عزیز الرحمان نے اعتراف کیا کہ ویڈیو اس کی ہے جو صابر شاہ نے چھپ کر بنائی۔ ملزم نے تسلیم کیا کہ طابعلم صابر کو پاس کرنے کا جھانسہ دے کر زیادتی کی ویڈیو بنائی ، ویڈیو وائرل ہونے کے بعد خوف کا شکار ہو گیا تھا، بیٹوں نے صابر شاہ کو دھمکایا اور اسے کسی سے بات کرنے سے روکا۔

نجی ٹی وی کے مطابق پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزم عزیز نے بیان دیاکہ صابر شاہ نے منع کرنے کے باوجود ویڈیو وائرل کر دی ، مدرسہ کو چھوڑنا نہیں چاہتا تھا اس لئے وضاحتی ویڈیو بیان جاری کیا، مدرسے کے منتظمین اور مہتتم ویڈیو کے بعد مدرسہ چھوڑنے کا کہہ چکے تھے ۔

مزید :

جرم و انصاف -