بھارتی دھاگے کی درآمد سے ملکی صنعت تباہ ہوجائیگی:چیئرمین ایگر فورم

بھارتی دھاگے کی درآمد سے ملکی صنعت تباہ ہوجائیگی:چیئرمین ایگر فورم

لاہور(کامرس رپورٹر)چیئرمین ایگری فورم پاکستان کا کہنا ہے کہ بھارت سے دھاگہ امپورٹ کرنے سے ہماری ٹیکسٹائل صنعت تباہ ہونے کا ڈر ہے ۔ اسی طرح بھارت سے سبزیاں درآمد کرکے پاکستانی کھیت اور ٹنل فارمنگ تباہ کی جارہی ہے۔ آج صنعتکاروں کو احساس ہوگیا ہوگا کہ جب تک پاکستان اور بھارت کی صنعتی و زرعی پیداوار کی لاگت برابری کی سطح پر نہیں آتی۔ بھارت سے درآمدات پاکستان کو تباہ برباد کرنے کے مترادف ہے۔ حکومت کو بھی آنکھیں کھولنا ہونگی۔ کہ وہ پاکستان میں تیل، بجلی، کھاد، بیج وغیرہ کی قیمتیں بھارتی سطح تک لے کر آئیں۔ ورنہ جہاں پاکستان کی صنعت تباہ ہوگی وہاں پاکستان کے 2کروڑ ایکڑ کھیت بھی سونا اگلنا بند کردیں گے۔ بھارتی لابی جو حکومت کی صفوں میں موجود ہے وہ بغیر سوچے سمجھے بھارت کو ترجیح دینے کا مشورہ دے رہے ہیں۔ پاکستان میں چند ٹریڈر جنہوں نے پاکستانی چہرہ سجایا ہوا ہے دراصل وہ بھارتی ایجنٹ ہیں ۔

۔ اور بھارت کے مفادات کی خاطر پاکستان میں لابنگ کرتے ہیں اور اپنے آپ کو پاکستانی ظاہر کرتے ہیں۔ حالانکہ ان کی دن رات یہی کوشش ہے کہ پاکستان کی فیکٹریاں اور کھیت تباہ ہوجائیں۔ اور بھارت سے صنعتی و زرعی مال درآمد کیا جائے اور پاکستان کو بھارت کےلئے ایک منڈی بنا دیا جائے جس کی ضروریات بھارت پوری کرے۔ اور پاکستان سے جنگ لڑے بغیر اس ملک پر قبضہ کرلیا جائے۔چیئرمین ایگری فورم نے کہا کہ حکومت بھارت کو ترجیح دینے سے باز نہ آئی تو حکومت کو ہماری لاشوں پر سے گزر کر یہ کام کرنا ہوگا۔ جو ہم جیتے جی نہیں ہونے دیں گے۔

مزید : کامرس