حکومت کو بیماریوں کی روک تھام پر توجہ دینے کی ضرورت ہے،غیر ملکی طبی ماہرین

حکومت کو بیماریوں کی روک تھام پر توجہ دینے کی ضرورت ہے،غیر ملکی طبی ماہرین

لاہور( جنرل رپورٹر) حکومت کو بیماریوں کی روک تھام پر زیادہ توجہ دینے کی ضرورت ہے، ایک اچھا ریفرل سسٹم بنانے سے ٹیچنگ ہسپتالوں پر مریضوں کے رش کو کم کیا جاسکتا ہے خواتین ہیلتھ ورکرز کی گھروں کے اندر رسائی کو یقینی بنانے کے لئے سماجی رویوں میں تبدیلی کی ضرورت ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے انٹرنیشنل گروتھ سینٹر سے آئے ہوئے طبی ماہرین ڈاکٹر ظفراللہ چوہدری(بنگلہ دیش) اور ڈاکٹر جیفری ایس ہیم سے انسٹیٹیوٹ آف پبلک ہیلتھ میں صحت عامہ کی بہتری کے لئے بیماریوں کی روک تھام کے اقدامات اور پالیسی سازی کے حوالے سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر ڈین انسٹیٹیوٹ آف پبلک ہیلتھ پروفیسر ڈاکٹر معاذ احمد، ڈاکٹر شاہد ملک ، وبائی امراض کی روک تھام کی ماہر پروفیسر فرخندہ کوکب، چیف بیکٹریالوجسٹ ڈاکٹرزرفشاں طاہر اور ڈاکٹرز کی کثیر تعداد موجودتھی ڈاکٹر ظفراللہ چوہدری نے بیماریوں کی روک تھام اور دیہی علاقوں میں حاملہ خواتین اور بچوں کی صحت کے لئے کئے گئے اقدامات کے بارے اظہار خیال کیا انہوں نے کہا کہ صحت مند طرز زندگی کو فروغ دینے کے لئے اچھے پبلک ہیلتھ سسٹم کا ہونا ضروری ہے ڈاکٹر ظفراللہ چوہدری کا کہناتھا کہ بنگلہ دیش میں خواتین ہیلتھ ورکرز سائیکل پر چھوٹے چھوٹے دیہات تک پہنچ کر حاملہ خواتین اور بچوں کو پرائمری ہیلتھ کیئر فراہم کرتی ہیںدیہات میں کام کرنے والی دائیوں کو تربیت فراہم کرکے حاملہ خواتین اور بچوں کی اموات کو کم کیا جاسکتا ہے ڈاکٹر ظفراللہ چوہدری نے کہا کہ ڈاکٹروں اور فارماسیوٹیکل کمپنیوں کے گٹھ جوڑ سے غریب لوگوں کو سستے نرخوں پر دوائی نہیں ملتی ڈاکٹر جیفری ایس ہیمر نے کہا کہ حکومت کو عوامی ٹیکسوں سے حاصل ہونے والے فنڈز کو نہایت احتیاط کے ساتھ عوام کو سہولیات کی فراہمی پر خرچ کرنا چاہیے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1