پنجاب انسٹیٹیوٹ آف لینگوئج، آرٹ اینڈ کلچراور محکمہ اطلاعات و ثقافت کے زیر اہتمام7روزہ ’’میلہ بہاراں‘‘

پنجاب انسٹیٹیوٹ آف لینگوئج، آرٹ اینڈ کلچراور محکمہ اطلاعات و ثقافت کے زیر ...

  



حسن عباس زیدی

دہشت گردی کو شکست دینے کے لئے فنکار اکٹھے ہوگئے ۔پنجاب انسٹیٹیوٹ آف لینگوئج، آرٹ اینڈ کلچر (پِلاک)، محکمہ اطلاعات و ثقافت، حکومت پنجاب کے زیر اہتمام 7 روزہ ’’میلہ بہاراں‘‘ کا افتتاح میاں مجتبیٰ شجاع الرحمن صوبائی وزیر برائے اطلاعات و ثقافت، حکومت پنجاب نے کیا۔یہ میلہ 13 سے 19 مارچ 2017ء تک جاری رہا ۔افتتاح کے موقع پر ملک کے نامور گلوکاروں، فنکاروں اور پنجابی زبان و ادب سے تعلق رکھنے والی جن شخصیات نے شرکت کی ان میں سید نور، شوکت علی، علی اعجاز، بہار بیگم، غلام محی الدین، مسرت شاہین، نِشو بیگم، میرا، فیصل رحمن، چوہدری محمد اعجاز، کامران، عدیل برکی، بابا یحییٰ خان، کیپٹن عطاء محمد خان، شعیب بن عزیز اور منصور آفاق کے نام نمایاں تھے۔ میاں مجتبیٰ شجاع الرحمن نے افتتاحی تقریب میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت پنجاب کی ہمیشہ سے کوشش رہی ہے کہ عام شہریوں کے لیے تفریح کے بھر پور مواقع فراہم کیے جائیں یہ میلہ بھی اُسی سلسلہ کی ایک کڑی ہے۔ لوگوں کو اچھی تفریح کے ساتھ ساتھ نوجوان نسل کو اپنی ثقافت کے بارے میں آگاہی فراہم کرنا ہے تاکہ ہماری نئی نسل اپنی ثقافت کے ساتھ جُڑی رہے۔ انھوں نے کہا کہ حکومت پنجاب، فن و ثقافت کے فروغ اور فنکاروں کی مالی معاونت کرنے کے لئے خدمت کارڈ کا اجراء کر رہی ہے۔ جس کے ذریعے ماہانہ بنیاد پر انھیں وظائف دئیے جائیں گے۔میلہ بہاراں کے پہلے دن عالمی شہرت یافتہ گلوکاروں عارف لوہار، ندیم عباس لونے والا، عذرا جہاں اور سائرہ طاہر نے خوبصورت گلوکاری کے ذریعے حاضرین کے دل موہ لیے اور پائل چوہدری نے بلھے شاہ کے کلام پر رقص پیش کیا۔ کمپیئرنگ کے فرائض ڈاکٹر عمر عادل اور عائشہ ثناء نے ادا کئے افتتاحی تقریب کا مزا اس وقت کرکراہوگیا جب اداکارہ میرانے وہاں پہنچتے ہی ایک ہنگامہ برپا کردیا کہ جب تک اسے معاوضہ ادانہیں کیا جائے وہ پرفارم نہیں کریں گی جبکہ حقیقت یہ ہے کہ میراکو پرفارمنس نہیں بلکہ صرف مہمان کے طورپر مدعوکیا گیا تھا۔اس موقع پر میرانے موقف اختیارکیا کہ وہ ان دنوں شدید مالی بحران کا شکار ہے جس کی وجہ سے اس کے لئے یوٹیلٹی بلز اداکرنے کے پیسے بھی نہیں ہیں۔ پلاک کی ڈائریکٹرجنرل ڈاکٹرصغراصدف نے اس موقع پر میراکو سمجھانے کی بہت کوشش کی کہ میڈیا کی موجودگی میں ایسانہ کرے لیکن میرانے سب کی بات سنی ان سنی کردی کیونکہ وہ شایدوہ گھرسے ہی یہ سب طے کرکے آئی تھی کہ اس نے یہ ہنگامہ کرنا ہے ۔میراباربار مطالبہ کررہی تھی کہ اسے ابھی 25ہزارروپے اداکئے جائیں۔صورت حال کی نزاکت کو دیکھتے کو صغراصدف نے اپنے پاس سے میراکو25ہزارروپے دے کرجان چھڑائی جس پر میرا کچھ دیربعدوہاں سے چلی گئی۔اس بارے میں صغراصدف کا کہنا ہے کہ میراکو صرف مہمان کے طورپر مدعوکیاگیا تھا اور اس سے معاوضے کی کوئی بات نہیں ہوئی تھی۔اس موقع پرموجود لوگوں نے میراکے رویئے پرافسوس کا اظہار کیا۔۔ میلہ بہاراں میں پنجابی کی مشہور فلمیں ہیر رانجھا، ملنگی، کرتار سنگھ، محبتاں سچیاں، چوڑیاں اور مجاجن بھی دکھائی گئیں۔ جن کے گانے زنیب زاہد، صائمہ ممتاز، توقیر بھنڈر، ماہم رحمان، افشاں، حسنین اکبر، بشریٰ صادق، فضل جٹ، صائمہ اختر، سجاد بری، ثمینہ ملک، سکندر خاقان، نذیر احمد، سمیر عباس، روبا خان اور حسن شاہ لائیو گانے گائے اور معروف فنکار فلم کے گیتوں پر پرفارم کیا ۔میلہ میں آنے والے ادیبوں، شاعروں، فنکاروں اور گلوکاروں نے محترمہ ڈاکٹر صغرا صدف ڈائریکٹر جنرل پِلاک کو اِس کامیاب میلہ کے انعقاد پر مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ اِس طرح کے حالات میں لوگوں کو صحت مند تفریح کے مواقع فراہم کرنا یقیناًایک بہت بڑا کارنامہ ہے۔ ڈاکٹر صغرا صدف نے تمام شرکاء کا شکریہ ادا کیا اور پھولوں کے تحفے پیش کیے۔ انھوں نے کہا کہ پِلاک حکومت پنجاب کی ہدایات پر لوگوں کو خوشگوار تفریح کے مواقع فراہم کرنے کے لیے کوشاں ہے تاکہ معاشرے سے نفرت اور انتہا پسندی کا خاتم ہوسکے۔پنجاب انسٹیٹیوٹ آف لینگوئج، آرٹ اینڈ کلچر (پِلاک)، محکمہ اطلاعات و ثقافت، حکومت پنجاب کے زیر اہتمام 7 روزہ ’’میلہ بہاراں‘‘ کے دوسرے دن ہدایتکار حسن عسکری نے بطور مہمان خصوصی شرکت کی۔ میلہ بہاراں کے میوزیکل شو میں افشاں، فضل جٹ، واحد بخش (جونیئر الن فقیر)، انور رفیع اور سنبل نے ملنگی فلم کے گانے پیش کئے جبکہ ملنگی فلم کا مشہور زمانہ گیت ’’ماہی وے سانوں بھل نہ جاویں‘‘ پر معروف اداکارہ لیلیٰ صدیقی نے پرفارم کیا۔ پنجاب بھر سے لوگوں کی بڑی تعداد میلے میں شریک ہوئی۔ تمام دن جھولوں، فوڈ سٹالز اور بک سٹالز پر لوگوں کا رش رہا۔ مہمان خصوصی حسن عسکری نے کہا کہ پنجابی فلم کے فروغ کے لیے پنجاب حکومت کا یہ اقدام خوش آئند ہے۔ اس سے نہ صرف پنجابی فلم بحال ہوگی بلکہ پاکستان فلم انڈسٹری کو نئی آکسیجن بھی مہیا ہوگی۔پنجاب انسٹیٹیوٹ آف لینگوئج، آرٹ اینڈ کلچر (پِلاک)، محکمہ اطلاعات و ثقافت حکومت پنجاب کے زیر اہتمام 7 روزہ ’’میلہ بہاراں‘‘ کے تیسرے دن معروف فلم سٹار بہار بیگم اور مشہور موسیقار وجاہت عطرے نے بطور مہمان خصوصی

شرکت کی۔ میلہ بہاراں کے میوزیکل شو میں بشریٰ صادق، سکندر خاقان اور اکرام فاروقی نے شیر خان فلم کے گانے پیش کئے۔ پنجاب ہال نمبر 1 میں شیر خان فلم بھی دکھائی گئی۔ پنجاب بھر سے لوگوں کی بڑی تعداد میلے میں شریک ہوئی۔ تمام دن جھولوں، فوڈ سٹالز اور بک سٹالز پر لوگوں کا رش رہا۔ فلم سٹار بہار بیگم نے کہا کہ اِس طرح کے پروگرام کرنے سے نئے آنے والے فنکاروں کی حوصلہ افزائی ہوگی اور نیا ٹیلنٹ اُبھر کر سامنے آگئے گا۔ موسیقار وجاہت عطرے نے پِلاک کی اِس کاوش کو بھر پور سراہتے ہوئے کہا کہ اِس طرح کے اقدامات سے فن و ثقافت کو بے حد فروغ حاصل ہوگا اور فنکاروں کی حوصلہ افزائی بھی ہوگی۔ 19 مارچ کو اختتامی تقریب میں عدیل برکی، صائمہ ممتاز اور روبا خان اپنے فن کا مظاہرہ کیا۔ میلہ بہاراں میں کتاب میلہ، پنجاب کے رنگ (پینٹنگ کی نمائش)، بچوں کی تفریح کیلئے جھولے، ٹرین، میجک شو اور کھانے کے سٹال بھی لگائے گئے تھے۔

مزید : ایڈیشن 1


loading...