آپریشن کے دوران ہی تجاوزات دوبارہ قائم ،ٹاﺅن مافیا کامیاب

آپریشن کے دوران ہی تجاوزات دوبارہ قائم ،ٹاﺅن مافیا کامیاب

                                                             لاہور(جاوید اقبال) ضلعی حکومت کی طرف سے شہر کو تجاوزات سے پاک کرنے کیلئے اختیار کی گئی حکمت عملی ناکام ہو گئی جس کے باعث آپریشن مکمل ہونے سے قبل ہی تجاوزات دوبارہ قائم ہو گئی ہیں جس سے ڈی سی او ناکام اور ٹاﺅنوں کا مافیا کامیاب ہو گیا ہے تفصیلات کے مطابق ڈی سی او لاہور نے شہر کو تجاوزات سے پاک کرنے کیلئے حکمت عملی کے تحت شہر کے 9ٹاﺅنوں سے 450کے قریب شعبہ ریگولیشن ، انفارسمنٹ، پلاننگ کے اہلکاروں بلڈنگ انسپکٹروں انفارسمنٹ انسپکٹروں کو تبدیل کر دیا ایک ٹاﺅن کے ملازمین کو دوسرے جبکہ دوسرے ٹاﺅن میں تعینات ملازمین کوتیسرے ٹاﺅن میں تبدیل کر دیا اس طرح پورے لاہور میں ٹاﺅنوں میں سالہا سال سے تعینات اہلکاروں کو تبدیل کیا ان اہلکاروں پر تجاوزات قائم کرا کر لاکھوں روپے یومیہ بنیادوں پر نذرانہ اکٹھا کرنے کا الزام تھاذرائع نے بتایا ہے کہ ان میں سے 350اہلکار تبادلے کے باوجود گزشتہ ڈیڑھ ماہ سے پرانی جگہوں پر تعینات ہیں اور علم میں ہونے کے باوجود ضلعی حکومت نے خاموشی اختیار کررکھی ہے بتایا گیا ہے کہ راوی ٹاﺅن کے 80فیصد تبدیل کئے گئے ملازمین نے نئی تعیناتی پر عمل نہیں کیا یا وآپس آ چکے ہیں عزیز بھٹی ٹاﺅن، شالا مار ٹاﺅن، گلبرگ ٹاﺅن، سمن آباد ٹاﺅن، اقبال ٹاﺅن، واہگہ ٹاﺅن، نشتر ٹاﺅن میں بھی تبدیل کئے گئے 80سے 90فیصد ملازمین پرانی تعیناتیوں پر ”مزے“ لے رہے ہیں اور انہوں نے دوبارہ تجاوزات قائم کرا دی ہیں جس سے آپریشن کے لئے اختیار کی گئی ڈی سی او لاہور کی حکمت عملی ناکام ہو گئی ہے بتایا گیا ہے کہ زیادہ تر ملازمین کوا ن افسروں جو ان ملازمین کو ٹاﺅنوں کے کماﺅں پتر کہتے ہیں نے روک رکھا ہے جبکہ بعض ملازمین نئی جگہوں پر حاضریاں لگوا کر واپس آ کر چور بازاری کے لئے سرگرم ہیں اس حوالے سے ڈی سی او لاہور ڈاکٹر احمد جاوید قاضی سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ یہ معاملہ میرے علم میں نہیں ہے ایسا ہے تو تحقیقات کریں گے انہوں نے کہاکہ جن افسروں نے ملازمین سے تبادلوں پر عمل نہیں کرایا ان سے جواب طلب کریں گے انہوں نے کہا کہ آپریشن ختم نہیں ہوا جاری ہے مانیٹرنگ کرائیں گے جہاں دوبارہ تجاوزات قائم ہوئی ہیں انہیں دوبارہ مسمار کریں گے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1