پیپلز پارٹی رہنماء بابر سہیل بٹ کے مقدمہ میں نامزد مرکزی ملزم عاطف جٹ گرفتار

پیپلز پارٹی رہنماء بابر سہیل بٹ کے مقدمہ میں نامزد مرکزی ملزم عاطف جٹ گرفتار

  



لاہور (خبرنگار) سی آئی اے پولیس نے پیپلز پارٹی کے مقامی مقتول رہنما بابر سہیل بٹ کے مرکزی ملزم عاطف عرف عاطی جٹ کو موبائل لوکیٹر کے ذریعے گرفتار کر لیا جبکہ اس کیس میں ایک اور ساتھی ملزم محمد دین کو بھی شور کورٹ سے حراست میں لے لیا گیا ہے۔ پولیس بابر سہیل بٹ کے قتل میں اب تک مرکزی ملزم عاطف عرف عاطی جٹ سمیت چار ملزموں کو گرفتار کر چکی ہے۔ پولیس ذرائع کے مطابق ملزم عاطف عرف عاطی جٹ اپنے دوست علی کا موبائل فون استعمال کر رہا تھا کہ سی آئی اے کینٹ پولیس نے موبائل لوکیٹر کے ذریعے حراست میں لے لیا۔ پولیس ذرائع کے مطابق مرکزی ملزم عاطف عرف عاطی جٹ کے ساتھ پولیس نے شور کوٹ سے ایک اور ملزم محمد دین کو بھی حراست میں لیا ہے۔ حراست میں لیے جانے والے ملزم عاطف عرف عاطی جٹ کے والد محمد فاروق عرف فاروقی نے ایم این اے سہیل شوکت بٹ کے والد ایم پی اے شوکت بٹ کو قتل کیا تھا جو کہ مقتول بابر سہیل بٹ کا گن مین تھاجسے اسے سی آئی اے پولیس نے وحدت کالونی کے علاقہ میں ایک مقابلہ میں ہلاک کر دیا تھا۔ پولیس ذرائع کے مطابق پیپلزپارٹی کے مقامی مقتول رہنما بابر سہیل بٹ کے قتل میں گرفتار مبینہ مرکزی ملزم عاطف عرف عاطی جٹ مقتول بابر سہیل بٹ کا بیٹا بنا ہوا تھا۔ بابر سہیل بٹ نے مبینہ مرکزی ملزم عاطف جٹ کو بچپن سے ہی اپنے ڈیرے پر رکھا ہوا تھا اور مقتول بابر سہیل بٹ کا بیٹا بنا ہوا تھا۔ اعلیٰ سطحی انویسٹی گیشن ٹیم کی جانب سے اب تک کی گئی تفتیش کے مطابق وقوعہ کے روز مبینہ مرکزی ملزم عاطف عرف عاطی جٹ نے ہی اجرتی قاتلوں کو موقع فراہم کیا۔ پولیس کے ایک اعلیٰ افسر کا کہنا ہے کہ گرفتار مرکزی ملزم عاطف عرف عاطی جٹ کو وقوعہ سے چار روز قبل مقتول بابر سہیل بٹ کے بھائی قیصر بٹ نے ڈیرے سے نکال دیا تھا، جس پر بابر سہیل بٹ نے ترس کھاتے ہوئے اسے دوبارہ اپنے پاس رکھ لیا۔ پولیس حکام کے مطابق بابر سہیل بٹ کے قاتلوں کو ملزم عاطف جٹ نے ہی موقع فراہم کیا۔ پولیس افسر کا کہنا ہے کہ ملزم عاطف عرف عاطی جٹ کا بابر سہیل بٹ کے مخالف گروپ نورا کشمیری کے بیٹے عاطف بٹ سے بھی دوستی سامنے آئی ہے اور ملزم کا نورا کشمیری کے بیٹے عاطف بٹ سے بھی مکمل رابطہ تھا۔ دوسری جانب پولیس ذرائع نے بتایا ہے کہ بابر سہیل بٹ کے قتل میں مرکزی ملزم عاطف عرف عاطی جٹ کے ساتھ ایک اور ملزم محمد دین کو بھی شورکورٹ سے حراست میں لے لیا گیا ہے۔ پولیس حکام کے مطابق گرفتار ملزم کا بابر سہیل بٹ کے قاتلوں سے مسلسل رابطہ رہا ہے۔ ایس پی کینٹ انویسٹی گیشن شوکت عباس ک مطابق بابر سہیل بٹ کے قتل میں اہم پیش رفت ہوئی ہے اور اصل ملزمان تک پہنچ رہے ہیں اور جلد اصل ملزمان تک رسائی حاصل کر لی جائیگی۔ پولیس نے اس کیس کے مبینہ مرکزی ملزم عاطف عرف عاطی جٹ کی ایک اقدام قتل کیس میں ضمانتی مچلکے دینے والے باپ بیٹے دو افراد کو بھی حراست میں لے رکھا ہے جن کی عاطف عرف عاطی جٹ کے ساتھ رشتہ داری اور تعلق بتایا گیا ہے۔ دونوں باپ بیٹا بھی لکھو ڈہرکے رہائشی ہیں۔ اس حوالے سے ایس پی کینٹ شوکت عباس نے مزید بتایا کہ عاطف عرف عاطی جٹ کے موبائل فون کے ڈیٹا سے کافی حد تک تفتیش میں مدد مل رہی ہے اور اگلے 24 سے 36 گھنٹوں تک اصل قاتلوں تک رسائی ممکن ہو سکے گی۔

مزید : کراچی صفحہ اول


loading...