آئی ایم ایف سے کئے گئے حکومتی وعدوں سے ڈالر کی قیمت بڑھی ،مہنگائی کا طوفان آئے گا:ظفر پراچہ

آئی ایم ایف سے کئے گئے حکومتی وعدوں سے ڈالر کی قیمت بڑھی ،مہنگائی کا طوفان ...

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان میں ڈالر کی منہ زور ہوتی قیمت نے پورے ملک میں کاروباری افراد کو پریشان کر دیا ہے جبکہ مہنگائی کے ممکنہ طوفان نے عام آدمی کی جھکی ہوئی کمر کو مزید جھکا دیا ہے جبکہ ایکسچینج کمپنیز ایسوسی ایشن کے جنرل سیکریٹری ظفر پراچہ نے حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ حکومتی وزراء غیر ملکی دوروں میں بین الاقوامی اداروں سے وعدے کر کے آجاتے ہیں لیکن ان میں اتنی اخلاقی جرات نہیں ہوتی کہ وہ عوام کو سچ بتا سکیں،قدر میں پانچ فیصد اضافے کا نتیجہ مہنگائی کے طوفان کی صورت میں آئے گا۔

برطانوی خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے ظفر پراچہ کا کہنا تھا کہ آئی ایم ایف اس بات کی جانب اشارہ کرتا رہا ہے کہ ڈالر کی موجودہ قیمت اس کی قدر کی صحیح عکاسی نہیں کرتی اور اس کے مطابق اسے 120 سے 125 روپے تک لے جانا ہوگا،میرا خیال ہے کہ ڈالر کی قیمت میں اضافہ اسی سلسلے کی کڑی ہے۔انہوں نے کہا کہ ڈالر کی قیمت بڑھنے سے مہنگائی کا ایک نیا طوفان آئے گا اور اس کا اثر مختلف جگہوں پر نظر آئے گا،ڈالر کی بڑھتی ہوئی قیمت کا اثر عام عوام پر آسکتا ہے، خاص طور پر جب پیٹرول کی قیمتوں میں اضافہ ہو اور یہ اضافہ مہنگائی ساتھ لے کر آئے گا۔انہوں نے کہا کہ ہم درآمدات پر انحصار کرتے ہیں اور حکومت کو ایسا کوئی بھی فیصلہ لینے سے پہلے سٹیک ہولڈرز سے بات کرنی چاہیے کیونکہ اس سے سب متاثر ہوتے ہیں، ڈالر کی قیمت میں اضافہ کی وجہ سے ملک سے سرمایہ چلا جاتا ہے اور سرمایہ دار یہاں آنا نہیں چاہتے اور یہ ہر طرح سے نقصان دہ ہے۔

دوسری طرف معروف ماہر اقتصادیات صفیہ آفتاب نے’’ بی بی سی‘‘ سے گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ آئی ایم ایف کی حالیہ رپورٹ میں واضح طور پر درج تھا کہ پاکستان کے ذرِ مبادلہ کے ذخائر میں بہت کمی آ گئی ہے جس سے انھیں قرضوں کی ادائیگی میں دشواری پیش آ سکتی ہے۔انھوں نے کہا کہ میرا خیال ہے کہ ڈالر کی قیمت میں یہ اضافہ سٹیٹ بینک کی جانب سے کیا گیا ہے جیسا انھوں نے دسمبر میں کیا تھا۔صفیہ آفتاب نے کہا کہ پاکستان کی معیشت درآمدات پر انحصار کرتی ہے،ڈالر کی قدر میں اضافے کے بعد خیال کیا جاتا ہے کہ شاید درآمدات کچھ کم ہو جائیں اور برآمدات میں اضافہ ہو لیکن اس بات کی کوئی گارنٹی نہیں ہوتی۔صفیہ آفتاب نے کہا کہ ڈالر کی بڑھتی ہوئی قیمت کا اثر عام عوام پر آسکتا ہے، خاص طور پر جب پیٹرول کی قیمتوں میں اضافہ ہو اور یہ اضافہ مہنگائی ساتھ لے کر آئے گا۔

مزید : بزنس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...