قومی سلامتی کی مجوزہ پالیسی مدارس دینیہ کی تباہی کےلئے ہے،عطاءالمہیمن بخاری

قومی سلامتی کی مجوزہ پالیسی مدارس دینیہ کی تباہی کےلئے ہے،عطاءالمہیمن بخاری

لاہور( سٹا ف رپوٹر)مجلس احراراسلام پاکستان کے امیر مرکزیہ سید عطاءالمہیمن بخاری ،نائب امیرسید محمد کفیل بخاری اور سیکرٹری جنرل عبداللطیف خالد چیمہ نے کہا ہے کہ قومی سلامتی کی مجوزہ پالیسی مدارس دینیہ کی بہتری کی بجائے تباہی کےلئے ہے ,مدارس کے حوالے سے سرکاری اقدامات اور پراپیگنڈہ منفی ہے اس کے ازالے اورتدارک کےلئے تمام مکاتب فکر کے تعلیمی وفاقوں کواپنا اصلی اور کھرا کردارادا کرنے کی ضرورت ہے مشترکہ بیان میں انہوں نے کہا کہ ہمارا شجرہ شاہ ولی اللہ دہلوی کے فکر سید احمد شہیدکی تحریک حرےت اورمولانامحمودالحسن دیوبندی کے کردار سے جا ملتا ہے, اس لئے وزیر اعظم اور وزیر اعلیٰ مدارس کے حوالے سے حکومتی اقدامات پر تحفظات دورکرنے کی بجائے تحفظات مطلقاًہٹانے کےلئے اقدامات کریںتوزیادہ بہتر ہے۔

۔

۔

۔

۔

 انہوں نے کہا کہ ”وفاق المدارس العربیہ“کے ملتان کنونشن اور پیغام امن کانفرنس نے ثابت کردےا ہے کہ دینی قوتےں امن وسلامتی کی داعی ہیں ہماراایجنڈا اللہ کی مخلوق کو آسمانی تعلیمات سے جوڑنے کے سوا کچھ نہیں اور اسی میں خیر ہے ،شر کی قوتوں سے نمٹنے کےلئے استعماری ایجنڈے کو ترک کرکے خیر کے ایجنڈے تلے جمع ہونا چاہےے علاوہ ازیں مجلس احرااراسلام پاکستان کے سیکرٹری جنرل عبداللطیف خالد چیمہ نے کہا ہے کہ تحرےک ختم نبوت 1953ءکے دس ہزار شہداءکی یاد میں کانفرنسوں کا سلسلہ جاری ہے 23مارچ کو ٹوبہ ٹےک سنگھ،27,28مارچ کوچناب نگر 3اپریل کو چیچہ وطنی 7اپریل کو گوجرانوالہ 8اپریل کو اپریل گجرات 11اپریل کو تلہ گنگ 24اپریل کو ملتان میں شہداءختم نبوت کانفرنسیں منعقد ہوں گی جن میں مختلف مکاتب فکر کے رہنما خطاب کریں گے عبداللطیف خالد چیمہ نے اس امر پر شدید احتجاج کیا کہ27-28مارچ کو چناب نگر میں منعقد ہونے والی ختم نبوت کانفرنس میں خطیب اسلام مولانا محمد رفےق جامی پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1