حامد سعید کاظمی نے 2 عیدیں اڈیالہ جیل میں منائیں ‘ رہائی میں ایک یا دو روز لگ سکتے ہیں ‘ خاندانی ذرائع

حامد سعید کاظمی نے 2 عیدیں اڈیالہ جیل میں منائیں ‘ رہائی میں ایک یا دو روز لگ ...

  



ملتا ن (سٹی رپورٹر)حج کرپشن کیس میں سزا پانے والے سابق وفاقی وزیر مذہبی امور سید حامد سعید کاظمی 9 ماہ 15 دن (بقیہ نمبر40صفحہ12پر )

اڈیالہ جیل میں پابند سلاسل رہے۔ انہوں نے گزشتہ دو عیدیں عید الفطر اور عید الاضحی اڈیالہ جیل میں منائیں، کمر اور گھٹنے کی تکلیف کا سامنا کرتے رہے۔ جیل انتظامیہ کو بار بار درخواست دینے کے باوجود جیل میں فرسٹ یا سیکنڈ کلاس حاصل کرنے میں ناکام رہے اور فرش پر ایک بستر ان کا اوڑھنا بچھونا رہا۔ خاندانی ذرائع کے مطابق وہ اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے سزا کالعدم قرار دئیے جانے کے بعد جیل انتظامیہ کی ضروری کاروائی کے بعد رہا ہوں گے جس پر ایک یا دو روز لگ سکتے ہیں۔واضع رہے کہ سید حامد سعید کاظمی پاکستان پیپلز پارٹی سے تعلق رکھنے والے وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی کے دور حکومت میں مذہبی امور کے وزیر رہ چکے ہیں۔ ان پر 2010ء میں سعودی عرب میں پاکستانی حاجیوں کی سہولیات کے سلسلے میں بدعنوانی کے اسکینڈل میں ملوث ہونے کا الزام لگایا گیا۔ ان پر الزام تھا کہ حاجیوں سے ایک بڑی رقم وصول کی گئی لیکن خوراک، اور رہائش کے انتہائی ناقص انتظامت کیے گئے۔ انہیں اس کے نتیجے میں 14 دسمبر 2010ء کو عہدے سے برطرف کر کے گرفتار کر لیا گیا اور سید خورشید شاہ کو ان کی جگہ مذہبی امور کا وزیر مقرر کیا گیا۔ سید حامد سعید کاظمی پر بدعنوانی کے الزام میں 30 مئی 2012 کو فرد جرم عائد کی گئی تھی تاہم وہ اپنی بے گناہی پر اصرار کرتے رہے۔ بعد ازاں جون 2016 میں اسلام آباد کے اسپیشل جج سینٹرل ملک نذیر احمد نے حج کرپشن کیس میں انہیں 16 سال قید کی سزا سنادی۔ کرپشن کیس میں سابق جوائنٹ سیکرٹری مذہبی امور راجہ آفتاب کو بھی 16 سال قید کی سزا سنائی گئی جبکہ ڈائریکٹر جنرل (ڈی جی) حج راؤشکیل کو 40 سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ ماتحت عدالت نے تینوں ملزمان کو 15 ، 15 کروڑ روپے جرمانے کی سزا بھی سنائی تھی۔ گزشتہ روز اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے سید حامد سعید کاظمی کی سزا کالعدم قرار دئیے جانے کے بعد ان کے مریدین اور عقیدت مندوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی ہے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر