مشر ف کی بیرون ملک روانگی ، عدالتوں میں نظریہ ضرورت آج بھی زندہ ہے ، سراج الحق

مشر ف کی بیرون ملک روانگی ، عدالتوں میں نظریہ ضرورت آج بھی زندہ ہے ، سراج الحق

 کنڈیارو(خصوصی رپورٹ ) امیرجماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہاہے آئین پاکستان کو توڑنے کے مجرم ،نواب اکبر بگٹی قتل کیس اور 12مئی کے قتل عام کے موقع پر مکہ لہراکر اپنی طاقت کا مظاہر کرنے والے پرویز مشرف کو راہ فرار اختیار کرنے کا راستہ دینے سے اب یہ بات واضح ہوگئی ہے کہ پاکستان کی عدالتوں میں نظریہ ضرورت آج بھی زندہ ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پبلک پارک کنڈیارو میں ’’ناموس رسالت کانفرنس‘‘سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ سندھ کی تبدیلی اور تعمیر وترقی میں سب سے بڑی رکاوٹ یہاں کا حکمران ٹولہ ہے جو کہ برسوں سے اقتدار میں رہنے کے باوجود عوام کے دکھ درد کا مداوا کرنے کی بجائے صرف اپنے بنک بیلنس میں اضافہ اور اپنے مفادات کی تکمیل میں مصروف ہے۔عام آدمی آج بھی غربت ومفلسی اور انصاف سمیت بنیادی انسانی سہولتوں سے محروم ہے۔اسلئے محض چہروں کی تبدیلی کے بجائے نظام کی تبدیلی اور دیانتدار وامانتدار قیادت ہی ملک کے مسائل حل کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے،جب تک اختیار واقتدار دیانتدار قیادت کو نہیں ملتا ملک میں حقیقی تبدیلی نہیں آسکتی،اسلئے عوام کو ملک اور اپنی آئندہ نسلوں کے بہتر مستقبل کی خاطر اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔الیکشن کو پیسے کا کھیل بناکررکھ دیا گیا ہے،جس میں غریب کیلئے کوئی جگہ نہیں، اسلئے ہم ملک سے معاشی اور اخلاقی کرپشن کا خاتمہ چاہتے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ نواز شریف نے تاریخ سے سبق نہیں سیکھا،کئی بار اللہ کے گھر خانہ کعبہ اور روضہ رسولؐ پر حاضری کے باوجود واپس آکر واشنگٹن کی ڈکٹیشن پر عمل کرتے ہیں۔ممتاز قادری کو پھانسی دیکر ملک کو لبرل وسیکولر بنانے کا نعرہ اسی ایجنڈے کا تسلسل ہے۔ممتاز قادری کو نہیں دراسل نظریہ پاکسان اور تحریک پاکستان کو پھانسی دی گئی ہے،نبی ؐ کے ناموس پر جو قربان ہو وہ زندہ ہے،میڈیا کے بلیک آؤٹ ،حکومتی سازشوں کے باوجود لاکھوں لوگوں نے شہید ممتاز قادری کے نماز جنازہ میں شرکت کرکے حکمرانوں کے منہ پر زوردار تھپڑ رسید کیا ہے۔غازی ممتاز قادری کا خون نواز شریف کا آخری دم تک پیچھا کرتا رہے گا،ممتاز قادری روز محشر میں ان کے گریبان میں ہاتھ ڈالے گا۔پاکستان کے عوام بیدار اور اپنے نبیؐ کی شان پر مرمٹنے کیلئے تیار ہیں۔انشاء اللہ فتح غلامان مصطفیؐ اور شکست غلامان اوبامہ کا مقدر ہوگی۔اس موقع پر مرکزی نائب امیر وسابق ایم این اے اسداللہ بھٹو، ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی، ممتاز سہتو،حافظ لطف اللہ بھٹو، سابق چیئرمین ٹاؤن کمیٹی سردار اکبر اجن،ضلعی امیر خالد شفیق،مقامی امیر حافظ ہاشم لاشاری نے بھی خطاب کیا۔قبل ازیں امیر جماعت کا کنڈیارو بائی پاس پر شاندار استقبال اور جلوس کی شکل میں جلسہ گاہ تک لایا گیا اور تمام مہمانوں کو سندھ کی روایتی سوکھڑی اجرک کا تحفہ پیش کیا گیا۔قبل ازیں صابو راہو(سعید آباد) میں مقامی زمیندارعبدالعزیز سنجرانی کی جانب سے دیئے گئے استقبالیے سے خطاب کرتے ہوئے سراج الحق نے کہا کہ سندھ میں حکومت نام کی کوئی چیز نہیں ہے،امیروں کے کتوں کا علاج بیرون ملک جبکہ غریب آدمی دو وقت کی روٹی کیلئے پریشان اور ہسپتالوں میں سردرد کی گولی بھی ناپید ہے،اسلئے ان سیاسی پنڈتوں کیخلاف ایک فیصلہ کن جنگ کی ضرورت ہے،عوام جماعت اسلامی کا ساتھ دیں۔حکمران امریکہ کو خوش اور اللہ کو ناراض کرنے میں مصروف عمل ہیں،یہ ہماری دھرتی ماں اور مسجد کا درجہ رکھتی ہے،جماعت اسلامی تمام سیاسی مفادات سے بالاتر ہوکر اس امت کو یکجا کرنے کی جدوجہد کررہی ہے۔نبیؐ سے محبت کے بغیر دنیا وآخرت میں کامیابی ناممکن ہے،عشق مصطفی ؐ کا تقاضہ ہے کہ ہم نظام مصطفی کیلئے جدوجہد کریں ۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...