پاکستانی شاہینوں کی بھارت سے ایک اور شکست

پاکستانی شاہینوں کی بھارت سے ایک اور شکست
پاکستانی شاہینوں کی بھارت سے ایک اور شکست

  


ہیلو پیارے دوستو !سنائیں کیسے ہیں، امید ہے کہ اچھے ہی ہوں گے،ہم بھی اچھے ہی ہیں، لیکن ہمارے بہت سے دوست گم صم سے نظر آرہے ہیں ،یوں لگتا ہے گویا انہیں سانپ سا سونگھ گیا ہو ۔ جی ہاں سانپ تو سونگھنا ہی تھا ،اس لئے کہ پاکستانی ٹیم ایک بار پھر بھارتی ٹیم سے ہار گئی ۔ہمارے بہت سے دوستوں کو حیرانی ہوئی کہ نہ تو سابق کپتان کے دئیے گئے مشورے قومی ٹیم کے کام آئے اور نہ ہی پاکستانی عوام کی دعائیں پاکستان کرکٹ ٹیم کو ورلڈ ٹی ٹونٹی میچ میں بھارت سے جتوا سکیں۔ بلند بانگ دعوے کرنے اور تاریخ بدلنے کی باتیں کرنے والے پاکستانی کپتان بھی اپنے ان دعووں کا پاس نہ رکھ سکے ۔ پاکستانی قوم محو حیرت ہے کہ بنگلہ دیش کو تاریخی شکست سے دوچار کرنے والی قومی ٹیم نہ جانے کیوں بھارت کے سامنے اس قدربے بس سی نظر آئی ۔ بنگلہ دیش کے خلاف دو سو ایک رنز کا پہاڑ کھڑا کرنے والی ٹیم بھارتی سورماؤں کے سامنے ریت کی دیوار ثابت ہوئی ۔

پاکستانی ٹیم کے کپتان شاہد آفریدی بھارت کے خلاف ٹاس ہار گئے ۔ ٹاس ہارنے کے ساتھ ہی لگتا تھا گویا میچ بھی ہار گئے ہیں۔ بہرحال پاکستانی ٹیم کو بھارت کے کپتان دھونی نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کی دعوت دی تو کوئی پاکستانی کھلاڑی جم کر نہ کھیل سکا اور اٹھارہ اوورز میں محض ایک سو اٹھارہ رنز ہی بن سکے۔ بارش کے باعث میچ کو کچھ دیر کے لئے روک دیا گیا، پاکستان کا دیا ہوا ٹارگٹ بھارتی بلے بازوں نے بہت آرام سے پورا کر لیا۔ پاکستانی ٹیم کے میچ ہارتے ہی پاکستانی قوم بھی ہار کے صدمے سے نڈھال ہو گئی، شائقین نے ٹی وی تک توڑ دئیے ، سوشل میڈیا پر بھی پاکستانی ٹیم کی ہار کے بعد ایک طوفان اٹھ کھڑا ہوا ۔۔۔جو منچلے کل تک بنگلہ دیش کی ٹیم سے جیت کا جشن منا رہے تھے ، اب پاکستانی ٹیم کی بھارت سے ہار پر دلبرداشتہ ہو کر پاکستانی ٹیم کو کوس رہے تھے۔

یہ بات بھی حقیقت ہے کہ کھیل کے میدان میں جب دو ٹیمیں اتریں گی تو وہی جیتے گا جو اچھا کھیلے گا اور یقیناًبھارتی ٹیم بہت اچھا کھیلی اسی لئے جیت بھارتی ٹیم کا مقدرٹھہری ، تاہم ایک حیران کن خبر یہ بھی سامنے آئی کہ پاکستان کو ہرانے کے لئے جان بوجھ کر انتہائی ناقص پچ تیار کروائی گئی ، پاکستانی کر کٹ بورڈ کے اعلیٰ حکام نے بھی کولکتہ میں پاکستان اور بھارت کے مابین میچ میں ناقص پچ تیار کئے جانے پر احتجاج ریکارڈ کروا دیا۔ ہمارے منچلے پاکستانی ٹیم کی ہار کا ذمہ دار سابق کپتان عمران خان کو بھی ٹھہرا رہے ہیں جو بڑے زور شور سے پاک بھارت میچ دیکھنے ہندوستان گئے ، بہر حال حیرت ہوئی کہ عمران خان کے مفید مشوروں کے باوجود بھی پاکستانی ٹیم تاریخ نہ بدل سکی اور بھارت سے پھر ہار گئی۔دوسری طرف بھارت کے لئے پاکستان سے میچ جیتنا انتہائی ضروری تھا، کیونکہ بھارت نیوزی لینڈ سے ہار چکا ہے۔

پاکستان بھی اپنے دو میچ کھیل چکا ہے ، بنگلہ دیش سے تو جیت گیا، لیکن پاکستان بھارت سے ہار گیا ۔ اب بھی پاکستان نے نیوزی لینڈ اور آسٹریلیا کے خلاف کھیلنا ہے ،جبکہ نیوزی لینڈ، بھارت اور آسٹریلیا کو ہرا کر اپنے گروپ میں سرفہرست ہے ۔ پاکستانی ٹیم کے پاس اب بھی چانس ہے کہ وہ ٹی ٹونٹی ورلڈٖ کپ میں بھرپور طریقے سے کم بیک کر سکتی ہے، اس کے لئے پاکستانی ٹیم کو آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ جیسی ٹیموں سے ہر حال میں جیتنا ہو گا تبھی ہمارا ورلڈ ٹی ٹونٹی کپ 2016ء جیتنے کا خواب پورا ہو سکتا ہے ۔ آئندہ جیت کے لئے ضروری ہے کہ پاکستانی ٹیم اپنی کوتاہیوں اور خامیوں پر نظر ڈالے، غلطیوں پر قابو پائے اور آئندہ میچوں میں جیت کے لئے پر عزم ہو تو ورلڈ کپ ٹی ٹونٹی 2016ء کو جیتا جاسکتا ہے ۔ آئندہ پاکستانی ٹیم کیا حکمت عملی اختیار کرتی ہے کہ آئندہ میچ جیت سکے اور اگلے راؤنڈ میں داخل ہو سکے ۔ سیانے کہتے ہیں کہ امید پر دنیا قائم ہے اور یقیناًہمیشہ اچھے کی امید رکھنی چاہئے ، یقیناًہم بھی اسی آس اور امید میں آپ سے اجازت چاہتے ہیں کہ اللہ کرے پاکستانی ٹیم ہی ورلڈ کپ جیتے، آمین ثم آمین!

مزید : کالم


loading...