وزیرداخلہ کی تقریر لمبی اور عمل صفر ،ہم نے بل کی مخالفت پر عوامی ردعمل کا سامنا کیا ، فوجی عدالتوں کے بل پر کوئی ڈیل نہیں ہو ئی:سینیٹر اعتزاز احسن

وزیرداخلہ کی تقریر لمبی اور عمل صفر ،ہم نے بل کی مخالفت پر عوامی ردعمل کا ...
وزیرداخلہ کی تقریر لمبی اور عمل صفر ،ہم نے بل کی مخالفت پر عوامی ردعمل کا سامنا کیا ، فوجی عدالتوں کے بل پر کوئی ڈیل نہیں ہو ئی:سینیٹر اعتزاز احسن

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان پیپلزپارٹی کے رہنما سینیٹر اعتزاز احسن نے کہا ہے کہ وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خان  کی تقریر لمبی اور عمل صفر ہے ، پیپلزپارٹی نے فوجی عدالتوں کے بل میں ترامیم پیش کی ، ہم نے بل کی مخالفت پر عوامی ردعمل کا سامنا کیا ، حکومت نے پیپلزپارٹی سے تاوان لیا ہے ، فوجی عدالتوں کے بل پر کوئی ڈیل نہیں ہو ئی، فوجی عدالتوں کے بل پر فیصلہ میرٹ کی بنیاد پر کیا ، عوامی رائے ہے کہ فوجی عدالتیں ہونی چاہیئں ۔

نجی ٹی وی چینل ’’آج نیوز ‘‘سے خصوصی  گفتگو کرتے ہوئے سینیٹر اعتزاز احسن نے کہا کہ عوامی رائے ہے کہ فوجی عدالتیں تحفظ فراہم کرتی ہیں ، چوہدری نثار ہمارے مطالبے کے حوالے سے ہی تقریریں کرتے رہتے ہیں ۔اعتزاز احسن نے کہا کہ پیپلزپارٹی نے فوجی عدالتوں کے بل میں ترامیم پیش کی ، بل کی مخالفت پر عوامی رائے کا سامنا کیا ، حکومت نے بل پر پیپلزپارٹی سے تاوان لیا ہے ، فوجی عدالتوں کے بل پر کوئی ڈیل نہیں ہوئی اس معاملہ پر فیصلہ میرٹ کی بنیاد پر کیا کیونکہ عومای عوامی رائے ہے کہ فوجی عدالتیں ہونی چاہیئے۔انہوں نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان ایک صوبہ کیلئے نہیں ہے ، فوجی عدالتوں میں توسیع ہمارے لئے مجبوری ہے، وزیرداخلہ کی تقریریں لمبی اور عمل صفر ہے ۔انہوں نے کہا کہ  اولیا کے مزاروں پر جس  قسم کی فرقہ وارانہ دہشت گردی ہو رہی ہے ،اسی سوچ کے لوگوں نے اے پی ایس میں دہشت گردی کی تھی ،فوجی عدالتوں کی معیاد کے حوالے سے ہمارے تحفظات پر حکومت کو مجبور کیا ہے کہ اس میں تبدیلی لائے ۔انہوں نے کہا کہ مجھے اے پی ایس سانحہ میں شہید ہونے والے بچے کی والدہ نے فون کیا اور کہا کہ آپ کیوں ایسے دہشت گردوں کے لئے وکیل کا مطالبہ کر رہے ہیں ؟اس سوال پر میں تو ہل گیا تھا ،ہم نے مجبورا اس بل کی حمایت کی ہے کسی ڈیل کے طور پر نہیں میرٹ کو سامنے رکھتے ہوئے پیپلز پارٹی نے فوجی عدالتوں میں توسیع کی حمایت کا فیصلہ کیا ۔

مزید : قومی


loading...