عالمی معیار کے اس اعزاز کے ساتھ کسانوں کے اعتمادپر بھی بہتر انداز میں پورا اتریں گے،ڈاکٹر خالد حمید

عالمی معیار کے اس اعزاز کے ساتھ کسانوں کے اعتمادپر بھی بہتر انداز میں پورا ...

زرعی شعبہ میں نمایاں مقام کے حامل ادارے تارا گروپ پاکستان کو گزشتہ دنوں حکومت پاکستان کے ادارہ پاکستان نیشنل ایکریڈ یٹیشن کونسل نے عالمی معیار آئی ایس او،آئی ای سی2005:17025وسیع تردائرہ کار کی سند امتیاز سے نوازا۔زرعی شعبے میں پیسٹی سائیڈز فرٹیلا ئزر لیبارٹریز کے وسیع تر رینج کے اس اعزاز کی اس سے قبل مثال نہیں ملتی۔اس عالمی اعزاز کے حوالے سے گزشتہ دنوں تارا گروپ پلانٹ پر ایک خصوصی تقریب کا اہتمام کیا گیا جس کے مہمان خصوصی زرعی شعبے کے سرکردہ رہنما میاں عبدالحمید اور چودھری نذیر احمد تھے جنہوں نے حکومت پاکستان کی جانب سے عطا ہونے والے اس سرٹیفکیٹ کی طلائی پلیٹ کی رونمائی کا افتتاح کیا۔ مہمانان خصوصی نے بعد ازاں لیبارٹریز کے دورہ کے دوران ادارہ کی مزید ترقی و سر بلندی کی دعا کی اور کہا کہ ادارہ کے تمام ملازمین تندہی،جانفشانی اور نیک نیتی سے ایک منظم اور پر عزم ٹیم کی طرح یکجا ہو کر بھرپور کاوشوں کا مظاہرہ کریں تو ترقی و سر بلندی آپ سب کے قدم چومے گی۔اس منفرد عالمی اعزاز پر منعقدہ تقریب افتخار سے خطاب کرتے ہوئے چیئرمین تارا گروپ ڈاکٹر خالد حمید نے کہا کے تارا گروپ پاکستان کی مثالی پیش رفت میں آج ایک قابل فخر اور نوید بھرادن ہے اس لئے کہ آج ہم نے زرعی شعبے میں سربلندی کا ایک منفرد اہم سنگ میل کو سر کرنے کا کارنامہ سر انجام دیا ہے۔عالمی معیار ISO/IEC-17025:2005 کے تحت حکومت پاکستان کے ادارہ پاکستان نیشنل ایکریڈ یٹیشن کونسل سے وسیع تر دائرہ کار کی سند امتیاز حاصل کر نا ہماری کمپنی کے لئے ایک قابل فخر اعزاز ہے حکومت پاکستان کے اس ادارہ کے مطابق اللہ تبارک تعالیٰ کے فضل و کرم سے ہم آج سے عالمی سطح پر مستند مصنوعات فراہم کرنے والے اداروں میں شامل ہو گئے ہیں آپ نے ذرائع ابلاغ کے اشتہارات میں اکثر زرعی اداروں کو جدتوں کی ترجمانی کا دعویٰ کرتے ہوئے پڑھا اور سنا ہو گا۔مگر اللہ کے فضل سے تارا گروپ کی لیبارٹریز کے عالمی سطح پر مستند قرار پانے کے اس اعزاز کے ساتھ ہم ڈنکے کی چوٹ پر جدتوں کا ترجمان تارا گروپ کا بڑے اعتماد کے ساتھ نعرہ بلندی کرتے ہوئے اپنا سرفخر سے بلند کر سکتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ تارا گروپ پاکستان نے قلیل ترین عرصہ میں بے مثال کا میابیوں سے جوتاریخ ساز داستاں رقم کی ہے وہ اس ادارہ کے تمام ملازمین کی کاوشوں کا عظیم ثمر ہے۔آج کی اس تقریب میں ہم جس گراں قدر اعزاز پر فخر محسوس کر رہے ہیں وہ کوئی عام یا ادنیٰ اعزاز نہیں بلکہ عالمی معیار پر پورا اترنے کا قابل فخر اعزاز ہے جس میں PNAC نے ہمیں وسیع تر دائرہ کار کی سند امتیاز سے نوازا ہے جس کے بارے میں یہ حقیقت آپ سب کو معلوم ہونی چاہیے کہ PNACسے اب تک جن اداروں نے ایکریڈ یٹیشن کا اعزاز حاصل کیا ان میں زیادہ تر اداروں کی ایک اور چند اداروں نے 3تا4پیرا میٹرز کے لئے کوالیفائی کیا ہے جبکہ اللہ کے فضل و کرم سے تارا گروپ کو پیسٹی سائیڈز اورفرٹیلائزر کی وسیع تر رینج کے عالمی معیار پر پورا اترنے کے 14پیرا میٹرز کو اس سند امتیاز سے نوازا گیا ہے۔ڈاکٹر خالد حمید نے کہا کہ تارا گروپ کا کسانوں کے اعتماد اور بھروسے پر پورا اترنا اولین مشن اور نصیب العین ہے جس کے حصول کے لئے اپنی پراڈکٹس کی کوالٹی کو ہم نہ صرف اس اعزاز کے ساتھ عالمی معیار پر یقینی بنائیں گے بلکہ کسان کے بھروسے پر پورا اترنے کا عہد اور بھی بہتر انداز میں نبھائیں گے۔انہوں نے کہا کہ ہم اس اعزاز کے ساتھ ملکی سطح پر جہاں ہم زراعت پر مبنی صنعتوں اور کسانوں میں اپنا منفرد مقام نیک نامی اور وقار۔ اور شاندار انداز میں بڑھا پائیں گے وہاں عالمی سطح پر بھی ہم منفرد شناخت ساکھ اور پہچان ممکن بنائیں گے۔انہوں نے کہا کہ ایک قابل ستائش بات یہ بھی ہے کہ اس اعزاز کے لئے دیگر اداروں کو کوالیفائی کرنے کے لئے کئی کئی سال لگے مگر ہمارے انتہائی تجربہ کار اورباصلاحیت ماہرین نے یہ معرکہ صرف 5ماہ کے عرصہ میں ممکن کر دکھایا۔میں اس اعزاز کے حصول میں جہاں معاونت کرنیوالے سرکاری شعبوں کے سربراہوں کو ہدیہ تحسین پیش کرتا ہوں وہاں اپنے متعلقہ ماہرین کی شاندار کا رکردگی کو سراہتے ہوئے آپ سب کو بھی اس افتخار پر دلی مبارک پیش کرتا ہوں اور توقع کرتا ہوں کہ عالمی میارISOکے تحت حاصل ہونے والی اس قابل فخر کامیابی کو ہم کئی اداروں کی طرح محض کاغذی شناخت نہیں بنائیں گے بلکہ ایک یکجا اور پر عزم ٹیم کی مثالی سپرٹ کا مظاہرہ کرتے ہوئے ہم سب مل کر اعلیٰ ترین کوالٹی کو یقینی بنا کر اپنی برتری اور سربلندی کے لئے کوئی کسر اٹھا نہیں رکھیں گے۔ذکر ہوا ہے کہ یکجا اور پر عزم ٹیم کے جذبوں کا تویہ بھی خوش آئند امر ہے کہ ہمارے شعبہ ہیومین ریسورس کی سربراہ محترمہ فوزیہ بانو کی تحریک پر سپورٹس مین سپرٹ کے جذبہ کو بیدار کرنے کے لئے معمول کی سرگرمیوں سے ہٹ کر تفریح طبع کے مواقع فراہم کرنے کی غرض سے آج کمپنی کی دو ٹیموں کے مابین کرکٹ کا دوستانہ میچ کھیلا گیا جس میں سبھی کھلاڑیوں نے اچھی پرفارمنس کا مظاہرہ کیا۔بہرحال مقابلے میں ایک ٹیم کو بالآخر جیتنا اور ایک کو ہارنا ہوتا ہے مگر ہار جیت کا یہ عمل بھی ہمارے لئے آئندہ کامیابیوں کے درکھولنے کے لئے بہت سبق آموز ہوتا ہے۔ ایسے کھیل میں جہاں جیتنے والوں کو اپنی برتری برقرار رکھنے کے لئے کھیل کی آئندہ بہتر حکمت عملی اور سپرٹ کو برقرار رکھنے کی تگ ودو کرنا ہوتی ہے وہاں ہارنے والوں کو جی چھوٹا کرنے کی بجائے ہار کے اسباب پر نگاہ رکھتے ہوئے یہ سبق سیکھنا ہے کہ ہم نے اپنے حریف پر آئندہ برتری کے لئے اپنی ٹیم ورک، سپرٹ اور جیت کی حکمت عملی کو کیسے موثر اور کارگر بنانا ہے۔ہم نے بہترین پرفارمنس سے کن جذبوں کے ساتھ جیت کویقینی بنانا ہے۔ یہی جذبہ،عزم،حوصلہ،اور حکمت عملی کا روبار میں شاندارکامیابیوں کی کنجی ہے جتنی اچھی اور مثالی ٹیم ورک سپرٹ سے آپ باہم یکجا ہو کر اپنے حریف کے حربوں پر حاوی ہونے کی ہمت حوصلہ اور تدبیر بروئے کار لائیں گے اتنی ہی شاندار کامیابی آپ کا مقدر بنے گی۔میں فخر سے یہ اعتراف کرتا ہوں کہ کمپنی کی اعلیٰ انتظامیہ کی مؤثر حکمت عملی اور پیشہ ورانہ امور میں مثالی رہنمائی میں کمپنی کے ہر فرد نے انفرادی اور ٹیم ورک سپرٹ سے اجتماع سطح پر بہترین کارکردگی کا بھرپور مطاہرہ کیا ہے جس کے طفیل ہمیں قلیل عرصہ میں زرعی شعبہ میں بہ فضلِ تعالیٰ بہت منفرد اور نمایاں مقام حاصل ہوا جس پر آپ سب مبارکباد اور شاباش کے مستحق ہیں تاہم مجموعی طو پر جن ملازمین، افسران،ماہرین نے بہت ہی مثالی کارکردگری کی مطاہرہ کیا ان کی شاندار خدمات کے اعتراف کے طور پر آج کی اس تقریب میں کچھ ساتھیوں کو ایکسی لینس ایوارڈ عطاکئے جارہے ہیں میں توقع کرتا ہوں کہ جو ساتھی ان اعزازات کا حصول ممکن نہ بنا سکے وہ اپنی پرفارمنس کو بہتر بناتے ہوئے آئندہ ایسے اعزازات کا افتخار حاصل کرنے کے لئے کوئی کسر نہیں چھوڑیں گے۔چیئرمین تارا گروپ کے اعلان کے مطابق متذکرہ تقریب میں مہمان خصوصی چودھری نذیر احمد اور میاں عبدالحمید کے ہمراہ گروپ ڈائریکٹر چودھری مقصود احمد،ڈائریکٹر مارکیٹنگ حفیظ بیگ اور ڈائریکٹر سیلز سید محمد ناصر شاہ نے جن ماہرین کو مثالی لیڈر شپ ایوارڈ دیئے ان میں ڈاکٹر احمدسلیم اختر اور مبشر خان شامل تھے۔ سال 2015ء کے دوران ایمپلائز آف دی ائیر کا ایوارڈ اور گولڈ کا اعزاز پانے والوں میں عرفان نصیر احمد،محمد آصف شکور اور محمد شہباز شامل تھے۔بہترین ٹیم لیڈر ایوارڈ کے لئے محمد اکرم،فاروق احمد،محمد یوسف اور ظہور احمد مستحق قرار پائے۔بہترین کارکردگی ایوارڈ محمد تراب،شاہد محمود،گلزار احمد، عاصم محمد مصطفےٰ افتخار احمد محمد اقبال فاروق احمد،محمد عاصم،فیصل حمید،محمد رشید آفتاب احمد،تنویر ریاض، محمد طارق خرم شہزاد مس دنہا روز،اسماعیل چشتی،راؤ سلیمان،نبیل خان،مثالی ٹیلنٹ کا ایوارڈ محمد وقاص اور ابرار علیٰ اور لائیلٹی ایوارڈ محمد منظور نے حاصل کیا۔تارا کرکٹ میچ کے چیمپئن کی ٹرافی ہیڈ آفس کی ٹیم کی جانب سے حبیب اللہ اعوان اور عمران احمد نے حاصل کی۔ رنراپ ٹرافی شاہد محمود نے تارا پلانٹ ٹیم کی جانب سے حاصل کی۔ مین آف دی میچ ایوارڈ عظمت عباس نے حاصل کیا، تقریب افتخار میں کمپیئر نگ کے فرائض محترمہ فوزیہ بانو سینئر میجر ہومین ریسورس نے سرانجام دیئے جبکہ تلاوت قرآن پاک کا فریضہ عاصم ظفر نے ادا کیا۔

مزید : ایڈیشن 2


loading...