پنجاب یونیورسٹی میں طلبا تنظیموں میں تصادم ، پتھراﺅ سے 18 طالب علم زخمی

پنجاب یونیورسٹی میں طلبا تنظیموں میں تصادم ، پتھراﺅ سے 18 طالب علم زخمی
پنجاب یونیورسٹی میں طلبا تنظیموں میں تصادم ، پتھراﺅ سے 18 طالب علم زخمی

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن ) پنجاب یونیورسٹی میں 2طلباگروپوں میں تصادم سے 18طالب علم زخمی ہو گئے ، پتھراؤ سے 2 پولیس اہلکار بھی زخمی ہوئے ۔

 پنجاب یونیورسٹی میں پشتون کلچر ڈے کے حوالے سے تقریب کا انعقاد جاری تھا جس میں پشتو ترانوں اور نغموں کو بلند آواز میں چلایا جا رہا تھا تاہم ایک گروپ نے آواز کم کرنے کا مطالبہ کیا جس پر دونوں تنظیمیں آمنے سامنے آگئیں ، دونوں جانب سے ایک دوسرے پر شدید پتھراﺅ کیا گیا جس سے 18طالب علم زخمی ہو گئے ۔ واقعے کے بعد پولیس کی بھاری نفری پنجاب یونیورسٹی پہنچ گئی جنہوں نے مشتعل طلبا کو منتشر کرنے کیلئے آنسو گیس کا استعمال کیا ۔

نوجوان ماڈل نے خودکشی کر لی، وجہ ایسی کہ جانکر آپ بھی حیران رہ جائیں گے

پنجاب یونیورسٹی کے ترجمان کا کہنا ہے کہ دونوں گروپ اپنا اپنا کلچر ڈے منا رہے تھے تاہم واقعے کے ذمہ داروں کا تعین کرنے کیلئے کمیٹی بنا دی ہے اورصورت حال پر قابو پا لیا گیا ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ طلباءتنظیموں نے پشتون کلچر ڈے کے سٹالز اکھاڑ دیے ۔زخمی طلباءکو ہسپتال منتقل کردیا گیا  اور یونیورسٹی میں پولیس کی بھاری نفری تعینات کردی گئی۔

تصادم کے بعد یونیورسٹی میں تدریسی سرگرمیاں بھی معطل رہیں اور یونیورسٹی کا احاطہ میدان جنگ بن گیا۔یاد رہے گزشتہ ماہ بھی پنجاب یونیورسٹی میں طلبا تنظیموں میں اسی طرح تصادم اور پتھراؤ ہوا تھا جس میں متعدد طالب علم زخمی ہوئے تھے۔

پتھراؤ سے کئی طلبا کو شدید چوٹیں بھی آئی ہیں جبکہ پولیس کی جانب سے آنسو گیس کی شیلنگ سے بھی طلبا کی حالت خراب ہوئی  جنہیں ریسکیو اور ایدھی کے عملے نے فوری طور پر طبی امداد فراہم کی ۔

مزید : لاہور


loading...