گجر پورہ میں چوروں ،ڈاکوؤں اور نوسر بازوں کی بھرمار ،پولیس قابو پانے میں ناکام

گجر پورہ میں چوروں ،ڈاکوؤں اور نوسر بازوں کی بھرمار ،پولیس قابو پانے میں ...

لاہور(وقائع نگار )تھانہ گجر پورہ کے علاقہ میں ڈاکوؤں ، چوروں اورنوسربازوں سمیت دیگر جرائم پیشہ افراد کی بھرمار نے شہریوں کا جینا محال کر دیا ۔پولیس کا گشت نہ ہونے کی وجہ سے روزانہ فیملیزکاچوروں اور ڈاکوؤں کے ہاتھوں لٹنا معمول بن گیا۔ پولیس جرائم پیشہ افراد اوربڑھتی ہوئی وارداتوں کو روکنے میں مکمل طور پر ناکام ہوگئی ۔ نمائندہ ’’پاکستان‘‘ سے گفتگو کرتے ہوئے اہل علاقہ نے بتایا کہ گجر پورہ کے علاقہ میں چوری ڈکیتی کی وارداتوں میں بے تحاشہ اضافہ ہو رہاہے جس کی وجہ سے شہریوں کا جینا محال ہو چکا ہے جبکہ پولیس کے گشت میں کمی کی وجہ سے شہریوں کا کوئی پرسان حال نہیں اور انہیں گویا جرائم پیشہ افراد کے سپرد کر دیا گیا ہے ۔علاقہ میں منشیات فروشوں میں شیر شاہ روڈکی شمیم عرف شیمو اور صابرہ بی بی ،بھوگی وال روڈکی شہناز بی بی مشہور ہیں۔ علاقے میں پرچی ،میچ ،سٹہ تاش اور دیگر کھیلوں پر جوا ہوناتو ایک عام سی بات ہے جبکہ پولیس پرواہ نہیں کرتی کیونکہ اس سے ان کا اپنا پیٹ بھی پلتا رہتا ہے ۔ قما ر بازوں میں حاجی پورہ کا محمد اسلم ،جانی پورہ کا محمد رفیق ،دھوبی گھاٹ مین بازار کا محمد ادریس شامل ہیں ۔منشیات فروشوں اور قمار بازوں کےُ چنگل سے کوئی بچ بھی جائے تو رہی سہی کسر قحبہ خانہ کا مکروہ دھندہ کرنے والے افراد پوری کر دیتے ہیں ۔ شہریوں کا کہنا تھا کہ تھانہ میں پولیس اہلکاروں کی جانب سے ان کے ساتھ ناروا سلوک برتا جاتا ہے جس کی وجہ سے وہ سٹریٹ کرائم کی وارداتوں کو رپورٹ کرنے کے لیے تھانہ میں جاتے ہی نہیں ہیں ۔ علاوہ ازیں اگر کوئی اور معاملہ ہو جائے تو وہ اس حوالے سے بھی پنچائت یا معززین علاقہ کی نگرانی میں اسے حل کروانے کوترجیح دینے لگے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ پولیس سے کوئی بھی کام لینے کے لیے اہلکاروں کی مٹھی گرم کرنا ایک لازمی امر ہو گیا ہے جس کی وجہ سے وہ شدید مشکلات کا شکار ہیں ۔ پولیس اہلکاروں کاشہریوں کے ساتھ رویہ نہایت نا مناسب ہے اور غریب شخص اگر تھانہ میں کوئی رپورٹ درج کروانے چلا جائے تو وہ اس کی بات ہی نہیں سنتے یا پھر اس کو حیلے بہانے کر کے بھگا دیتے ہیں ۔اس حوالے سے تھانہ گجر پورہ میں رابطہ کیا گیا تو پولیس کا کہنا تھا کہ الزامات میں کوئی صداقت نہیں ہے ۔علاقہ میں جرائم مکمل طور پر کنٹرول میں ہیں ، اگر کسی شہری کو کوئی شکایت ہے تو وہ تھانہ میں رابطہ کرے ، کارروائی کی جائے گی۔

مزید : علاقائی


loading...